japan olymic

جاپان میں منعقد ہونے والی ٹوکیو اولمپکس شائقین کے بغیر ہو گی یا شائقین کے ساتھ ؟

EjazNews

ایک انٹرویو میں آئی او سی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ‘ہمارے پاس اس وقت کوئی وجہ نہیں ہے کہ اس بات پر یقین کریں کہ 23 ​​جولائی کو ٹوکیو میں اولمپکس کا آغاز نہیں ہو سکے گا۔

دنیا بھر میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے مارچ 2020 میں ٹوکیو میں ہونے والے اولمپکس کو موخر کر دیا گیا تھا۔یہ گیمز 24 جولائی سے 9 اگست 2020 تک منعقد ہونا تھیں تاہم اب یہ نئے شیڈول کے مطابق 23 جولائی سے 8 اگست 2021 تک منعقد ہونی ہیں۔

جاپان کے وزیر برائے ایڈمنسٹریٹو اور ریگولیٹری ریفارمز تارو کونو کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے ملتوی ہونے والے ٹوکیو اولمپکس کے ساتھ کچھ بھی ہوسکتا ہے۔

تاہم انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کے سربراہ تھامس بیخ نے ایک انٹرویو میں کہا کہ ‘کرونا وائرس کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہونے والے ٹوکیو اولمپکس رواں سال موسم گرما میں منعقد ہوں گے، اور اس حوالے سے ‘کوئی پلان بی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  لاہور قلندرز نے اسلام آباد یونائیٹڈ کو شکست دے دی

جاپان میں کیے گئے ایک پول کے مطابق 75 فیصد جاپانی ٹوکیو اولمپکس میں غیر ملکی شائقین کی شرکت کے مخالف ہیں، تاہم اس حوالے سے منتظمین نے ابھی حتمی فیصلہ کرنا ہے۔پول میں صرف 18 فیصد افراد نے غیر ملکی شائقین کو یہ مقابلے دیکھنے کی اجازت دینے کی حمایت کی ہے۔

منتظمین کا کہنا ہے کہ وہ غیر ملکی شائقین کو اولمپکس مقابلے دیکھنے کی اجازت دینے یا نہ دینے کے بارے میں فیصلہ رواں ماہ کریں گے۔
جاپانی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ حکام نے پہلے ہی فیصلہ کر لیا ہے کہ اولمپکس کے لیے غیر ملکی تماشائیوں کو جاپان آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

رواں برس جنوری میں کیے گئے ایک پول کے مطابق جاپان میں اولمپکس کی عوامی حمایت میں کمی آئی جبکہ ایک اور پول کے مطابق 80 فیصد سے زائد افراد کا کہنا تھا کہ گیمز کو منسوخ یا دوبارہ سے ملتوی کر دینا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں:  لاہور قلندرز کی جیت ، پہلی دفعہ مستحکم پوزیشن پر پہنچی لاہورقلندرز