admirals

ترکی میں کینال پراجیکٹ منصوبے کیخلاف 10ریٹائرڈ ایڈمرلز نظر بند

EjazNews

ترکی نے 10 ریٹائرڈ ایڈمرلز کو اس خط پر دستخط کرنے کے الزام میں نظربند کر دیا ہے جس میں استنبول کینال کے منصوبے پر تنقید کی گئی تھی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق انقرہ کے چیف پبلک پراسیکیوٹر آفس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 10 ریٹائرڈ ایڈمرلز کے وارنٹ گرفتاری جاری ہو چکے ہیں۔

پراسکیوٹرز نے دیگر چار ملزمان کے بارے میں پولیس کو آگاہ کرنے کی ہدایت کی ہے اور انہیں ان کی عمر کی وجہ سے حراست میں نہ لینے کا کہا گیا ہے۔

ایڈمرلز نے اپنے اعلامیے میں اس استنبول کینال کے منصوبے پر تنقید کی تھی جس کے تحت ایک ایسی نہر بنائی جائے گی جو شہر کے مغربی حصے سے شروع ہو کر تقریبا 45 کلومیٹر فاصلے تک موجودہ آبنائے باسفورس کے متوازی ہی جاتی رہے اور اس کے ذریعے بحیرہ اسود کو بحیرہ مرمرہ سے جوڑ دیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:  کابل کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے مسافر ٹرمینل پرکس نے فائرنگ کی ؟

انہوں نے مونٹریکس کنونشن میں ممکنہ ترامیم کے فوائد بھی بتائے تھے۔ ان کے بیان سے حکمران جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی حرکت میں آئی تھی اور پیر کو اس معاملے پر تبادلہ خیال کے لیے کمیٹی کا اجلاس بھی منعقد ہوا تھا۔

انقرہ کے چیف پبلک پراسکیوٹر آفس نے دستخط کنندگان کے خلاف تحقیقات کا آغاز کیا تھا۔

دستخط کنندگان میں سے ایک 63 سالہ کیم گاردنیز ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ استنبول کینال کی وجہ سے مونٹریکس کنونشن پر بحث شروع ہو جائے گی جو ترکی کے بحیرہ مرمرہ پر خود مختاری کو نقصان پہنچائے گی۔

گذشتہ ماہ ترکی نے 45 کلومیٹر طویل کینال پراجیکٹ کی منظوری دی تھی جس کے بعد سے مونٹریکس کنونشن پر بحث شروع ہو گئی تھی۔ریٹائرڈ ایڈمرلز نے زور دیا تھا کہ کنونشن ترکی کے مفادات کے تحفظ کے لیے بہترین معاہدہ تھا۔حال ہی میں 126 ریٹائرڈ سفارت کاروں نے بھی بیان جاری کیا تھا جس میں انہوں نے حکومت کو اسی معاملے پر خبردار کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  سمندری طوفان آئیڈا کے بعد سیلاب سے نیویارک کے علاقے میں کم از کم 44 افراد ہلاک