shafiqat mahmood

15ستمبر سے تعلیمی ادارے کھول دئیے جائیں گے اگر وبا قابو میں رہی: شفقت محمود

EjazNews

شفقت محمود اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ 15 جولائی سے کوئی تعلیمی ادارہ نہیں کھولا جائے گا لیکن 15 ستمبر سے تعلیمی ادارے کھول دئیے جائیں گے اس میں سکولز، کالجز اور سکول وغیرہ شامل ہیں۔ چونکہ تعلیمی ادارے کھولنے میں 2 ماہ کا وقت ہے اس لیے اگست کے پہلے ہفتے اور ستمبر کے پہلے ہفتے میں صحت کے اشاریوں اور صورتحال کو دیکھتے ہوئے فیصلے کا جائزہ لیں گے اور مزید مشاورت کی جائے گی۔ اگست اختتام یا ستمبر کے اوائل تک صحت کے معاملات ٹھیک نہ ہوئے تو پھر تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ موخر کردیا جائے گا۔ تعلیمی ادارے کھولنے کے لیے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز تشکیل دئیے جائیں گے جس کے لیے متعدد تجاویز موصول ہوئی ہیں جن پر غور کیا جائے گا۔ ہم نے ایس او پیز کے سلسلے میں صوبوں سے تجاویز مانگی ہیں۔
ان کا کہنا تھا پی ایچ ڈی کے ایسے طلبہ جن کی تعدا خاصی کم ہے اور انہیں ریسرچ ورک کے لیے لیبارٹریز تک رسائی درکار ہے ان کے لیے یونیورسٹیز کو انہیں ایس او پیز کے تحت بلانے کی اجازت دے دی گئی ہے اور انہیں کب بلانا ہے، کس طرح بلانا ہے اس کا فیصلہ جامعات خود کریں گی۔ جامعات میں وبا کے دوران آن لائن تعلیم کا سلسلہ شروع ہوا جس میں ان طلبہ کے لیے بہت مشکلات پیدا ہوئیں جو ایسے علاقوں میں رہائش پذیر تھے جہاں انٹرنیٹ عدم دستیاب یا اس کی سہولت بہتر نہیں تھی۔چنانچہ ان طالبعلموں کو درپیش تعلیمی نقصان کو مد نظر رکھتے ہوئے جامعات کو اجازت دی گئی ہے کہ وہ عید کے بعد ان علاقوں کے طلبہ کو 30 فیصد گنجائش کے ساتھ ہاسٹلز میں بلا سکتے ہیں۔ یہ طلبہ جنہیں ہاسٹلز میں بلایا جائے گا یا جنہیں لیبارٹریز میں آنے کی اجازت دی جائے اور وہ اساتذہ جنہیں انتظامیہ سکول کھولنے سے قبل بلائے گی ان سب کا طبی معائنہ مثلاً درجہ حرارت چیک کرنا وغیرہ لازم ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں:  کرونا وائرسے شہید ہونے والے طبی عملے کو ’’شہید پیکج‘‘ دیاجائے گا:ڈاکٹر ظفر مرزا