senet

سینٹ میں سب سے غریب امیر جماعت اسلامی نکلے؟

EjazNews

مالی سال 2019-2020 میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے اثاثوں کی مالیت 10کروڑ 63لاکھ روپے جبکہ ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا 6کروڑ 77 لاکھ روپے کے اثاثوں کے مالک ہیں۔
سینیٹر اعظم سواتی 81کروڑ 12 لاکھ روپے مالیت کے اثاثے رکھتے ہیں۔
وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم 39 کروڑ 96 لاکھ روپے مالیت کے اثاثوں کے مالک ہیں۔
سینیٹ دستاویزات کے مطابق وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کے 4 کروڑ 67 روپے مالیت کے اثاثے رکھتے ہیں۔
سینیٹ میں قائد ایوان ڈاکٹر شہزاد وسیم 20 کروڑ 21 لاکھ روپے مالیت کے اثاثوں کے مالک ہیں جب کہ ان کی اہلیہ کے اثاثوں کی مالیت 17 کروڑ 23 لاکھ ہے۔

سینیٹر تاج محمد آفریدی 1 ارب 22 کروڑ 27 لاکھ روپے مالیت کے اثاثوں کے مالک ہیں جب کہ ان کے بیرون ممالک 16 کروڑ 71 لاکھ روپے کے اثاثے ہیں۔
سینیٹ دستاویزات کے مطابق مسلم لیگ ن کے چودھری تنویر کی زرعی جائیداد 3 کروڑ 67 لاکھ جب کہ غیر زرعی جائیداد کی مالیت 4 کروڑ 74 لاکھ سے زائد ہے۔اس کے علاوہ چودھری تنویر نے 3 کروڑ 79 لاکھ سے زائد کی رقم بینک اکاؤنٹ میں ظاہر کی ہے۔
ن لیگ کے سینیٹر مشاہد اللہ خان ایک کروڑ 75 لاکھ روپے کے پلاٹس کے مالک ہیں۔ انہوں نے 17 لاکھ اور 14 لاکھ سے زائد بینک اکاؤنٹس میں ظاہر کیے ہیں جب کہ ان کا ملک اور ملک سے باہر کوئی کاروبار نہیں ہے۔
سینیٹر پرویز رشید کے پاکستان اور بیرون ملک میں کوئی اثاثے اور کاروبار نہیں ہے۔ انہوں نے صرف 33 لاکھ روپے کی رقم بینک اکاؤنٹ میں ظاہر کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پنجاب میں سخت لاک ڈائون، دفاترکھلے ہوں گے

سینیٹر راجہ ظفر الحق نے الیکشن کمیشن میں اپنی جائیداد ظاہر کی لیکن مالیت ظاہر نہیں کی ہے جب کہ ان کے بینک اکاؤنٹ میں صرف 50 ہزار روپے موجود ہیں۔
سینیٹر رحمان ملک 1.3 ملین پاؤنڈ کے بیرون ملک اثاثوں کے مالک ہیں، ان کے پاس 2.7 ملین روپے کا 50 تولے سونا ہے جو ان کی اہلیہ کی ملکیت ہے ۔

سینیٹر رضا ربانی کے پاس پاکستان میں ایک کروڑ 53 لاکھ کا کاروبار ہے، ان کو 62 لاکھ روپے کی جائیداد تحفے میں ملی ہے۔ انہوں نے 15 لاکھ 55 ہزار سے زائد کا انکم ٹیکس ظاہر کیا ہے۔
جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق سینیٹ میں غریب ترین رکن ہیں۔ انہوں نے 3 لاکھ 61 ہزار روپے سے زائد کا کاروبار ظاہر کیا ہے جب کہ ان کے پاس 12 کنال کی وراثتی زمین موجود ہے۔
اس کے علاوہ ان کے بینک اکاؤنٹ میں 6 لاکھ روپے

یہ بھی پڑھیں:  پشاور زلمی کی اسلام آباد یونائیٹڈ کو شکست