japan_olypmic

جاپان اولمپکس میں انٹرنیشنل شائقین شرکت نہیں کر پائیں گے

EjazNews

جاپانی میڈیا کے مطابق اولمپکس منتظمین کی جانب سے ہفتے کو جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا کہ بیرون ملک رہنے والے ٹکٹ ہولڈرز کی وضاحت کے لیے جاپانی حکام اس نتیجے پر پہنچے ہیں بین الاقوامی شائقین اولمپکس اور پیرالمپکس کے موقع پر جاپان میں داخل نہیں ہو سکیں گے۔ انٹرنیشنل اولمپکس کمیٹی اور انٹرنیشنل پیرالمپکس کمیٹی جاپان کے اس فیصلے کا مکمل احترام کرتے ہوئے اسے تسلیم کرتی ہے۔جاپانی حکام نے اولمپک اور پیرالمپک کمیٹیوں کو بتایا کہ غیرملکی شائقین کے ملک میں داخلے کی یقین دہانی کرانا انتہائی مشکل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس اعلان کے بعد اب ٹکٹ لینے والوں کے لیے صورتحال واضح ہو جائے گی اور تمام شرکا اور جاپانی عوام کے لیے گیمز کو محفوظ بنانے میں مدد ملے گی۔

گزشتہ سال شیڈول اولمپکس کو ایک سال ملتوی کردیا گیا تھا اور اب گیمز کا انعقاد 23 جولائی سے ٹوکیو میں ہونا ہے جبکہ اس کے ایک ماہ بعد 24 اگست سے پیرالمپکس منعقد ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  جنوبی افریقہ کے کپتان ٹی 20نہیں کھیل پائیں گے

منتظمین نے کہا کہ جاپان اور دنیا کے دیگر ممالک میں کووڈ-19 کی چیلنجنگ صورتحال، سفری پابندیوں اور وائرس کی نئی طرز کے پھیلاؤ کی وجہ سے ہم یہ فیصلہ لینے پر مجبور ہوئے اور جن لوگوں نے ٹکٹ خرید لیے تھے انہیں رقم واپس کردی جائے گی۔

تاریخ میں پہلی مرتبہ گزشتہ سال مارچ میں وائرس کے خطرے کے پیش نظر عالمی گیمز کو ملتوی کردیا گیا تھا جہاں مذکورہ مقابلے میں 200 ممالک کے 11 ہزار سے زائد ایتھلیٹس نے شرکت کرنا تھی۔
انٹرنیشنل اولمپکس کمیٹی کے سربراہ تھامس باک نے کہا ہے کہ غیرملکی شائقین کی شرکت پابندی ہر کسی کے لیے عظیم قربانی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہم انتہائی مایوسی کے ساتھ اولمپکس کے تمام پرجوش شائقین اور ایتھلیٹس کے اہلخانہ اور دوستوں کے علم میں یہ خبر لانا چاہتے ہیں جو گیمز دیکھنے کے لیے آنے کے منصوبے بنا رہے تھے۔

انہوں نے شائقین سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ ہر فیصلہ کرتے ہوئے ہمیں حفاظت کے اصول کو اولین ترجیح دینی ہوتی ہے اور مجھے پتہ ہے کہ ہمارے جاپانی دوستوں کے لیے یہ فیصلہ لینا آسان نہیں رہا ہو گا لیکن ہم کسی قسم کے تحفظات کا اظہار کیے بغیر اولمپکس کو کامیاب بنانے کے لیے ان کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑے ہیں ۔

یہ بھی پڑھیں:  کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ہار کا سلسلہ جاری. یونائیٹڈ کی فتح

تھامس باک نے کہا کہ اگر حالات بہتر ہوتے تو ہم گیمز میں بین الاقوامی شائقین کی موجودگی یقینی بنانے کو ترجیح دیتے لیکن وبا کی وجہ سے ہمیں یہ تسلیم کرنا ہو گا کہ ہم ایک آئیڈیل دنیا میں نہیں رہ رہے۔

غیرملکی شائقین کی شرکت پر پابندی سے ٹوکیو اولمپکس کے منتظمین کو ایک اور بڑا مالی دھچکا لگا ہے جو گیمز کی التوا کی وجہ سے پہلے ہی کافی مالی نقصان اٹھا چکے ہیں۔

کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے کیے گئے اقدامات کے سبب گیمز کی لاگت پہلے ہی 2.8ارب ڈالر بڑھ چکی ہے اور یہی وجہ ہے کہ منتظمین کسی صورت گیمز کو مزید ملتوی کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔

رواں سال کے اوائل جاپانی وزیر اعظم یوسی ہائید سوگا نے کہا تھا کہ یہ گیمز محفوظ اور عالمی یکجہتی علامت ہوں گے۔