عثمان بزدار کی کابینہ میں بھی تبدیلی ، اہم ترین وزیر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا

EjazNews

وزیراعظم عمران خان کے دورہ لاہور کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی کابینہ میں بھی تبدیلی آگئی اور اسد کھوکھر کو کابینہ سے فارغ کردیا گیا، اسد کھوکھر نے موقف اپنایا کہ وہ ذاتی سیاسی وجوہات کی بناء پر بطور صوبائی وزیر فرائض انجام نہیں دے سکتے تاہم حکومت پنجاب کے ذرائع کا دعویٰ ہے کہ انٹیلی جنس رپورٹس کی بنیاد پر ان سے استعفیٰ لیا گیا تاہم باوقار راستہ دیاگیا۔

اسد کھوکھر کے پاس جنگلی حیات کی وزارت تھی اور انہیں وزیر بنائے جانے کے وقت بھی شدید اختلافات سامنے آئے تھے اور وزیر بننے کے بعد کئی ماہ بعد بھی اسد کھوکھر کو محکمہ نہیں ملا تھا۔رپورٹ کے مطابق وزیراعظم کے دورے کے اثرات دکھائی دیتے ہیں اور گزشتہ رات دو اہم بیوروکریٹس کو ہٹایاگیا اور اب اسد کھوکھر سے استعفیٰ لے لیا گیا، حکومتی ذرائع نے دعویٰ کیا کہ اسد کھوکھر نے استعفیٰ دیا نہیں بلکہ ان سے انٹیلی جنس اطلاعات کی بنیاد پر لیا گیا، انہیں باوقار طریقے سے عہدے سے علیحدہ ہونے کا آپشن دیا گیا اور انہوں نے خود سے استعفیٰ لکھ کر دیدیا جو فوری طورپر منظور بھی ہو نے کا امکان ہے۔ ایک اطلاع یہ بھی ہے کہ دونوں میں سے ایک بیوروکریٹ کو ہٹائے جانے پر اسد کھوکھر نے استعفیٰ دیا تاہم اس کی تصدیق نہیں ہوسکی ۔

یہ بھی پڑھیں:  20مئی سے 30ٹرینیں چلیں گی:وزیر ریلوے

یادرہے کہ گزشتہ دنوں وزیراعلیٰ پنجاب کو ہٹائے جانے کی افواہیں گردش کرتی رہیں لیکن وزیراعظم نے عثمان بزدار پر اعتماد کا اظہار کیا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں