panama_city_food

پاناما سٹی :سی فوڈ کا دارالحکومت

EjazNews

پانا ما سٹی عوامی جمہوریہ پاناما کا دارالحکومت ہے۔ یہ شہر 43کلو میٹر تک پھیلے ہوئے ساحلوں کی سرزمین ہے۔ دودھیا چمکتی ریت، گرم پانیوں، 320دنوں تک چمکتے سورج، شاندار سی فوڈ اور روایتی مہمان نوازی جیسی خوبیوں سے مالا مال اس شہر میں جا کر تو دیکھئے لوٹنے کو جی نہ چاہے گا۔ آپ کو واٹر سپورٹس سے دلچسپی اور کچھ نہ کچھ ایڈونچر کرنے کی سوجھے، ڈولفنز کے ساتھ کھیلنا Scubaاور Snorkellingیعنی تیراکی کا شوق پورا کرنا ہو یہاں کے ساحل آپ ہی کو خوش آمدید کہتے ہیں۔
ایک پرکشش جگہ مگر کیسے؟:
حد نگاہ تک پھیلی دھوپ والی اس نگری کے سمندر میکسیکو خلیج کے کنارے قدرت کے کئی شاہکار اور بھی ہیں۔ تیراکی آپ دن بھر تو نہیں کر سکیں گے، پھر کہاں جائیں گے کیا دیکھیں گے؟ بے فکر ہو جائیے۔ یہاں کئی تھیم پارک موجود ہیں۔ میوزیمز ہیں۔ جتنی اچھی کوالٹی کا سی فوڈ ریاست فلورڈیا کے اس مقام پر ملتا ہے، شاید ہی دنیا کے کسی خطے میں ملتا ہو۔ امریکیوں نے سمندری دنیا کو بہت منظم انداز میں استعمال کیا ہے اور اپنے وسائل کو ترقی یافتہ اور باسہولت بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی ہے۔ ایسا لگتا ہے ساحلوں کا چپہ چپہ بہترین انتظامی صلاحیتوں کا شاہکار بنا دیا گیا ہے۔ پانامہ کے ساحلوں کی تفریحات بلاشبہ صرف بالغوں کے لئے مخصوص ہوتی ہیں اور ہماشا کو اس سے کم ہی دلچسپی ہوتی ہے مگر پھر بھی گھومنے پھرنے میں دنیا دیکھنے میں نہ کوئی حرج ہے نہ پابندی ۔
سب سے پہلے گلف ورلڈ میرین پارک چلئے:
یہی ہے پاناما کی اولین پرکشش جگہ، جہاں آپ کو متنوع قسم کے زمینی نظارے اور سمندری تفریحات یکجا ہوئی ملتی ہیں۔ یہاں ڈولفن آپ کے ساتھ تیر کر لطف اندوز ہوتی ہے۔ یہ آپ کو تنگ نہیں کرتی، اس سے خوفزدہ ہونے کی بھی ضرورت نہیں۔ جھرنے، فوارے، نایاب چرندپرند، زیر سمندر ہونے والے شوز اور ڈولفنز کی اسٹار پر فارمنسز کے لئے یہ جگہ بے حد اہمیت رکھتی ہیں۔ کون سا پرندہ ایسا ہے جو یہاں آپ کی نظروں سے اوجھل رہے گا۔ مزے کی بات یہ ہے کہ وائلڈ لائف اور سی لائف کا امتزاج دیکھنا ہو تو اس میرین پارک کی سیر کرنی چاہیے۔ دنیا بھر کی نایاب نسلوں کے چرند پرند دیکھ ر قدرت کی صناعی کو داد دیتے ہی بنے گی۔
شارک کی فیڈنگ دیکھنے کا انوکھا تجربہ بھی کرتے چلئے اور اگر آپ نے Scuba_divingکرنی ہو تو تربیت دینے والے مددگار افراد یہاں موجود ہیں۔ کمال کی بات یہ ہے کہ ڈولفن آپ سے مانوس ہونا چاہتی ہے اور اس ضمن میں وہ اپنی تمام تر حساسیت کو بروئے کار لاتی ہے۔ وہ آپ سے ہاتھ بھی ملائے گی اور آپ کو والہانہ انداز میں چھو کر پیار کرے گی۔ شاید ہی دیکھی ہو اتنی دوستانہ ڈولفن آپ نے۔
چڑیا گھر:
اس دنیا میں جسے عرف عام میں چڑیا گھر کہتے ہیں یہاں 3سو سے زائد جانور آپ کا استقبال کرتے ہیں۔ بنگال کا ٹائیگر ، طرح طرح کے بندر، ببر شیر، ہاتھی، بھالو اور پرندے جن کی اقسام کاتعین کرنابھی آسان کام نہیں ۔ مزے کی بات ہے کہ انتظامیہ نے کئی جانوروں کی نگہداشت اور جائے رہائش کے گرد گلاس ونڈوز لگا رکھی ہیں۔ جہاں سیر سپاٹے کے شوقین جانوروں کے بچوں کی ولادت سے لے کر فیڈنگ تک کے مراحل دیکھ سکتے ہیں ۔ یہاں لوگوں نے افریقن لائن بھی دیکھا اور سوما ٹران ٹائیگر کی حرکات بھی اور تو اور بن مانس کو اپنے نومولود کی دیکھ بھال اور فیڈنگ کراتے ہوئے بھی دیکھا۔ سری لنکا میں تو پانچ فٹ کی شیشے کی بوتل سے ہاتھی دودھ پیتے ہیں۔ یہاں بن مانس عام بچوں کی دودھ کی بوتل سے دودھ پی رہا تھا۔بعض بچے جانوروں سے ڈرتے نہیں بلکہ مانسو ہو جاتے ہیں۔ جانور بھی ان بچوں کے ساتھ کھیلنے لگتے ہیں۔ کہیں عرصے بعد شاذو نادر ہی ایسا واقعہ ہوتا ہےکہ کوئی بچہ کسی جانور سے ڈر گیا ہو یا رو پڑا ہو۔ انتظامیہ گود والے بچوں کو چڑیا گھر کے ٹکٹ فروخت ہی نہیں کرتی۔ عمر کی حد اور پابندی کی وجہ سے بھی بہت پرسکون انداز میں چڑیا گھر کے معمولات چلتے رہتے ہیں۔ اگر آپ بھی بچوں کو اس چڑیا گھر لے جانا چاہیں تو پہلے بچوں کے دل مضبوط کر لیں۔ ویسے ایک اور سرگرمی بھی نہایت دلچسپ ہے۔ اور و وہ یہ کہ طوطے اپنی جنت میں آپ کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ کھیل کود مں گم یہ طوطے باسکٹ بال بھی کھیلتے ہیں اور اگر آپ انہیں بائیک کی سواری کرانا چاہیں تو وہ بھی خوشی سے کر لیتے ہیں۔ یہاں جانور اپنی تصاویر بنوا کر بہت خوشی کا اظہار کرتے ہیں لیکن یہ کیسے ممکن ہے انہیں تصویر کشی کی الف بے بھی پتا ہو۔ لیکن آپ کے لئے یہ انتہائی معمولی سوونیئر ہوگا مگر آپ بھی ان دوست جانوروں کے ہمراہ دلچسپ تصاویر بنا لیں۔
Shipwreckایک قابل ذکر میرین واٹر پارک:
یہ پانی کی تھیم پر انتہائی جاذب نظر واٹر پارک ہے ، جہاں تربیت یافتہ aquaticsاسٹاف آپ کو مختلف جھولوں، ریسٹورنٹس اور دیگر سرگرمیوں میں محو کر لیتے ہیں۔ دلچسپ اور ہنگامہ خیز ridesمیں tree-Top Dropاور Pirate Racing Slidesہیں۔ اس قدر تیز رفتار واٹر سلائیڈ کا اب تک صرف تصور کیا جاتا تھا۔ یہ ridesبڑوں کے لئے مخصوص ہیں۔ چھوٹے بچوں کے لیے علیحدہ zoom flumeموجود ہے۔ اسی طرح Tadpole Holeمیں آپ کو بحری جہاز ، سب میرینز اور مینڈک مینڈکیاں نظر آتے ہیں۔ گھبرانے کی بات نہیں یہاں لائف گارڈز موجود ہیں۔ اگر آپ چاہیں تو 17ویں صدی کا قدیم جہاز سواری کے لئے موجود ہے۔ اگر آپ بہت سست روی سے ساحلوں میں گھومناپھرنا چاہتے ہیں کیونکہ یہ قدیم بحری جہاز ہے۔سرعت رفتاری سے سمندر کا سینہ چیرتے ہوئے آگے بڑھنا اس کے بس میں نہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ہمارے پہاڑ
پاناما سٹی سے 5کلو میٹر دور مشرق میں 12سو ایکڑ پر پھیلا ہوا جنگل

Man in the Sea:
دراصل یہ ایک عجائب گھر کانام۔ یہ تاریخی نوعیت کاگڑھ ہے جہاں ہمیں غوطہ خوروں کی ابتدائی تربیت، نت نئی سرگرمیوں اور گہرے سمندروں میں موجود آبی و نباتاتی خزانوں کا علم ہوتا ہے۔ یہاں Sealab-1بھی موجود ہے جو امریکہ کی نیوی کے زیر تحت کام کرتی ہے۔ سمندر کے پانیوں میں زندگی کے آثار بھی موجود ہیں اور یہاں آباد دنیا کی سیاحت نہایت اچھوتا تجربہ ہے۔
St Andrew’s Stare Recreatin Area:
پاناما سٹی سے 5کلو میٹر دور مشرق میں 12سو ایکڑ پر پھیلا ہوا جنگل، دلدل، ساحل، صنوبر اور صندل کے پیڑوں پر مشتمل یہ علاقے کا بہترین پارک ہے۔ واٹر فرنٹ کیمپنگ تمام دن بھی کی جاسکتی ہے اور صرف دو گھنٹے بھی صرف کئے جاسکتے ہیں۔ پارک میں تمام تر سہولیات مثلاً آرام گاہیں، غسل خانے، پکنگ کے لئے مخصوص جگہیں، کھیلوں کے میدان موجود ہیں اس پارک میں بھی گہرے پانیوں میں اترنے اور قدیم طرز کے ڈونگے نما کشتیوں میں ساحل کی سیر کرنا خوشگوار ترین تجربہ ہو سکتا ہے۔ یہاں سہ پہر کے بعد چہل پہل بڑھتی ہے۔ سیاحوں کے لئے بھی سیر کا یہی مناسب وقت ہے، اس کے بعد گہری ہوتی شام میں قہقہوں کی جھلملاہٹ دیکھی جاسکتی ہے۔
واٹر سپورٹس:
مچھلی کا شکار ، کشتیوں کی سیر، تیراکی Jet-Skiingاور Surfingیہ ہیں چند واٹر سپورٹس جو پاناما کا اصل حسن ہیں۔ خلیج میکسیکو کا یہ معروف Wreeckچار سو ساٹھ فٹ تک محیط ہے۔ جس میں Diversکے لئے بے پناہ کشش ہے۔ یہ جنوبیامریکہ میں غوطہ خور ی کا بہترین مقام ہے۔
بہار کے موسم میں مچھلی کا شکار عروج پر ہوتاہے۔ مارچ میں میکریل ، بلو فش، ٹراﺅٹ، ریڈ فش اور لیڈی فش ملتی ہیں جبکہ ٹیونا، بارا کوڈ ا اور مارلن سارا سال دستیاب ہوتی ہیں۔ سیاح غوطہ خوری اور مچھلی کے شکار کے لئے کرائے پر کشتیاں اور کانٹے لیتے ہیں اور ٹور آپریٹرز بھی اپنے پیکج میں ضروری سامان مہیا کرتے ہیں۔
پاناما سیپیوں کا دیس بھی:
غوطہ خور ان سیپیوں کی تلاش میں سرگرداں نظر آتے ہیں جن کے دہانوں میں موتیوں کے خزانے ہوتے ہیں۔ سمندر ایسی خوبصورت سپیاں ساحل پر اچھال کر پیچھے سمٹ جاتا ہے اور ایسی نادر ونایاب نقوش والی سیپیاں زیورات بنانے کے لئے چن لی جاتی ہیں۔
Camp Helen State Park:
اگر آپ کا ارادہ ہے کہ رات کو بھی یہاں قیام کر لیا جائے تو یہ ممکن نہیں پکنگ پر آنے والوں کو سر شام لوٹ ہی جانا چاہئے۔دن بھر یہ سمندری تفریحات کی جاسکتی ہیں۔ مثلاً مچھلی کا شکار، بوٹنگ، بائیکنگ وغیرہ وغیرہ۔
یہاں سمندری مچھلی پکانے کے خاطر خواہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ وسطی امریکہ سے ہجرت کر کے آنے والے پرندے لذت طعام دہن کی اشیاءپر حملہ آور ہو سکتے ہیں لہذا بہت دھیان سے کھانے پینے کی اشیاءکا استعمال کیا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  گناہوں کا شہر
اگر آپ چاہیں تو 17ویں صدی کا قدیم جہاز سواری کے لئے موجود ہے۔

شاپنگ:
تیراکوں کے لئے وافر مقدار میں اشیاءاور لباس موجود ہیں۔ بہت نادر قسم کی جیولری لی جاسکتی ہے۔ اوپن ائیر مالز میں بوتیک اور آر ٹ گیلریاں قائم ہیں۔ Pier Parkایسا ہی ایک خریداری اور تفریحات کا مرکز ہے۔ جہاں برانڈڈ اشیاءکے سٹورز موجود ہیں۔ پاناما بیج ریزوٹ میں خریداری کا عمدہ مرکز ہے۔ خوشبو یات سے لے کر سن گلاسز اور ملبوسات سے کھانے پینے کی اشیاءتک ہر چیز دستیاب ہو جاتی ہے۔
ذرائع آمدو رفت:
شٹل بسوں کے علاوہ ٹیسکیوں ، Limoسروسز اور رینٹ اے کار کی سہولت موجود ہے۔
پاناما کے ذائقے:
ساحل کنارے متعدد ایسے ریسوٹرنٹس ہیں جن میں سینڈوچ بارز انوکھے بھی ہیں۔ بہترین اور ذائقہ دار کھانے کے لئے alfrescoڈائننگ جایا جاسکتا ہے۔
Oyster barsیہاں کستورا مچھلی کو مقامی مصالحوں کے ساتھ تیار کیا جاتا ہے۔ یہ مقامی لوگوں کی مرغوب غذا ہے۔
Apalachiola Oystersشیل فش کے ساتھ ملا کر تیار کی جانے والی ڈش ہے جو یہاں سیاح شوق سے کھاتے ہیں۔
پاناما میں میکسین، چائینز ، جنوبی ہند ، اطالوی اور جاپانی ریسٹورنٹس موجود ہیں۔
ایسے Treasure Shipsمل سکتے ہیں جن پر ریسٹورنٹس قائم ہیں۔ یہ آپ کو گہرے پانیوں کی روشن چمکتی صبحوں میں لنچ اور قدرے خنک راتوں میں بوفے ڈنرز کی پیشکش کرتے ہیں۔
دودھ میں بنی ہوئی مچھلی اور چپس اسنیک کے طور پر کھائے جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  گلگت بلتستان میں بہت کچھ ہے دیکھنے کیلئے

درخشاں فاروقی