office_work

کیا ہمارا دفتری ماحول ہمیں بیمار کر رہا ہے ؟

EjazNews

دفتر وہ جگہ ہے جہاں کام کیا جاتا ہے یعنی ہم معیشت بہتر کرنے کے لئے اپنی ذہنی و جسمانی صلاحتیں بروئے کار لا کر معاوضہ ماہانہ تنخواہ کی صورت میں حاصل کرتے ہیں۔ آپ کسی دکان، ڈیپارٹمنٹل سٹور، سکول، کلینک، اخبار رسالے کے دفتر یا فیکٹری مالیاتی ادارے کے کسی شعبے میں کام کر سکتے ہیں۔ مختلف ادارے دفتر ہی کے دائرے میں شمار ہوتے ہیں۔ یہاں افسر، ماتحت، مالک اور ملازم اکٹھے کام کرتے ہیں۔ کبھی کوئی کسی کی کارکردگی سے مطمئن ہوتا ہے اور کبھی جھاڑ تک پلا دی جاتی ہے۔ مذاق میں بڑی بات کر دی جاتی ہے تو کبھی پروموشن نہ کرنے کی دھمکی مل جاتی ہے کوئی باس کی گڈ بکس میں ہے تو کوئی ناپسندیدہ رکن کہلاتا ہے۔ اس طرح کے رویئے دباو اور تناو کی کیفیت میں مبتلا کرتے ہیں۔ لوگوں میں ڈپریشن بڑھ سکتا ہے پھر اس کے نتیجے میں کئی طرح کے ذہنی امراض جنم لیتے ہیں امریکہ میں کی جانے والی ایک تحقیق کے مطابق صرف 30 فیصد ملازمت پیشہ افراداپنی ملازمت سے خوش ہوتے ہیں بقیہ 70 فیصد ناخوش رہتے ہیں۔ اس حوالے سے کی گئی تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اپنے کام میں دل کا لگنا یا اپنے کام سے خوش نہ ہونا انسانی صحت، باہمی تعلقات اور عرصہ حیات پر بھی اثر انداز ہوتا ہے۔ ان اثرات میں وزن کا بڑھ جانا، مسلسل اعصابی تناو اور دماغی صحت کی خرابی شامل ہیں۔ خراب ذہنی صحت کے ساتھ کارکنان کتنی مدت تک بخیر وخوبی اپنے انجام دیتے رہیں گے؟ اس لئے بعض ادارے منفی کارکردگی کے باعث اپنی مقبولیت کھو دیتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  عرضداشت اور دستخطی مہم سے بھی معاشرے میں تبدیلی لائی جاسکتی ہے

تناﺅ ، ڈپریش اور گھبراہٹ خراب ذہنی صحت کی نمایاں اشکال ہیں، جبکہBipolar Disorderاور (Obsessive Compulsive Disorder) یعنی اسی کی دیگر اشکال ہیں، جو صرف فرد ہی پر نہیں،ادارے پر بھی اثر انداز ہوتی ہیں۔
کبھی آپ غور کیا کہ مغربی ملکوں کے باشندوں میں سیروسیاحت کا شوق کیوں ہوتا ہے ؟ کیونکہ صرف برطانیہ ہی میں ہر دس میں سے نو ملازمت پیشہ افراد دماغی صحت کے کسی نہ کسی مسئلے سے دوچار ہیں اور یہ اپنا تناو دور کرنے کے لئے بھی چھٹی لیتے ہیں۔ جہاں وہ Antidepressant ادویہ کے نسخے استعمال کرتے ہیں یا پھر سیاحت کونکل جاتے ہیں مگر ظاہر ہے کہ سیاحت مہنگا شوق ہے۔ ترقی پذیرملکوں میں صورتحال اس کے برعکس ہے۔ یہاں بھی متمول خاندان ہی سیاحت کرسکتا ہے دوسرے یہاں چھٹی لے کر آرام کرنے کا تصور ناپید ہے۔ پاکستان میں کروڑوں لوگ ملازمت پیشہ ہیں۔ ہم یہاں محنت کش طبقے کی مثال سامنے رکھیں گے۔ آپ گاڑی ٹھیک کروانے جس مکینک کے پاس جاتے ہیں اس کے پاس دو تین چھوٹے کام کررہے ہوتے ہیں اور ان سے استاد کا رویہ مناسب نہیں ہوتا۔ ذہنی تناو وہیں نظر آ جائے گا کہ چھوٹی اور ناپختہ عمر سے لڑ کے بار بار عزت نفس مجروح ہوتے دیکھتے ہیں اور سہتے ہیں۔ تمام پڑھے لکھے اور بظاہر شائستہ اور مہذب اداروں کے سربراہان بھی اپنے ماتحتوں کو کام کاصحت مند ماحول فراہم نہیں کر پاتے۔ بے شک ملازمت کی شرائط میں اچھی تنخواہ اور الاونسز ہی پرکشش ہوا کرتے ہیں جس کے لئے لوگ 8 سے 9 یا کم از کم 7 گھنٹے جو دن کا بہترین حصہ ہوتے ہیں، کام کی نذر کر دیتے ہیں، اب کیا ان کارکنوں کو صحت مند ماحول میسر کرنا آجروں کی اخلاقی ذمہ داری نہیں؟

یہ بھی پڑھیں:  جدید عہد نے بچوں کا روایتی کھیل چھین لیا

17 اگست 2016 میں Newsweek میں ایک مضمون Workplace Suicide are Rising and Globalization is to Balance میں تحقیقی حوالہ دیا گیا تھا کہ عالمی کساد بازاری نے امریکہ اور یورپ میں کئی ہزار لوگوں کو جان لینے پر مجبور کر دیا۔ علاوہ ازیں امریکہ، آسٹریلیا، جنوبی کوریا، چین، بھارت اور تائیوان میں بھی کی شرح بلند ہوگئی۔

جاپانی روایت
د فتری ماحول میں ذہنی صحت کیسے برقرار رکھی جا سکتی ہے۔ اس ضمن میں جاپان کاطرز عمل قابل تقلید ہے۔ مثلاً وہاں روزانہ دفتر آنے کے بعد تمام ملازمین کو جسمانی ورزش کا ایک سیشن عمل کرنا لازم قرار دیا گیا ہے۔ اس کے بعد وہ اپنی نشستوں پر جا کر کام کا آغاز کر سکتے ہیں۔ جاپانی ماہرین کے مطابق ورزش Stress اور سستی کو بھگانے میں بے حد معاون ثابت ہوتی ہے۔ اس ورزش سے کام سے لگن بڑھتی ہے۔ اور ملازمین چاق و چوبند ہو کر کام کرتے ہیں۔
اب یورپین ملکوں میں مختلف کارپوریٹ اداروں میں ایسے جم بنادیئے گئے ہیں جہاں ملازمین کسی بھی وقت یا مقررہ وقت میں ورزش کر کے تازہ دم ہو سکتے ہیں۔ بلاشبہ ادارے اگر اپنے ملازمین کی دماغی و جسمانی صحت کے لئے ایسا ہی کچھ اہتمام کریں تو ان کی کارکردگی میں یقینا اضافہ ہوسکتا ہے۔ اس حوالے سے ماہرین نے کچھ امور کی فہرست بنائی ہے جس کے ذریعے دفتری ماحول کو با آسانی ادارے کے لئے کارآمد بنایا جاسکتا ہے۔ ان امور کی انجام دہی میں منیجرز، ٹیم لیڈرز، سپروائزرز ، اور دیگر افسران کا رویہ اور کردار بہت اہمیت رکھتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  زراعت صرف توجہ کی طلبگار ہے

ملازمین کو بہتر کارکردگی کے لئے مسلسل ترغیب دینا ، پذیرائی ، کا موں کی تقسیم (بلحاظ صلاحیت) کرنا، روزانہ کی بنیاد پر کاموں کی وضاحت ، کام کی تکمیل میں مدد و تعاون اور اچھا صاف ستھرا ماحول فراہم کر نا۔ کام کے دوران ٹی بر یک اور لنچ بر یک، نمازوں کی ادائیگی کے لئے وقفے کے علاوہ صحت بخش غذاوں کی فراہمی ، صاف پانی ، ٹوائلٹ کی فراہمی و غیرہ بے حد اہمیت رکھتے ہیں۔ ادارے کے اراکین انتظامیہ کے تعاون سے کبھی پکنک، لنچ یا ڈنر کی آﺅٹنگ کا اہتمام کر لیں تو یہ افعال بھی انسانی ذہنوں پر مثبت اثرات مرتب کرتے ہیں۔ یاد رکھنے کی بات یہ ہے کہ کارکردگی میں بہتری اور اضافہ کام کی جگہ پر سکون ہی سے مشروط ہوا کرتا ہے توآئیے ایک شمع ہم بھی روشن کریں اور ذہنی افسردگی اور پژمردگی سے نجات حاصل کر کے ادارے کو استحکام بخشیں۔