imran_khan_pti

جب جزا اور سزا کا نظام نہ ہو تو معاشرے تباہ ہو جاتے ہیں:وزیراعظم

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ موجودہ وقت ملک کے لیے فیصلہ کن ہے، جن لوگوں کے مفادات متاثر ہو رہے ہیں وہ ملک میں آسانی سے تبدیلی نہیں آنے دیں گے، وہ جو چاہے کر لیں میں بلیک میل نہیں ہوںگا۔ایوان اقبال لاہور میں انصاف ڈاکٹرز فورم کی تقریب سے خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ پہلی بار ان کو نظر آ رہا ہے کہ چوری پر احتساب ہوگا۔سارے چور ایک ہی سٹیج پر کھڑے ہو کر شور مچا رہے ہیں، یہ ڈرے ہوئے ہیں، انہوں نے جیلوں میں جانا ہے۔ 30 سال تک باریاں لینے والے آج اکٹھے ہو گئے ہیں، احتساب میرٹ پر ہو رہا ہے۔ یہ لوگ جو مرضی کرلیں احتساب ہونا ہی ہے۔

وزیر اعظم نے کرونا بحران کے دوران اہم کردار ادا کرنے پر ڈاکٹرز کو سراہتے ہوئے کہا کہ پاکستان کرونا کے خلاف اہم جنگ لڑ رہا ہے۔
وزیراعظم نے خبردار کرتے ہوئے کہا کرونا کی دوسری لہر آنے کا خدشہ ہے، آئندہ دو ماہ بہت احتیاط سے گزارنا ہوں گے۔ جہاں سموگ زیادہ ہے وہاں کیسز بڑھنے کا خدشہ ہے، لاہور کے لوگوں کو خصوصی طور پر احتیاط کی ضرورت ہے۔ان کی حکومت کو ابھی 26 ماہ ہوئے ہیں اور لوگ سوال کرتے ہیں کہ کدھر ہے نیا پاکستان؟ میں ان کو سمجھا سمجھا کر تھک گیا ہوں کہ تبدیلی کا نام اداروں کی اصلاحات ہیں جس میں وقت درکار ہوتا ہے۔نیا پاکستان کوئی سوئچ تو نہیں کہ یکدم آن ہو جائے، تبدیلی ایک مسلسل جدوجہد کا نام ہے۔جب جزا اور سزا کا نظام نہ ہو تو معاشرے تباہ ہو جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستانی خواتین نے تیسرا T20میچ جیت لیا