imran_khan_package_industry

عید اور محرم پر خاص احتیاط کی ضرورت ہے:وزیراعظم

EjazNews

وزیراعظم نے کہا کہ اللہ کا کرم ہے کہ پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسز کی تعداد میں کمی ہوئی ہے۔ 3مہینے کے بعد آج سب سے کم کیسز پاکستان میں ہیں اور گزشتہ 3 روز میں ملک میں کروناو وائرس سے سب سے کم اموات ہوئیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ان چند ممالک میں ہے جہاں کرونا پر قابو پایا جارہا ہے، کچی آبادیوں میں لاک ڈاؤن لگانا بہت مشکل تھا۔
وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہسپتالوں پردباومیں کمی آ گئی ہے لیکن ہمیں اب بھی احتیاط کی ضرورت ہے۔ شروع میں ہم پرپریشر ڈالا گیا کہ مکمل لاک ڈاون کریں ، ہمارےاور یورپ کے حالات بہت مختلف ہیں، ہمارے ہاں غربت ہے لوگ کچی آبادیوں میں رہتے ہیں۔ ہم نےچیزیں کی جو بعد میں دنیا کو سمجھ آئی ہم نےاسمارٹ لاک ڈاوَن لگایا تاکہ لوگوں کا کاروبار چلتا رہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستان میں ثابت ہو گیا کہ اوپر والے طبقے کو لاک ڈاؤن سے کوئی فرق نہیں پڑا تاہم وہاں کا نچلا طبقہ بالکل تباہ ہو گیا ہے۔ اسمارٹ لاک ڈاون سےمتعلق ہمارافیصلہ درست ثابت ہوا، ہم نے نچلےطبقےکیلئے احساس ایمرجنسی کیش پروگرام شروع کیا، ہم نےشفافیت سے لوگوں تک پیسہ پہنچایا اور جہاں کیسز زیادہ سامنے آئے وہاں ہم نے ٹارگٹڈ اسمارٹ لاک ڈاون کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  نور مقدم کیس کا مجرم امریکی شہری ہی کیوں نہ ہو فرار کا موقع نہیں ملے گا:وزیراعظم

عمران خان نے کہا کہ دنیا کو یہ سمجھ آ گئی ہے کہ اگر کرونا کیسز نیچے جانے کے بعد احتیاط نہ کی گئی تو اس میں پھر اضافہ ہو سکتا ہے، اس کی مثال آسٹریلیا کا شہر میلبرن ہے جہاں دوبارہ کورونا کیسز سامنے آنے کے بعد لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ عید اور محرم کے دوران بہت احتیاط کی ضرورت ہے اگر بے احتیاطی کی گئی تو بہت بڑا نقصان ہو گا۔