samsung

سام سنگ کی فروخت آئی فون سے بھی بڑھ گئی

EjazNews

مارکیٹ ریسرچ فرم کینالس نے کہا کہ چین کی شیاؤمی کارپوریشن بھی فروخت کے حوالے سے موبائل کمپنیوں کی درجہ بندی میں تیسرے نمبر پر آگئی ہے۔

سال کی پہلی سہ ماہی میں شیاؤمی کے فونز کی فروخت 62 فیصد اضافے کے بعد بڑھ کر 4 کروڑ 90 لاکھ ہوگئی جبکہ اس کی حصص میں بھی 14 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔سال کی پہلی سہ ماہی میں چین کی معیشت مکمل طور پر بحال ہونے اور امریکا میں کورونا ویکسین کی مہم شروع ہونے کے بعد دنیا بھر میں موبائل فونز کی فروخت 27 فیصد اضافے کے بعد 34 کروڑ 70 یونٹس تک یونٹس تک پہنچ گئی۔

جنوبی کوریا کی موبائل کمپنی سام سنگ نے اس سہ ماہی میں 7 کروڑ 65 لاکھ اسمارٹ فونز فروخت کیے اور مارکیٹ میں اس کے حصص میں 22 فیصد اضافہ ہوا۔

کمپنی کے مطابق گلیکسی ایس 21 اسمارٹ فون سیریز کی زیادہ فروخت کی وجہ سے سام سنگ کے منافع میں 66 فیصد اضافہ ہوا۔

یہ بھی پڑھیں:  لندن کے ٹاور برج پر پہلی بار لائوڈ سپیکر سے اذان

کینالس نے کہا کہ ایپل نے جنوری سے مارچ کے دوران 5 کروڑ 24 لاکھ آئی فونز فروخت کیے، جس کے بعد کمپنی مارکیٹ میں 15 فیصد حصص کے ساتھ دوسرے نمبر پر آگئی۔

تاہم تجزیہ کار ورن مشرا نے کہا کہ اب بھی امریکا، چین بھارت اور جاپان میں ایپل ریکارڈ مارکیٹ شیئر حاصل کرنے میں کامیاب رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ امریکا میں آئی فون پرو میکس سب سے زیادہ فروخت ہوا ہے۔

گزشتہ برس سے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے باعث جب لاک ڈاؤن کی وجہ سے گھر پر رہنے اور گھر سے کام کرنے پر لوگ مجبور ہوئے تو اسمارٹ فونز کی فروخت میں اضافہ ہوا۔

کینالیس کے تجزیہ کار بین اسٹینٹون نے کہا کہ ‘اہم سامان جیسا کہ چپ سیٹس کی سپلائی ایک بڑی تشویش کا باعث بن رہی ہے جس کی وجہ سے آئندہ سہ ماہیوں میں اسمارٹ فون کی فروخت میں رکاوٹ پیدا ہوگی۔اس سہ ماہی میں چین کے اوپو اور ویوو برانڈز کی فروخت میں بھی اضافہ ہوا لیکن امریکا کی پابندیوں کا سامنا کرنے والے سابقہ نمبر ون موبائل کمپنی اپنا برانڈ اونر فروخت کرنے کے بعد ساتویں نمبر پر رہی۔

یہ بھی پڑھیں:  ماہرین نے جولائی کو دنیا کی تاریخ کا گرم ترین مہینہ قرار دے دیا