karachi_rain-rain

ایسا دکھتا ہے کراچی بارشوں میں

EjazNews

کراچی کے مختلف علاقوں میں رات سے کہیں ہلکی تو کہیں تیز بارش کا سلسلہ جاری ہے۔ گولیمار، ناظم آباد، بورڈ آفس اور کے ڈی اے چورنگی کے اطراف وقفے وقفے سے تیز بارش ہو رہی ہے جبکہ شارع فیصل، آئی آئی چند ریگر روڈ اور ٹاور کے اطراف بوندا باندی ہوئی۔ لیاقت آباد، کریم آباد، گلشن اقبال، گلستان جوہر اورنگی ٹاون اور گلشن حدید میں بھی وقفے وقفے سے ہلکی بارش کا سلسلہ جاری ہے۔

میڈیا پر چلنے والے کمشنر کراچی کے مشورے سے لوگ ضرور استفادہ کریں کہتے ہیں شدید بارش کی وجہ سے شہر ی غیر ضروری طور پر گھر سے باہر نہ نکلیں۔

بارشوں میں ایسا دکھتا ہے کراچی

کراچی میں بارشوں نے شہریوں کو شدید اذیت میں مبتلا کر دیا ہے۔ منگھوپیر اور نصرت بھٹو کالونی میں گھر اور دکانیں ڈوب گئیں۔ پانی گھروں میں داخل ہوا تو مکینوں نے نقل مکانی شروع کر دی۔

یہ بھی پڑھیں:  پی ٹی ایم کا سکیورٹی چیک پوسٹ پر حملہ :ترجمان پاک فوج

اگر شہر کو ڈرون کیمرے کی نظر سے آپ دیکھیں تو شہر کی سڑکیں ایک بار پھر تالاب بن گئی ہیں جبکہ شدید بارش سے حد نگاہ بھی کم ہو گئی۔
شہر کی کئی اہم شاہراہوں پر کئی کئی فٹ پانی موجود ہونے سے ٹریفک کی روانی شدید متاثر ہو رہی ہے۔

کراچی کی اہم سڑکوں کے ساتھ بڑی ہول سیل مارکیٹیں بھی بارش کے پانی سے نہ بچ سکیں۔ بولٹن مارکیٹ کپڑا مارکیٹ کے گوداموں اور دکانوں میں برساتی پانی نے تباہی مچا دی جس کی وجہ سے کاروباری حضرات کو لاکھوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا۔
رینجرز کی جانب سے ریسکیو اداروں کے ہمراہ بارش سے متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

ایک طرف بارش لوگوں کو ذہنی اذیت میں مبتلا کر رہی ہے تو دوسری جانب سوشل میڈیا پر دکھائی جانے والی جعلی ویڈیو اپنے تئیں الگ سے اذیت ہے۔ کیونکہ سوشل میڈیا پر چلنے والے اکثر و بیشتر ویڈیو کا تعلق پاکستان سے ہے ہی نہیں وہ یا تو انڈیا جب ڈوبا ہوتا ہے اس وقت ہے یا پھر بنگلہ دیش کی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی میں ایک اور افسوسناک واقعہ

ایک محتاط اندازے کے مطابق کراچی میں تاجروں کو بارش کی وجہ سے کم و بیش 10سے 12ارب روپے کا نقصان ہو چکا ہے۔
کراچی میں سیوریج کا ناقص نظام ہونے کی وجہ سے بارش کا پانی گوداموں اور دوکانوں میں بھر چکا ہے جس سے ایسی مصنوعات جو پانی سے خراب ہوتی ہیں وہ خراب ہوگئیں ہیں۔
کراچی میںپیش گوئی کے مطابق مون سون کی بارش کا یہ سلسلہ 27اگست کو ختم ہو جائے گا۔
صوبے بھر میں رین ایمرجنسی نافذ ہے ۔