Shahbaz Gill

کراچی میں جو نتیجہ آیا جس کو میں جمہوریت کے لیے افسوس ناک کہوں گا:شہباز گل

EjazNews

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہباز گل نے کہا کہ کراچی میں جو نتیجہ آیا جس کو میں جمہوریت کے لیے افسوس ناک کہوں گا کیونکہ پاکستان کا سب سے بڑا شہر جہاں جمہوریت، جمہوری تحریکیں سب سے پہلے انگڑائی لیتی ہیں اور پھر پورے ملک میں پھیلتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے قائد کے شہر میں ایک انتخاب ہوا جسے زیادہ ترجماعتوں نے مؤخر کرنے کی درخواست کی، کورونا کی بدترین لہر میں ہمسایہ ملک میں برے حالات ہیں اور ملک کی صورت حال بھی سب کے سامنے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ صرف پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) ہی نہیں بلکہ دیگر جماعتوں نے بھی ایسے حالات میں انتخاب مؤخر کرنے کی درخواست کی تھی، ایک طرف گزشتہ دنوں بچوں کے امتحانات پر مطالبات کیے گئے جو کسی حد تک درست تھے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ ضمنی انتخاب کا ٹرن آؤٹ اتنا کم رہا جو حیرت انگیز ہے اور معلوم نہیں الیکشن کمیشن اس کو برقرار رکھتا ہے یا کالعدم قرار دیتا ہے کیونکہ میری معلومات کے مطابق 10 فیصد سے کم ووٹنگ پر انتخاب کالعدم ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ویسٹ انڈیز سے جیتنے کیلئے بنگلہ دیش کو321رنز کا پہاڑ عبور کرنا ہوگا

انہوں نے کہا کہ ایک ایسا الیکشن جس پر سب کو اعتراض ہے، رات تک پیپلزپارٹی، مسلم لیگ (ن)، پی ٹی آئی اور سب جماعتیں دھاندلی کہہ رہی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جب الیکشن ہوتے ہیں سب ایک دوسرسے پر دھاندلی کا الزام لگاتے ہیں، جس کی حکومت ہوتی ہے ان پر الزام لگایا جاتا ہے جیسے ابھی پیپلزپارٹی پر لگ رہے ہیں۔

شہباز گل نے کہا کہ آئیں الیکٹرونک ووٹنگ کراتے ہیں اور انتخابی اصلاحات کرتے ہیں اور دوبارہ ان کو دعوت دیتے ہیں کہ ٹیبل پر بیٹھیں اور شفاف الیکشن پر بات کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آپ ان اصلاحات کے لیے این آر او نہ رکھیں، ہم آپ سے درخواست کرتے ہیں کہ آئیں بیٹھیں، مجھے تو ایسے لگتا ہے کہ انہیں اسی طرح کے چوری چکاری کے الیکشن چاہئیں۔

اپوزیشن کو مخاطب کرکے ان کا کہنا تھا کہ آپ نہیں بھی آئیں گے تو ہم اصلاحات کریں گے اور اس حوالے سے وزیراعظم کے واضح احکامات ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  بلوچستان میں دہشتگردوں کی فائرنگ سے 4جوان شہید ،6زخمی