Twitter

ٹوئٹر کو روس کی دھمکی

EjazNews

روس نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر کو دھمکی دی ہے کہ اگر ممنوعہ مواد نہ ہٹایا گیا تو اس کو بلاک کر دیا جائے گا۔

روسی میڈیا اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے مواد کی نگرانی کرنے والے روس کے وفاقی ادارے کے حوالے سے بتایا ہے کہ بندش سے بچنے کے لیے ٹوئٹر کو ایک ماہ کی مہلت دی گئی ہے۔

پچھلے ہفتے روسی ادارے کی جانب سے روس میں ٹوئٹر کی سروس میں یہ کہتے ہوئے خلل ڈالا گیا تھا کہ امریکی پلیٹ فارم نے روس کی درخواستوں پر عمل نہیں کیا، جن میں چائلڈ پورنوگرافی، منشیات کا استعمال اور بچوں کو خودکشی کی ترغیب دینے پر مشتمل مواد شامل تھا۔

روسی مانیٹر ادارے کے نائب سربراہ ویدم سبوٹن نے میڈیاکو بتایا ہے کہ ہم ٹوئٹر کو ایک ماہ کا وقت دے رہے ہیں اور اس دوران ممنوعہ مواد کے حوالے سے ویب سائٹ کا ردعمل دیکھیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  چین کا افغانستان سے اچھے تعلقات استوار رکھنے کا اعلان

ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر ویب سائٹ نے اس دوران عمل درآمد نہ کیا تو اس کو روس میں مکمل طور پر بند کر دیا جائے گا۔

سبوتن نے کہا کہ ٹوئٹر کی جانب سے ممنوعہ مواد ہٹانے کے لیے کچھ خاص اقدامات نہیں کیے گئے۔

یاد رہے:پچھلے چند ماہ کے دوران روسی حکام نے مغربی میڈیا پلیٹ فارمز پر دباؤ بڑھایا ہے خصوصاً ان اداروں پر جو کریملن کو سپورٹ کرتے ہیں۔روسی مانیٹرنگ ادارے کی جانب سے گذشتہ ہفتے کہا گیا تھا کہ اس نے ملک بھر میں تمام موبائل اور 50 فیصد ڈیسک ٹاپ استعمال کرنے والوں کے لیے ویب سائٹ کی سپیڈ کم کر دی ہے۔

ٹوئٹر ترجمان نے اس پر ردعمل دیتے کہا تھا کہ کمپنی کسی غیرقانونی رویے پر سپورٹ نہیں کرتی اور آن لائن عوامی رابطوں کی بندش پر شدید تحفظات رکھتی ہے۔