ترجمان_دفتر_خارجہ

11پاکستانی ہندوئوں کا بھارت میں قتل ،بھارت نے اطمینان بخش ابتدائی تحقیقات بھی نہیں کی ہیں:ترجمان دفتر خارجہ

EjazNews

ہفتہ وار پریس بریفنگ دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان باہمی مشاورت کا دور منعقد ہوا جس میں سیکرٹری خارجہ سہیل محمود نے پاکستان کی نمائندگی کی تھی۔پاکستان نیگورنو-کاراباخ کی تاریخی فتح پر آذربائیجان کو مبارکباد پیش کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے وزیر خارجہ کی متحدہ عرب امارات کے دو روزہ دورے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ دورے میں اماراتی حکام سے متعدد عالمی و باہمی دلچسپی کے معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اسرائیل کو تسلیم کرنے کا متحدہ عرب امارات کے ویزہ کے معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔اسرائیل کی جانب سے مسئلہ فلسطین کے حل تک یہودی ریاست کو تسلیم نہیں کریں گے۔

ان کا کہنا تھا دنیا بھر میں بھارت کی پاکستان مخالف مہم بے نقاب ہوئی، بھارت کے ریپبلک ٹی وی کو پاکستان کے خلاف مہم پر جرمانہ بھی ہوا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حالیہ ڈوزئیر میں بھارت کی پاکستان مین تخریب کاری، منصوبہ بندی، مالی امداد اور رابطوں کو بے نقاب کیا گیا اور اب بھارت کو ذہن نشین کرلینا چاہیے کہ ایسی غلط بیانی پر مبنی مہمات ماضی میں بھی ناکام ہوئیں اور اب بھی ہوں گی۔

یہ بھی پڑھیں:  انڈین ٹیم انگلینڈ سے بآسانی ہار گئی

انہوں نے کہا کہ بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں محاصرے اور کریک ڈاؤن کو 500 سے زائد روز ہو چکے ہیں اور حالیہ دنوں میں قابض فورسز نے جعلی محاصرے اور سرچ آپریشن میں دو بچوں کے والد ظہیر عباس لون کو شہید کیا ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں قتل عام سے توجہ ہٹانے کے لیے بھارت ایل او سی پر جنگ بندی کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے اور رواں برس بھارت نے 3 ہزار 12 مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزیاں کی ہیں جن میں 28 نہتے شہری شہید ہوے۔پاکستان عالمی برادری سے نوٹس لینے کی اپیل کرتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا انڈیا میں قتل کیے گئے پاکستانی ہندو شہریوں سے متعلق کا کہنا تھا بھارت میں پاکستانی ہندوؤں کا پاکستانی ڈاکٹر کی موجودگی میں پوسٹ مارٹم کرنے کی اجازت نہیں دی گئی جبکہ پاکستانی ہائی کمشن نے اس حوالے سے باقاعدہ درخواست کی تھی۔ پاکستان نے بھارت سے پوسٹ مارٹم رپورٹ، جائے وقوع کی تصاویر اور بیانات طلب کیے تھے۔ بھارت میں قتل ہونے والے 11 پاکستانی ہندوؤں کی بیٹی نے ایف آئی آر کروائی، ‘ہمارا بھارت سے مطالبہ ہے کہ وہ پاکستانی ہندو تھے لہٰذا ہمیں تسلی بخش جواب دیا جائے۔ ‘ابھی تک بھارت سے موصول شدہ معلومات تسلی بخش نہیں ہے، بھارت نے اطمینان بخش ابتدائی تحقیقات بھی نہیں کی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  پی ایس ایل کا افتتاح ہو گیا، شائقین کا جوش دیدنی

یورپی یونین کی جانب سے بھارت کے ریپبلک ٹی وی پر پاکستان مخالف مواد چلانے پر جرمانہ عائد کیے جانے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘یورپی یونین ڈس انفو لیب سے پہلے سے ہی پاکستان مسلسل بھارت کی پاکستان مخالف مہم کو بے نقاب کر رہا تھا، ڈس انفو لیب کی رپورٹ پاکستان کے موقف کی تائید ہے۔ آف کام کے بھارتی ریپبلک ٹی وی کو جرمانہ بھارت اور وہاں کی حکمراں جماعت بی جے پی کے لیے باعث شرمندگی ہے۔ ‘ہم پہلے ہی کہتے تھے کہ بھارت دنیا بھر پاکستان کو بدنام کر رہا ہے۔

کینیڈا میں کریما بلوچ کے مبینہ قتل کے واقعہ پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کریمہ بلوچ کے قتل کے فوری بعد ٹورنٹو میں پاکستانی قونصل جنرل نے پولیس سے رابطہ کیا کیونکہ کریمہ بلوچ پاکستانی شہری تھیں۔ پولیس کے مطابق کریمہ بلوچ کے قتل کے حوالے سے جرم کے کوئی شواہد نہیں ملے، کینیڈا کی پولیس کا بیان اہم ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان اور روس کے مابین مختلف شعبوں میں فروغ کیلئے اتفاق