imran khan event

یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ معاشرے کے کمزور طبقے کی دیکھ بھال کو قبول کریں:وزیراعظم

EjazNews

پورے پاکستان میں کچن ٹرک کا جال بچھائیں گے۔پاکستان دنیا کی واحد اسلامی ریاست ہے جس کا وجود اسلام کے نام پر آیا ۔ لیکن اس راستے پر نہیں چل سکا، آج ہم پر زیادہ قرضے ہیں اور عوام پر پیسہ خرچ کرنے کے لیے کم ہے۔ اس کے باوجود اللہ کا ہمیں حکم ہے کہ اس راستے پر چلیں تو یہ راستہ قانون کی بالا دستی اور انسانیت کا راستہ ہے۔ یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ معاشرے کے کمزور طبقے کی دیکھ بھال کو قبول کریں۔

وزیراعظم نے ثانیہ نشتر اور صوبائی وزرائے اعلیٰ کو پروگرام کے آغاز پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ابھی آپ کو اندازہ نہیں کہ یہ کتنا بڑا کام شروع کیا ہے۔ جب ایک ریاست مستحق افراد کے گھر کھانا پہنچانے کی ذمہ داری لے گی اور مستحق افراد دو وقت کی روٹی کھا سکیں گے تو اللہ کی برکت پاکستان پر نازل ہوگی کیونکہ یہ میرا ایمان ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کرونا وبا کے کم ہونے پر حکومت نے مزید نرمیاں کر دیں

اس موقع پر سیلانی ٹرسٹ کا خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ آپ بڑے خوش قسمت لوگ ہیں جو کام آپ کررہے ہیں۔پاکستان ان چند ممالک میں شامل ہے، جہاں کی عوام سب سے زیادہ خیرات دیتے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے بتایا کہ شوکت خانم ہسپتال کی تعمیر کے بعد اس کو چلانا بڑا اہم چیلنج تھا کیونکہ کینسر کا علاج بہت مہنگا ہوتا ہے۔ شروع کے تین مہینے میں تو اس کو چلانے والے ایک صاحب یہ کہہ کر چھوڑ گئے کہ اتنا مہنگا علاج مفت نہیں کیا جاسکتاآپ کیسے کریں گے۔ لیکن میری قوم نے ثابت کردیا اور ان کے تعاون سے مستحق مریضوں کا مفت علاج ہورہا ہے۔ جب سے شوکت خانم بنا ہے مستحق مریضوں کے علاج پر 50ارب روپے خرچ ہوئے ہیں وہ کہاں سے آئے پاکستانی قوم نے دئیے ہیں۔پشاور اور کراچی میں بھی کینسر ہسپتال تعمیر ہورہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  افغانستان میں اقتدار کی محفوظ منتقلی کا عمل یقینی بنانے کے لیے مذاکرات جاری ہیں

ان کا کہنا تھا پنجاب اور خیبرپختونخوا میں پہلی مرتبہ ہیلتھ انشورنس دے رہے ہیں، اگلے مرحلے میں پورے ملک میں ہسپتالوں کا جال بچھائیں گے۔ اسلام آباد میں پہلی مرتبہ آبادی کو ہیلتھ کارڈ کوریج دے رہے ہیں۔اس ہیلتھ کوریج سے ہسپتالوں میں معیار کے اعتبار سے مقابلہ ہوگا کیونکہ ایک شہری جس کے باعث ہیلتھ کارڈ ہو گا کسی بھی دوسرے ہسپتال میں جا کر علاج کروائے گا۔