Islam_allah_Bashat_allah_ki_ha

اللہ تعالیٰ کی بادشاہت

EjazNews

(سورۃ الفاتحہ۱)
۱۔ سب تعریفیں اللہ ہی کے لیے ہیں جو رب ہے سب جہانوں کا۔
۲۔ بڑا مہربان، نہایت رحم والا ہے۔
۳۔ مالک روز جزا کا۔
۴۔ تیری ہی ہم عبادت کرتے ہیں اور تجھ ہی سے مدد مانگتے ہیں۔

(سور ۃ آل عمران ۳)
۲۶۔ کہہ دو ! اے اللہ ، مالک بادشاہی کے ! دیتا ہے تو حکومت جسے چاہے اور چھین لیتا ہے حکومت جس سے چاہے اور عزت دیتا ہے تو جسے چاہے اور ذلت دیتا ہے جسے چاہے۔ تیرے ہی ہاتھ میں ہے خیر۔ بیشک تو ہر چیز پر پوری قدرت رکھتا ہے۔

(سور ۃ المائدۃ ۵)
۱۷۔ وہ لوگ کفر کرتے ہیں جو کہتے ہیں ’’مسیح ابن مریم ہی اللہ ہے ‘‘ کہہ دے۔ کون اللہ تعالیٰ کے سامنے کچھ بھی اختیار رکھتا ہے۔ اگر وہ چاہے کہ مسیح ابن مریم اس کی ما ں اور جو بھی زمین میں سے سب کو ہلاک کر دے اور آسمانوں اور زمین اور جو کچھ ان کے درمیان ہے سب پر بادشاہت اللہ تعالیٰ کی ہے۔ وہ جو چاہتا ہے پیدا کرتا ہے اور اللہ تعالیٰ ہر شے پر قادر ہے۔

(سورۃ الانعام۶)
۷۳۔ اور وہی ہے جس نے آسمانوں اورزمین کو حق پر پیدا کیا ہے اور جس دن وہ کہے گا’’ہو جا ‘‘ وہ ہو جائے گا۔اس کا قول حق ہے اور حکومت اسی کی ہوگی جس دن صور پھونکا جائے گا، وہ غیب اور ظاہر کا جاننے والا ہے اور وہ دانا اور خبر دار ہے۔

(سورۃ الحج ۲۲)
۵۶۔ اس دن صرف اللہ ہی کی بادشاہت ہوگی وہی ا ن میں فیصلے فرمائے گا ۔ایمان اور نیک عمل والے تو نعمتو ں سے بھری جنتوں میں ہوں گے ۔ [یعنی دنیا میں تو عارضی طور پر بطور انعام یا بطور امتحان لوگوں کوبھی بادشاہتیں اور اختیارو اقتدار مل جاتا ہے۔ لیکن آخرت میں کسی کے پا س بھی کوئی بادشاہت اور اختیار نہیں ہوگا۔ صرف اللہ کی بادشاہی اور اس کی فرماں روائی ہوگی، اسی کا مکمل اختیار اور غلبہ ہوگا۔ ’’بادشاہی اس دن ثابت ہے واسطے رحمٰن کے اور یہ دن کافروں پر سخت بھاری ہوگا‘‘، اللہ تعالیٰ پوچھے گا۔ ’’آج کس کی بادشاہی ہے ؟‘‘ پھر خود ہی جواب دے گا ۔’’ایک اللہ غالب کی‘‘۔ (تفسیر از شاہ فہد قرآن)]

یہ بھی پڑھیں:  طہارت کے مسائل اور احکام

(سورۃ یٰسین ۳۶)
۸۳۔ پس پاک ہے وہ اللہ تعالیٰ جس کے ہاتھ میں ہر چیز کی با دشاہت ہے اور جس کی طرف تم سب لوٹائے جائو گے۔

(سوۃ الزمر ۳۹)
۶۔ اس نے تم سب کو ایک ہی جان سے پیدا کیا ہے ، پھر اسی سے اس کا جوڑا پیدا کیا اور تمہارے لیے چوپایوں میں سے (آٹھ نرو مادہ)اتارے وہ تمہیں تمہاری مائوں کے پیٹوں میں ایک بناوٹ کے بعد دوسری بناوٹ پر بناتا ہے تین تین اندھیروں میں، یہی اللہ تعالیٰ تمہارا رب ہے اسی کے لیے بادشاہت ہے، اس کے سواکوئی معبود نہیں، پھر تم کہاں بہک رہے ہو۔
۴۴۔ فرما دیجئے ! کہ تمام سفارش کا مختار اللہ تعالیٰ ہی ہے۔ تمام آسمانوں اور زمین کا راج اسی کے لیے ہے تم سب اسی کی طرف پھیرے جائو گے۔

(سورۃ المؤمن ۴۰)
۱۶۔ جس دن سب لوگ ظاہر ہو جائیں گے، ان کی کوئی چیز اللہ تعالیٰ سے پوشیدہ نہ رہے گی۔ آج کس کی بادشاہی ہے ؟ فقط اللہ تعالیٰ واحدو قہار کی۔[یہ قیامت والے دن اللہ تعالیٰ پوچھے گا جب سارے انسان اس کے سامنے میدان محشرمیں جمع ہوں گے۔ اللہ تعالیٰ زمین کو اپنی مٹھی میں اور آسمان کو اپنے دائیں ہاتھ میں لپیٹ لے گا اور فرمائے گا میں بادشاہ ہوں، زمین کے بادشاہ کہاں ہیں؟‘‘ (تفسیر از شاہ فہد قرآن)]

یہ بھی پڑھیں:  اللہ تعالیٰ کی رضا جوئی

(سورۃ ا لزخرف ۴۳)
۸۴۔ وہی آسمانوں میں معبود ہے اورزمین میں بھی وہی قابل عبادت ہے اور وہ بڑی حکمت والااور پورے علم والا ہے۔
۸۵۔ اور وہ بہت برکتوں والا ہے جس کے پاس آسمانو ںزمین اور ان کے درمیان کی با دشاہت ہے، اور قیامت کا علم بھی اسی کے پاس ہے اور اسی کی جانب تم سب لوٹائے جائو گے۔

(سورۃ الجاثیۃ ۴۵)
۲۶۔ آپ فرما دیجئے ! اللہ تعالیٰ ہی تمہیں زندہ کرتا ہے پھر تمہیں مار ڈالتا ہے پھر تمہیں قیامت کے دن جمع کرے گا جس میں کوئی شک نہیں لیکن اکثر لوگ نہیں سمجھتے۔
۲۷۔ اور آسمانوں اورزمین کی بادشاہی اللہ تعالیٰ ہی کی ہے اور جس دن قیامت قائم ہو گی ا س دن اہل باطل بڑے نقصان میں پڑیں گے۔
۲۸۔ اور آپ دیکھیں گے کہ ہر امت گھٹنوں کے بل گری ہوئی ہوگی۔ ہر گروہ اپنے نامہ اعمال کی طرف بلایا جائے گا ۔ آج تمہیں اپنے کیے کا بدلہ دیا جائے گا۔
۲۹۔ یہ ہے ہماری کتاب جو تمہارے بارے میں سچ سچ بول رہی ہے، ہم تمہارے اعمال لکھواتے جاتے تھے۔
۳۰۔پس لیکن جو لوگ ایمان لائے اور انہوں نے نیک کام کیے تو ان کو ان کا رب اپنی رحمت تلے لے لے گا، یہی صریح کامیابی ہے۔
۳۱۔ لیکن جن لوگوں نے کفر کیا تو (میں ان سے کہوں گا) کیا میری آیتیں تمہیں سنائی نہیں جاتی تھیں ؟ پھر بھی تم تکبر کرتے رہے اور تم تھے ہی گنہگار لوگ۔
۳۴۔ اور کہہ دیا گیا کہ آج ہم تمہیںبھلا دیں گے جیسے کہ تم نے اپنے اس دن سے ملنے کو بھلا دیا تھا تمہارا ٹھکانا جہنم ہے اور تمہارا مددگار کوئی نہیں۔

(سورۃ الفتح ۴۸)
۱۴۔ اور زمین اور آسمانوں کی بادشاہت اللہ تعالیٰ ہی کے لیے ہے جسے چاہے بخشے اور جسے چاہے عذاب کرے ۔ اور اللہ تعالیٰ بڑا بخشنے والامہربان ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  افلاس (دیوالیہ)

(سورۃ النجم ۵۳)
۲۴۔ کیا ہر شخص جو آرزو کرے اسے میسر ہے ؟۔
۲۵۔ اللہ تعالیٰ ہی کے ہاتھ ہے یہ جہان اور وہ جہان۔[ایسا نہیں ہوا کرتا کہ انسان جو چاہے وہ ضرور پورا ہو کر رہے۔ کچھ امیدیں بر آتی ہیں اور کچھ پوری نہیں ہوتیں۔ ہر چیز اللہ تعالیٰ کے اختیار میں ہے۔ اس دنیا میں جو کچھ ہوا اور جو کچھ ہو رہا ہے اس کے اذن سے ہو رہا ہے اور عالم آخرت میں جو کچھ ہوگا اس کے حکم سے ہوگا۔دونوں جہانوں کی بادشاہی اسی کے لیے مخصوص ہے۔ (تفسیر ازضیاء القرآن)]

(سورۃ الحدید۵۷)
۲۔ آسمانوں اورزمین کی بادشاہت اسی کی ہے، وہی زندگی دیتا ہے اور موت بھی اور وہ ہر چیز پر قادر ہے۔
۵۔ آسمانوں کی اور زمین کی بادشاہی اسی کی ہے اور تمام کام اسی کی طرف لوٹائے جاتے ہیں۔

(سورۃ التغابن ۶۴)
۱۔ (تمام چیزیں) جو آسمانوں اورزمین میں ہیں اللہ کی پاکی بیان کرتی ہیں اسی کی سلطنت ہے اور اسی کی تعریف ہے، اور وہ ہر ہر چیز پر قادر ہے۔

(سورۃ الملک ۶۷)
۱۔ بہت بابرکت ہے وہ (اللہ) جس کے ہاتھ میں بادشاہی ہے اور جو ہر چیز پر قدرت رکھنے والا ہے۔ [اسی کے ہاتھ میں بادشاہی ہے یعنی ہر طرح کی قدرت اور غلبہ اسی کو حاصل ہے، وہ کائنات میں جس طرح کا تصرف کرے، کوئی اسے روک نہیں سکتا، وہ شاہ کو گدا اور گدا کو شاہ بنا دے، امیر کو غریب، غریب کو امیر کر دے، کوئی اس کی حکمت و مشیت میںدخل نہیں دے سکتا۔ (از تفسیر شاہ فہد قرآن)]