austria terror attack

آسٹریا میں دہشت گرد حملہ، تین افراد ہلاک

EjazNews

آسٹریا کے شہر ویانا کے وسطی علاقے میں ہونے والے دہشت گرد حملے میں ایک حملہ آور سمیت تین افراد کے ہلاک ہو نے کی اطلاعات ہیں۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق ویانا کے میئر مائیکل لدویگ نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ زخمیوں میں شامل ایک اور خاتون بھی ہلاک ہو گئی ہیں جبکہ 15 افراد کو ہسپتال لے جایا گیا ہے ۔ان میں سات شدید زخمی ہیں۔
آسٹریا کے چانسلر سیباسٹیئن کرز نے واقعہ کو ایک گھناونا دہشت گرد حملہ قرار دیا ہے۔

ویانا پولیس نے اپنے ٹوئٹر اکاونٹ پر بتایا ایک مشتبہ شخص کو پولیس اہلکاروں نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ رائفلوں سے مسلح متعدد افراد نے حملہ کیا۔ چھ مختلف مقامات پر فائرنگ کی گئی ہے۔

عالمی میڈیا کے مطابق وزیر داخلہ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ پیر کی شام دہشت گرد حملے کے بعد کم از کم ایک حملہ آور فرار ہے جبکہ ایک ہلاک ہوا ہے۔جو کچھ اس وقت ہم جانتے ہیں اس کے مطابق کم ازکم ایک حملہ آور اب بھی فرار ہے۔آسٹریا کے چانسلر نے ٹویٹ کیا ہم اپنی جمہوریت کے مشکل وقت کا سامنا کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکہ چین کی لڑائی صحافیوں کو نکالنے تک پہنچ گئی

انہوں نے کہا کہ ہماری پولیس دہشت گردی کے مرتکب افراد کے خلاف فیصلہ کن کارروائی کرے گی۔ہمیں کبھی دہشت گردی سے نہیں ڈرایا جا سکتا اور ہم ہر طرح سے اس حملے کا مقابلہ کریں گے۔

فرانس کے صدر میخواں نے ٹویٹ میں اس عزم کا اظہار کیا کہ ویانا میں فائرنگ کے واقعہ کے بعد یورپ دہشت گردوں کے آگے نہیں جھکے گا۔فرانس کے بعد ایک دوست قوم پر حملہ کیا گیا ہے۔ یہ ہمارا یورپ ہے۔ ہمارے دشمن کو معلوم ہونا چاہیے کہ ان کا سامنا کس سے ہے۔برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے ٹوئٹ کیا ہم آپ کے ساتھ دہشت گردی کے خلاف متحد ہیں۔