home_decorated_ideas

کیوں چلتے چلتے نگاہ ٹھہر جاتی ہے؟

EjazNews

گھروں کی بیرونی آرائش جمالیاتی کشش کا باعث ہے
کئی دفعہ میرے ساتھ یہ واقعہ پیش آیا کہ شاہراہوں سے گزرتے ہوئے خوشنما اور پرکشش مکانات پرنظر جاٹھہر تی ہے۔ کچھ گھر ہوتے ہی اس قدر خوبصورت ہیں کی توجہ اپنی جانب مبذول کرا لیتے ہیں ممکن ہے کہ آپ کوبھی ایسا ہی کوئی تجربہ ہوا ہو۔ گھروں کی بیرونی ساخت اور خوبصورتی ماہرتعمیرات کے کے تخیل، میٹریل ،سوچ کے زاویوں اورفن تعمیرات کی جزئیات کی وجہ سے دیکھنے میں آتی ہے۔ ان دیدہ زیب گھروں کے ڈیزائن میں ریاضیاتی اور جیومیٹریکل پہلوﺅں کو مدنظر رکھا جاتا ہے۔ سب کچھ توازن میں رہے اور پھر قدرتی اور مصنوعی روشنیوں کا انعکاس بھی بھر پور انداز میں ہوتو واقعی میں یہ گھرذرا رک کر دیکھنے کو جی چاہتا ہے۔

گھر کے سامنے کے حصے کودلکش ہونا چاہئے
گھر کے اندر آرام اور سکون سے مزین ساز و سامان ہو اور تمام بنیادی اور آسائشی سہولتوں کی فراہمی یقینی بنانے کی کوشش کی جائے تو یہ آئیڈیل صورتحال ہوتی ہے لیکن اگر سامنے کے حصے دلکش نہ ہوں تو پہلا تاثر ہی بگڑ کر رہ جاتا ہے۔ ہمارے شہر کراچی کے کئی پوش علاقوں میں ہنرمند بلڈر جو گھر تعمیر کرتے میں وہ تمام تر توجہ بیرونی آرائش پر دیتے ہیں عمدہ کنکریٹ ، بہترین و جازب نظر پتھر، باہم مل کر گھر کا بیرونی منظر دلفریب بنا دیتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  باتھ روم کی دیدہ زیب آرائش

خوبصورت داخلی حصہ، کیونکر ممکن ہے
یہی نہیں کہ ساری توجہ بیرونی حصے کی آرائش ہی پردے دی جائے۔ ہوتایہ بھی ہے پالش شدہ پتھریلی رہ گزر ہو یا لکڑی کے فرش کے مختصر سے راستے کو موسمی پھولوں، سیمنٹ کے پرندوں یا تالاب (سوئمنگ پول) کی پر تعیش آرائش ہو۔ سادہ ڈیزائن بھی رہائشی مکان کو حد درجہ پرسکون ، شوخ اور عمدہ و نفیس انتخاب ثابت کرتے ہیں۔ مکان، مکانیت اور تعمیراتی انفراسٹرکچر کے چند نکات زیر بحث لائے جار ہے ہیں۔ لاﺅنج، کھانے کا کمرہ، باورچی خانے اور سونے کے گھروں کے درمیان رابطہ کیسے رہے گا؟

لاﺅنج میں صبح سے شام تک اٹھا بیٹھا جاتا ہے اور یہی گھر کا وسطی کمرہ ہوتا ہے۔ آپ کے باورچی خانے اور کمروں کے دروازے اس احاطے میں کھلتے ہیں۔ اس طرح ماہر تعمیرات ایک فطری تخیل کے ساتھ آپ کو وسیع تر رقبہ دے دیتا ہے۔ لاونج سے لان میں کھلنے والی کھڑکیوں پر جالیاں لگوالینا بہت ضروری ہوگیا ہے۔ پچھلے چند برسوں سے ڈینگی ، چکن گونیا اور اس طرح کے مختلف امراض جنم لینے لگے ہیں۔ ایسے میں کھڑکیوں پر باریک اور نفیس جالیاں لگا دی جائیں تو مچھروں سے بچا ہور ہے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  وال بلٹ ان کیبنٹ،جدت بھی اور سہولت بھی

home_decorated_ideas_1

پتھر کی دیوار یا دیہاتی منظر پیش کر تی آرائش
آج کل کھردرے اور چپکے پتھروں کی آرائش بھی دیکھنے میں آ رہی ہے۔ بہت سے ماہر تعمیرات گھر کے کسی نہ کسی حصے میں دیہات کی سادہ اور معصومیت بھری زندگی اور شہر کی اسٹائلش صنعتی زندگی کا امتزاج پیش کرنا پسند کرتے ہیں۔

اوپن کچن، جدیدطرزحیات کا سمبل
جب آپ کوئی فلیٹ بک کرواتے ہیں تو بلڈر آپ کو پلان دکھاتا ہے وہ کچن کے لئے تین دیواریں اٹھاتا ہے اگر آپ اسی وقت اسے ہدایت کر دیں کہ آپ کو کھلا یعنی اوپن کچن نہیں چاہئے تو اس کو آپ کے لئے عمارت میں اختراع کرنا آسان ہوتا ہے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ جدید کچن مختلف رنگوں کی الماریوں اور جدید آلات یعنی چولہا اور چمنی کے ساتھ دھوئیں کے اخراج کی گزرگاہ کا خیال رکھ کر بنائے جاتے ہیں۔ اس فیشن ایبل کچن میں پوشیدہ رکھنے کے لئے کچھ نہیں ہونا چاہئے۔ ایک دیوار نہ اٹھانے سے یہ کچن بے حد کشادہ نظر آتے ہیں۔ اس کچن میں آپ کو دائیں بائیں، نیچے اور اوپر تلف حجم کی کیبنٹس دی جاتی ہیں۔ آپ اطمینان سے بڑے پتیلے کڑاہیاں برتنوں کے سیٹس وغیر محفوظ کرسکتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  نیا سال ہے: گھر کو نئے انداز سے سجاتے ہیں

جدیدرادلکش زینے
شفاف شیشے یا لکڑی کی منفرد سیڑھیاں اور سوتی پائیدان زینے کو انتہائی دلکش بناتے ہیں۔ بعض گھروں میں زمینوں پر سلور ریلنگ بے حد خوبصورت انداز سے لگائی جاتی ہے۔

پر آسائش غسل خانے
خوشنما اور دل آویز رنگوں کے ٹائلز دیکھنے میں بھی بھلے لگتے ہیں اور ان کی صفائی کرنا بھی مشکل نہیں۔ جد ی غسل خانوں میں ایگزاسٹ فینز نصب کئے جاتے ہیں تا کہ استعمال کے بعد فرش گیلا نہ رہے۔ اس احتیاط کے لئے آپ واش روم میں چھوٹے سائز کا وائپر یا پو نچھا ضرور رکھئے تا کہ فرش پر پھسلن نہ ہو۔

خوبصورت اورطلسم کدہ، بی بچوں کا کمرہ
سبز، نیلا، گلابی یا ارغوانی یا کوئی اور شوخ رنگ بچوں کے کمرے کی دلکشی میں اضافہ کرتے ہیں۔ الماری، ریک اور دیواری شیلفز دوستانہ ماحول کے ساتھ دومنزلہ بستر یا گاڑی کی شکل میں بستر بہت لکش معلوم ہوتے ہیں۔ اگر آپ کے بچے اپنے کمرے کی آرائش میں دلچسپی لیں تو اسے اور بھی سنواریں گے اور صفائی کا خاص خیال بھی رکھیں گے۔