فرانسیسی صدر اور حکومت سے گستاخانہ خاکوں پر معافی مانگنے کا مطالبہ دنیا بھر میں ہو رہا ہے

EjazNews

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ فرانس کے سفیر کو دفتر خارجہ طلب کر کے توہین آمیز خاکوں پر احتجاج کیا جائے گا۔شاہ محمود قریشی نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اسلام مخالف بیانیہ کا فوری نوٹس لے۔ان کا کہنا تھا کہ اسلام مخالف بیانیے پرہم اپنا احتجاج ریکارڈ کرائیں گے، کسی کوحق نہیں کہ مسلمانوں کی دل آزاری کرے۔فرانس کے صدر کے غیر ذمہ دارانہ بیان نے جلتی پر تیل کا کام کیا ہے۔ نفرت کے جو بیج بوئے جا رہے ہیں ان کے نتائج شدید ہوں گے۔

دفتر خارجہ نے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت اور فرانسیسی صدر کے اسلام مخالف بیان پر پاکستان میں فرانس کے سفیر مارک بارٹی کو طلب کیا اور احتجاجی مراسلہ ان کے حوالے کیا۔

پاکستان کے علاوہ کویت سمیت متعدد عرب ممالک کی کاروباری تنظیموں نے چند دن قبل ہی فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا اور یورپی ملک کی ہر طرح کی مصنوعات کو دکانوں سے ہٹایا جا رہا تھا۔طابق فرانس کے ایک استاد کی جانب سے کچھ دن قبل کلاس کے دوران بچوں کوگستاخانہ خاکے دکھانے کی خبر سامنے آنے کے بعد عرب ممالک نے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا اعلان کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم کا کراچی کیلئے پیکج۔گھوٹکی میں خطاب۔لاہور میں ٹرین کا افتتاح

فرانسیسی مصنوعات کے خلاف سب سے پہلے کویت کی 70 سے زائد کاروباری تنظیموں کے اتحاد نے بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد کویت بھر سے فرانسیسی مصنوعات کو سٹورز سے ہٹایا جا رہا ہے۔
علاوہ ازیں سعودی عرب، ترکی، متحدہ عرب امارات، پاکستان، ملائیشیا، انڈونیشیا، مصر اور دیگر مسلم ممالک میں بھی فرانس کے خلاف عوام نے غم و غصے کا اظہار کیا۔

عرب ممالک میں اپنی مصنوعات کے بائیکاٹ شروع ہونے کے چند دن بعد ہی فرانسیسی حکومت کے ہوش ٹھکانے آگئے اور اس نے مشرق وسطی کے ممالک سے بائیکاٹ ختم کرنے کی اپیل کردی۔ مشرق وسطیٰ کے ممالک میں فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کے بعد فرانسیسی وزارت خارجہ نے عرب ممالک کو بائیکاٹ ختم کرنے کی اپیل کی۔

فرانسیسی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ فرانس کے خلاف گستاخانہ خاکوں کی تشہیر اور اشاعت کے الزامات کے تحت کیے جانے والا بائیکاٹ اور مظاہرے من گھڑت ہیں۔جہاں ایک طرف فرانسیسی حکومت نے مشرق وسطیٰ کے ممالک سے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا، وہیں دنیا بھر کے مسلم ممالک سمیت دیگر مسلم آبادی والے ممالک کے عوام کی جانب سے فرانس کے خلاف سوشل میڈیا پر مہم میں تیزی دیکھی گئی۔دنیا بھر میں چلنے والی فرانس مخالف سوشل میڈیا مہم میں فرانسیسی صدر اور حکومت سے گستاخانہ خاکوں پر معافی مانگنے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم آج خیبر میں جلسہ سے خطاب کریں گے