donald trump

طلبہ کی بے دخلی ، عدالتی حکومت کے بعد امریکی انتظامیہ نے فیصلہ واپس لے لیا

EjazNews

ٹرمپ حکومت نے گزشتہ چند روز قبل یہ حکم نامہ جاری کیا تھا کہ جو طالب علم امریکہ میں آن لائن تعلیم حاصل کر رہے ہیں ان کا امریکہ میں رہنے کا کوئی مقصد نہیں ہے۔ یا تو وہ آن لائن کورس کے ساتھ کوئی ایسا کورس کریں جس میں وہ فزیکل انوالو ہوں دوسری صورت میں ان کو ملک سے نکال دیا جائے گا۔
اس متنازع فیصلے کیخلاف امریکہ کی ریاستوں نے ڈسٹرکٹ کولمبیا ، ہارورڈ اور میسا چوسٹس انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے انتظامیہ کے متنازعہ فیصلے کیخلا ف درخواست دائر کی تھی۔
اس عدالتی کارروائی میں ٹرمپ کی حکومت کو شکست کا سامنا کرنا پڑا اور یہ فیصلہ واپس لینا پڑا۔
غیر ملکی میڈیا پرنشر ہونے والی خبروں کے مطابق عدالت نے ریمارکس میں کہا کہ امیگریشن حکام 6جولائی کے فیصلے کو واپس کرنے پر راضی ہو گئے ہیں۔
اس متنازع فیصلے نے بہت سے طالب علموں کے مستقبل کو داﺅ پر لگا دیا تھا کیونکہ جو سہولتیں امریکہ میں ہیں وہ دوسرے ممالک میں نہیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  میڈ ان چائنہ 2025ء، کیا چین برطانیہ اور امریکہ کو ٹیکنالوجی میں پیچھے چھوڑ دے گا