covid_army-Police_1

ملک بھر میں کورونا کی صورتحال، کس صوبے میں کیا صورتحال ہے؟

EjazNews

کووِڈ-19 کے اعداد و شمار کے لیے بنائی گئی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں پاکستان میں مزید 5 ہزار 480 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی جبکہ 150 مریض انتقال کر گئے۔

وبا کی تشخیص کے لیے 28 اپریل کو مجموعی طور پر 57 ہزار 13 ٹیسٹ کیے گئے جس کے نتیجے میں نتائج مثبت آنے کی شرح 9.61 فیصد رہی جبکہ فعال کیسز 89 ہزار 838 تک پہنچ چکے ہیں۔

ملک میں مجموعی طور پر اب تک کورونا وائرس سے 8 لاکھ 15ہزار 711 افراد متاثر ہو چکے ہیں جن میں سے 17 ہزار 680 زندگی کی بازی ہار گئے۔

عالمی وباء کوروناوائرس پاکستان میں بھی تباہی پھیلانے لگا ، گزشتہ روز اموات کے لحاظ سے مہلک ترین دن ثابت ہوا، گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان میں کوروناوائرس سے اب تک کی ریکارڈ 201اموات رپورٹ ہوئیں ، جن میں سے 127 صرف پنجاب میں ہوئیں، 26 فروری 2020 کو پاکستان میں کورونا وائرس کا پہلا کیس رپورٹ ہونے کے بعد ملک میں پہلی دفعہ ایک روز میں 201 اموات ہوئی ہیں،ملک بھرمیں 10.77 فیصد کی شرح سے 5292 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، فعال مریض 88207 ہو گئے جن میں سے 5214 کی حالت تشویشناک ہے، وائرس سے مجموعی اموات 17530 تک پہنچ گئیں، ہلاکتوں اور کیسز کے اعتبار سے پنجاب سر فہرست ہے،آزاد کشمیر میں وباء سے انتقال کرنیوالوں کی شرح 3فیصد اور فعال کیسز 2282 تک پہنچ گئے، ملک میں 704494مریض صحت یاب ہو چکے۔

این سی او سی نے لاہور، فیصل آباد، گوجرانوالہ، بہاولپور، ملتان، اوکاڑہ، رحیم یار خان، راولپنڈی، پشاور، سوات، نوشہرہ، لوئر دیر، صوابی، چارسدہ اور ہری پورسمیت 26 اضلاع ہائی رسک قرار دیدیا ہے، لاہور اور بڑے شہروں میں اسپتالوں کو صرف کورونا کیلئے مختص کرنے کی تجویز کا جائزہ لیا گیا، پنجاب میں آکسیجن کی تیاری اور فروخت کے حوالے سے ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے، اسٹیل، گلاس اور بحری جہاز توڑنے والی انڈسٹری کو آکسیجن سپلائی بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے ، صرف فارماسوٹیکل انڈسٹری کو آکسیجن کی سپلائی ملے گی، پنجاب میں 189 ، پختونخوا 280، سندھ 140 ، بلوچستان 44 ، اسلام آباد 14، آزاد کشمیر 25 ، گلگت بلتستان میں 16مراکز کے ذریعے ویکسی نیشن کا عمل جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ابھی تک شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں نہیں ڈالا گیا:وزیر داخلہ

گزشتہ روز وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اگر ملک میں کورونا کی صورتحال میں بہتری نہ آئی تو مزید سخت اقدامات کرناپڑینگے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی اوسی)کی جانب سے بدھ کے روز ملک میں کوروناوائرس کے حوالے سے جاری تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق پاکستان اب تک کورکوناوائرس کے کل رپورٹ ہونے والے کیسز کی تعداد 8لاکھ 10 ہزار 232تک پہنچ گئی ۔ اب تک ملک بھر میں کوروناوائرس کے7 لاکھ4ہزار494 مریض مکمل طور پر شفا یاب ہو چکے ہیں جبکہ ملک میں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد88207تک پہنچ گئی۔

اس وقت ملک میں کوروناوائرس تشویشناک حالت میں موجود مریضوں کی تعداد5214 تک پہنچ گئی ۔ کوروناوائرس کی تیسری لہر آنے کے بعد پاکستان میں کوروناوائرس کے نئے رپورٹ ہونے والے کیسز، فعال کیسز اور تشویشناک حالت میں موجود مریضوں کی تعدادتیزی سے بڑھنے کا سلسلہ جاری ہے۔

صوبہ پنجاب ملک بھر میں کوروناوائرس کے کل رپورٹ ہونے والے کیسز، فعال کیسز اور کوروناوائرس سے ہونے والی اموات کے اعتبار سے پہلے نمبر پر آگیا جبکہ صوبہ سندھ کوروناوائرس کے کل رپورٹ ہونے والے کیسز، کوروناوائرس سے ہونے والی اموات کے اعتبار سے دوسرے نمبر پر ہے جبکہ کوروناوائرس کے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے اعتبار سے صوبہ سندھ ملک بھر میں پہلے نمبر پر ہے۔جبکہ صرف صوبہ پنجاب میں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد47ہزار سے تجاوز کر گئی ۔

یہ بھی پڑھیں:  یہ تاثر دیا گیا کہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی ترامیم اپوزیشن کی ترامیم ہیں

این سی اوسی کے مطابق پاکستان میں کوروناوائرس سے انتقال کرنے والے مریضوں کی شرح2.2فیصد جبکہ صحت یاب ہونے والے مریضوں کی شرح86.9 فیصد تک پہنچ چکی ہے۔گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کوروناوائرس کے 4678 مریض مکمل طور پر صحت یاب ہو کر گھروں کو چلے گئے۔

این سی اوسی کے مطابق کوروناوائرس کے فعال کیسز کے اعتبار سے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد ملک بھر میں دوسرے نمبر پر آگیا جبکہ صوبہ سندھ تیسرے نمبر پر آگیا جہاں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد 12467تک پہنچ گئی۔اس وقت اسلام آبادکوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد12635تک پہنچ گئی جبکہ خیبر پختونخوا میں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد12344تک پہنچ گئی ۔

صوبہ پنجاب میں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد47106تک پہنچ گئی ،صوبہ بلوچستان1248،آزاد جموں وکشمیر2282جبکہ گلگت بلتستان میں کوروناوائرس کے فعال کیسز کی تعداد125رہ گئی ہے جو ملک بھر میں سب سے کم ہے۔

این سی اوسی کے مطابق اب تک صوبہ سندھ میں کوروناوائرس کے دو لاکھ63ہزار264 مریض مکمل طور پر صحت یاب ہو چکے ہیں، صوبہ پنجاب2 لاکھ40ہزار814،خیبر پختونخوا100051،اسلام آباد60821، بلوچستان20464، آزاد جموں وکشمیر14029جبکہ گلگت بلتستان میں کوروناوائرس کے صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد5050تک پہنچ گئی۔

این سی اوسی کے مطابق اسلام آباد میں کورونا وائرس کے کل رپورٹ ہونے والے کیسز کی تعداد74131 تک پہنچ گئی ،خیبر پختونخوا میں115596، سندھ میں 2 لاکھ80ہزار356، پنجاب میں2 لاکھ96 ہزار144، بلوچستان میں21945، آزاد جموں و کشمیر میں16779اور گلگت بلتستان میں 5280 فرادکورونا سے متاثر ہوچکے ہیں۔

کورونا کے سبب سب سے زیادہ اموات صوبہ پنجاب میں ہوئی ہیں جہاں8224افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں جبکہ سندھ میں4624، خیبر پختونخوا میں3201، اسلام آباد میں675، گلگت بلتستان میں 105، بلوچستان میں233اور آزاد جموں و کشمیر میں468فراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔آزاد جموںوکشمیر میں کوروناوائرس سے انتقال کرنے والے مریضوں کی شرح تین فیصد، اسلام آباد ایک فیصد، گلگت بلتستان دو فیصد، بلوچستان ایک فیصد، خیبر پختونخوا تین فیصد، سندھ دو فیصد اور پنجاب میں تین فیصد تک پہنچ گئی ۔اب تک ملک بھر میں کوروناوائرس کے ایک کروڑ16لاکھ82 ہزار14ٹیسٹ کئے جا چکے ہیں جبکہ گزشتہ24گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کوروناوائرس کے 49101نئے ٹیسٹ کئے گئے ۔کورونا وائرس پاکستان میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔
نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے پاکستان کے 26 اضلاع ہائی رسک قرار دیئے گئے ہیں۔لاہور، فیصل آباد، گوجرانوالہ، بہاولپور، منڈی بہاالدین، ملتان، اوکاڑہ، رحیم یار خان، راولپنڈی، گجرات، شیخوپورہ، سرگودھا، سیالکوٹ، ٹوبہ ٹیک سنگھ متاثر، مظفر آباد، میر پور، کوٹلی، پشاور، سوات، نوشہرہ ، دیر لوئر، مالاکنڈ، صوابی، چارسدہ اور ہری پور ہائی رسک اضلاع میں شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  پیپلز پارٹی نے ہر فورم پر کشمیریوں کی آواز اٹھائی، آج بھی یہ سلسلہ جاری ہے:بلاول بھٹو زرداری

پاکستان میں کورونا کی ویکسی نیشن جاری ہے اور دوسرے مرحلے میں 60 سال سے بڑی عمر کے افراد کو ویکسین لگائی جا رہی ہے۔

ملک بھر میں ایڈلٹ ویکسی نیشن مراکز قائم کیے جا چکے ہیں اور ویکسی نیشن کا تمام تر عمل ڈیجیٹل میکنزم سے کنٹرول کیا جائے گا۔ویکسی نیشن کے لیے پنجاب میں 189 اور سندھ میں 140مراکز قائم کیے گئے ہیں جبکہ خیبر پختونخوا میں 280، بلوچستان میں 44 اور اسلام آباد میں 14 ویکسی نیشن سینٹر قائم کیے جا چکے ہیں۔ آزاد کشمیر میں 25 اور گلگت بلتستان میں بھی 16 مراکز کے ذریعے ویکسی نیشن کی جا رہی ہے۔ادھر ڈی ایچ کیو ہسپتال گوجرانوالہ میں بھجوائے گئے 10وینٹی لیٹرزخراب نکلے۔