shahbaz_sharif_apc

اداروں کی جانب سے غیرمشروط اور غیرمعمولی تعاون کے باوجود حکومت ناکام رہی: میاں شہباز شریف

EjazNews

مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج یہ کہنا غلط نہ ہوگا کہ ملک میں جمہوریت صرف نام کی ہے۔ 2018 میں سلیکٹڈ حکومت آئی، ان انتخابات میں آر ٹی ایس کیسے بند ہوا؟ اس کی تحقیقات کے لیے ان ہاؤس کمیٹی بھی بنائی گئی لیکن کچھ نہیں ہوا۔2014 میں منتخب حکومت کے خلاف پروپیگنڈا کیا گیا جبکہ کرونا سے قبل ہی پاکستان کی معیشت کو ضرب لگ چکی تھی۔عمران خان نے کہا تھا کہ مرجائیں گے آئی ایم ایف کے پاس نہیں جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں مختلف ادوار میں حادثے ہوئے اور منتخب حکومت کو ڈی ریل کیا گیا، یہ کہنا غلط نہ ہوہوگا کہ ملک میں جمہوریت صرف نام کی ہے۔ الیکشن کے بعد پارلیمنٹ میں وزیراعظم عمران خان نے انتخابات میں دھندلی کے بے نقاب کرنےکے لیے ہاؤس کی کمیٹی بنائی گئی لیکن آج تک اس کمیٹی نے ایک انچ بھی کام نہیں کیا، اس سےبڑا جھوٹ اور یو ٹرن اور کیا ہوسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  نیب نے جیو اور جنگ گروپ کے مالک کو گرفتار کرلیا

میاں شہباز شریف کا کہنا تھا کراچی سمیت ملک کےمختلف حصوں میں سیلاب نے تباہی مچا دی لیکن وزیراعظم عمران خان کو توفیق نہیں ہوئی کہ وہ متاثرہ علاقوں کا دورہ کریں اور لوگوں کی ہمت باندھیں۔ ‘موجودہ حکومت کی جانب سے قرضے لینےکے باوجود مہنگائی نے غریب کی کمر توڑ دی، ڈالر کی قدر میں اضافہ ہورہا ہے جبکہ کووڈ 19 آنے سے پہلے پاکستانی معیشت تباہ ہوگئی تھی۔ چینی اور آٹے بحران سے متعلق کہا کہ پہلے چینی برآمدات کرکے قیمتیں بڑھائی گئیں اور اب درآمدات کی جاری ہے۔ شوگر سکینڈل میں نیب اور ایف آئی اے کہیں نظر آرہی کیونکہ دونوں ادارے صرف اپوزیشن کے خلاف فعال ہیں۔انہوں نے کہا کہ وچ ہنڈنگ کے ساتھ اب میڈیا ہنڈنگ بھی ہوری ہے، میڈیا کے ساتھ جو سلوک ہے اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔پوری قوم کی نظریں اے پی سی پر ہیں کہ ہم کیا فیصلے کرتے ہیں۔ اداروں کی جانب سے غیرمشروط اور غیرمعمولی تعاون کے باوجود حکومت ناکام رہی، حکومت نے عوامی فلاح کے کون سے منصوبے بنائے ہیں؟۔ان کا کہنا تھا کہ اگر اب بھی حکومت احتساب نہیں کیا تو یقین کریں کہ خاموشی جرم بن جائے گی اور ہم جرم کا حصہ بن جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور وزیرداخلہ احسن اقبال کی ضمانت منظور