kashmir

بھارت کا یوم آزادی، دنیا بھر میں مقیم کشمیری یوم سیاہ منا رہے ہیں

EjazNews

15اگست کو بھارت کا یوم آزادی ہوتا ہے ۔ اس دن کو کشمیری بطور یوم سیاہ منارہے ہیں ۔بھارت کے خلاف مظاہرے اور ریلیاں نکالی جارہی ہیں جبکہ مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال کا اعلان کیا گیا ہے۔مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال کے اعلان کے بعد بھارتی انتظامیہ نےغیر اعلانیہ کرفیو نافذ کر دیا۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق حریت رہنما سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک نے بھارت کے خلاف احتجاج کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں یوم جمہوریہ منانے کا حق نہیں رکھتا۔

قابض بھارتی حکام نے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے احتجاج کو روکنے کے لیے حفاظت کے نام پر انتہائی سخت سکیورٹی کے انتظامات کیے ہیں۔ سری نگر سمیت دیگر تمام شہروں و علاقوں میں فوج اور دیگر سکیورٹی فورسز کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔

مقبوضہ کشمیر کی بھارت سے نفرت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ 1947ء کے بعد اتنی بڑی فورس رکھ کر بھی بھارت کسی کشمیری کو بھارتی نہیں بنا سکا۔ وہا ں کے رہنے والے آج بھی اپنی آزادی کیلئے لڑ رہے ہیں مظاہرے کر رہے ہیں احتجاج کر رہے ہیں۔ ہر گھر میں کوئی نہ کوئی شہید ہے۔
مقبوضہ کشمیر میںگزشتہ سال 5اگست کے بعد سے جس طرح کے مظالم ڈھائے جارہے ہیں اس کو سن کر روح کانپ اٹھتی ہےلیکن یہ سب کچھ دنیا کی نظروں سے اوجھل رکھنے کیلئے وہاں کرفیو کا نفاذ بھی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہانگ کانگ میں پر امن مظاہروں کے بعد پرامن انتخابات