maryam

مریم نواز کی نیب آفس حاضری، کارکنان اور پولیس میں جھڑپیں

EjazNews

مریم نواز شریف کی عدالت پیشی کے موقع پر بہت عرصے بعد ایسا محسوس ہوا کہ کوئی لیڈر عدالت میں حاضر ہونے کیلئے آرہا ہے ۔ پیشی کے موقع پر پولیس اور مسلم لیگ ن کے کارکنوں کے درمیان تصادم ہوا جس کے دوران پتھراو¿ں اور آنسو گیس کے شیل پھینکے گئے۔ مریم نواز کی پیشی کی وجہ سے نیب آفس آنے والے تمام راستے بند کردئیے گئے تھے اور نیب آفس کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔
نیب لاہور نے مریم نواز کو پراپرٹی الاٹمنٹ کیس میں طلب کیا تھا تاہم وہ ایک گھنٹہ نیب آفس کے باہر انتظار کے بعد واپس چلی گئی۔
کارکنوں اور پولیس کے درمیاں تصادم کے بعد جب مریم نیب آفس پہنچی تو آفس کا گیٹ بند تھا اور مریم نواز کو اندر جانے نہیں دیا گیا۔ وہ تقریباً ایک گھنٹہ انتظار کے بعد واپس چلی گئی۔
اس سے قبل جب مریم نواز کارکنوں کے قافلے کے ساتھ جاتی امرا سے نیب کے دفتر کے قریب پہنچی تو مسلم لیگ کے کارکنوں اور پولیس کے درمیان تصادم شروع ہوا۔ پولیس اور لیگی کارکنان نے ایک دوسرے پر پتھراو¿ کیے۔
مریم نواز کا قافلہ نیب آفس سے تقریباً تین سو میٹر کے فاصلے پر تھا جب پتھراو شروع ہوا اور پتھراﺅ کے دوران ہی آنسو گیس کی شیلنگ شروع ہوئی۔
پولیس نے لیگی کارکنوں کو منتشر کرکے نیب آفس کے باہر کنٹرول سنبھال لیا۔ تصادم کے بعد مریم نوز واپس ہوئی تھی تاہم کچھ دیر کے بعد وہ دوبارہ نیب آفس کے باہر پہنچ گئی۔ تاہم اس وقت نیب آفس کا گیٹ بند تھا اور انہیں اندر جانے نہیں دیا گیا۔ کافی دیر انتظار کے بعد وہ نیب آفس سے جاتی امرا واپس چلی گئی۔
انہوں نے اپنے ایک ٹویٹ میں اس بات کا اظہار بھی کیا کہ پولیس نے ان کی گاڑی پر حملہ کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کرتار پور میں آنے والے یاتریوں کیلئے پاسپورٹ کی شرط ایک سال کے لیے ختم کر دی گئی ہے:معاون خصوصی اطلاعات