health

طبی معلومات

EjazNews

ٹھہر ٹھہر کر کھانا فائدے کی ضمانت

میڈیکل یونیورسٹی آف کیرولینا نے مختلف افراد پر تجربات کے بعد یہ را ئے قائم کی ہے کہ وہ لوگ جنہیں عارضہ، قلب یا بڑھے ہوئے کولیسٹرول کا عارضہ ہو چلا ہو وہ مریض یکمشت اور تیز رفتاری سے کھانا نہ کھائیں۔ مناسب وقفے اور خوراک کے حصے کر کے کھائیں۔ اس صورت میں مضر اثرات کم ہو سکتے ہیں انہوں نے ان افراد کو ایک دن چکن سینڈوچ، چپس اور مشروب کی ایک بوتل پینے کو دی جو انہیں پانچ منٹ میں ختم کرنا تھی جبکہ دوسرے روز غذا انہیں وقفے وقفے سے دی گئی اور تیس منٹ میں ختم کرائی گئی کہ اس طرح پہلے دن کے مقابلے میں ان کے معدوں پر40فیصد کم اثر پڑا۔ لہٰذا بہتر یہی ہے کہ غذا کم کھائی جائے اور مناسب وقفہ ہوتاکہ معدہ انہیں آسانی سے ہضم کر لے اضر اثرات بھی نہ ہونے پائیں۔

دوڑ لگائیے توانائی پائیے

دوڑ لگا نے والوں کی صحت اچھی رہتی ہے یہ تو سب جانتے ہیں لیکن ذہنی توانائی میں اضافے کا دوڑ سے بھی تعلق ہو سکتا ہےیہ بات غیر معمولی ہے۔ بہر حال اس بات کی تصدیق کیمبرج یونیورسٹی کے اعصاب و دماغ کے ماہر سائنسدانوں نے کر دی ہے ان کی تحقیق کے مطابق دوڑنے سے دماغ کو تحریک ملتی ہے اور اس نتیجہ میں دماغ کے گرے میٹرز (خاکستری مادے) کی تیاری بڑھ جاتی ہے جس سے دماغی صلاحیت پر اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں اس سے یادداشت میں نمایاں اضافہ بھی ممکن ہے۔ دماغی الجھنوں سے نجات پانی ہے تو متبادل طریقے ضرور آزمانے چاہئیں۔ نئے دماغی خلیات دماغ کے اس حصے میں خاص طور پر زیادہ تیار ہونے لگتے ہیں جہاں یادداشتوں کا خزانہ جمع رہتا ہے گویا دوڑنے کی ورزش کی صلاحیت کی محافظ ہی نہیں، اس میں اضافے کا سبب بھی ہوتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  السر :مرض، علاج اور احتیاطی تدابیر

لیزر آپریشن سے ڈرئیے نہیں

اگر آپ کی آنکھوں کا لیزر آپریشن ہونے والا ہے تو فکر مند نہ ہوں۔ آپ کی آنکھ کی اوپری سطح سے ایک چھوٹا سا ٹکڑا کاٹ لیا جائے گا اس کی لیزر سے آنکھ کے پردے سے خلیات کو ہٹا کر Corneaکو ایک نئی شکل دی جائے گی پھر اس کے بعد اس کاٹے گئے ٹکڑے کو دوبارہ اپنی جگہ پر جما دیا جائے گا۔ آپ کو حیرت ہو گی کہ اس سارے عمل میں صرف20سیکنڈ لگیں گے۔ آپریشن سے پہلے ایک ہفتے کے لئے احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں گی اور آپریشن کے بعد دو ہفتوں تک کے لئے آرام کرنا پڑے گا۔ دلچسپ امر یہ ہے کہ آپریشن کے دوران یا اس کے بعد کسی مریض کو تکلیف کی شکایت کرتے ہوئے نہیں پایا گیا۔

ایشیائی افراد میں شوگر کے مریض کیوں ؟

ایک تحقیق سے یہ بات سامنے آئی کہ ایشیائی نژاد برطانوی شہریوں میں ٹائپ ٹو ذیابطیس کے کیس سامنے آنے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ کہتے ہیں کہ ایشائی نژاد افراد کے پٹھے ایسے ہوتے ہیں جو یورپی باشندوں کی نسبت کم چکنائی کو استعمال میں لاتے ہیں اور چربی کم جلانے کی وجہ سے ان میں ذیابطیس کی بیماری ہونے کے امکانات بہت بڑھ جاتے ہیں۔
مغربی ملکوں میں بسنے والے ایشیائی نژاد افراد میں موٹاپے اور ٹائپ ٹو ذیا بطیس ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں اب تک یہی سمجھا جاتا رہا تھا کہ ایشیائی نژاد افراد میں شوگر ہونے کی وجہ موٹاپا ہے لیکن صرف اس ایک محرک کی وجہ سے ان میں دیگر یورپی باشندوں کے مقابلے میں شوگر ہونے کے چھ گنا زیادہ امکان کو نہیں سمجھا جا سکا تھا۔ اب تحقیق بتاتی ہے کہ ایشیائی نژاد افراد کے پٹھوں میں چکنائی کو ایندھن کی طرح جلانے کی صلاحیت یورپی افراد کی نسبت کم ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہارٹ اٹیک سے ہر سال ہزاروں لوگ انتقال کر جاتے ہیں

سرد ہوا کان کیلئے مضر

یوں تو جب آپ علی الصباح کھلی جگہ پر نکلیں تو کان اور ناک ڈھانپ لیں لیکن جب کان میں درد ہو تو کوئی ٹھنڈی چیز نہ تو کھائیں نہ دوا استعمال کریں اور نہ ہی ٹھنڈی تاثیر والا کوئی تیل سریا چہرے پر لگائیں اس لئے کہ اینٹی الرجی دوائوں سے اس تکلیف میں اضافہ ہو سکتا ہے۔ بعض اوقات کے درد کے ساتھ جمی ہوئی ایک اور خون کا انجماد بھی ہوا کرتا ہے چنانچہ ٹھنڈی اشیاء اور سرد ہوا دونو ں ہی کیلئے مضر ہو سکتی ہیں۔
یونیورسٹی آف ٹیکساس میڈیکل برانچ کے معالج اس نتیجہ پر پہنچے ہیں کہ وہ بچے جنہوں نے اینٹی الرجی کے ساتھ کوئی اینٹی بائیو ٹکس بھی لی ہیں ان کے کان سے 73دنوں تک پیپ بہتی رہی اور جنہوں نے اینٹی بائیو ٹکس نہیں لیں ،انہیں 25دن تک تکلیف سہنی پڑی۔ اینٹی الرجی دوائوں میں زخم کو سکھانے کی عمدہ صلاحیت ہوتی ہے جس سے پیپ گاڑھی ہو کر خشک ہونے لگتی ہے اور یوں کان بہنا بند ہو جاتا ہے۔ عام طور پر ڈاکٹر I Buproffenتجویز کیا کرتے ہیں لیکن بہتر ہے کہ کان کا معائنہ کسی ماہر ڈاکٹر سے کروالیا جائے تاکہ انفیکشن کی نوعیت کے مطابق دوا تجویز ہو اور ممکنہ حد تک بہتر علاج ہو سکے۔

یہ بھی پڑھیں:  آنتیں دوسرا دماغ ہوتی ہیں، صحت مند رہنے کیلئے ان کا خیال رکھنا بھی ضروری ہے
کیٹاگری میں : صحت