maryam

انصاف کبھی ادھورا نہیں ہوتا:مریم نواز

EjazNews

مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کی پریس کانفرنس میں جج محمد ارشد ملک کی ناصر بٹ نامی شخص کے ساتھ ایک ویڈیو جاری کی گئی تھی۔ جس میں جج اور ناصر بٹ کے درمیان ہونے والی گفتگو دکھائی گئی تھی۔جبکہ اس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد جج ارشد ملک نے رجسٹرار احتساب عدالت کے دستخط کے ساتھ پریس ریلیز کے ذریعے اپنے خلاف سامنے آنے والی مبینہ ویڈیو پر رد عمل دیا ہے ۔جس میں ان کا کہنا ہے کہ مریم نواز کی جانب سے دکھائی جانی والی ویڈیو سے میری اور میرے خاندان اور میرے ادارے کی ساکھ کو متاثر کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ انہیں کسی طرح کا لالچ نہیں تھا، جبکہ انہوں نے تمام عدالتی فیصلے خدا کو حاظر ناظر جان کر اور قانون و شواہد کی بنیاد پر کیے ہیں۔یہ ویڈیو جعلی اور مفروضوں پر مبنی ہے۔

جج ارشد ملک کو مزید کام کرنے سے روک دیا گیا:وفاقی وزیر فروغ نسیم

ان کا کہنا تھا قومی احتساب بیورو کی جانب سے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کے اہل خانہ کے خلاف دائر ریفرنس کی کارروائی کے دوران انہیں بارہا ان کے نمائندوں کی جانب سے رشوت کی بھی پیشکش کی گئی۔تعاون نہ کرنے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دی گئیں۔ان کا کہنا ہے اگر میں دباؤ میں آکر فیصلہ کرتا تو ایک کیس میں بری اور دوسرے میں سزا نہ دیتا، تاہم انصاف کا تقاضا پورا کرتے ہوئے العزیزیہ کیس میں سزا سنائی اور فلیگ شپ کیس میں بری کیا۔
اس کے بعد سابق وفاقی وزیر قانون نے ایکشن لیا اور فوری طور پر جج ارشد ملک کو مزید کام کرنے سے روک دیا ہے اور انہیں محکمہ قانون کو رپورٹ کرنے کا کہا گیا ہے۔اپنے فیصلے کے وقت ان کا کہنا تھا کہ پریس ریلیز اور بیان حلفی دیکھنے کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے کہ ارشد ملک کہتے ہیں کہ انہیں کسی سیاہ سفید کو دیکھے بغیر فیصلہ کیا، مجھے رشوت دینے اور دھمکیاں دینے کی کوشش کی گئی اور اگر اس بیان کو دیکھیں تو پھر تو جج ارشد ملک نے میرٹ پر فیصلہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہمارا ملک ایک ہی طرز پر چلے تو اس کے زیادہ فوائد ہوں گے:وزیراعلیٰ سندھ

ویڈیو میں مختلف مواقع اور موضوعات پر کی جانے والی گفتگو توڑ مروڑ کر…

لاہور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس قاسم خان کی صدارت میں انتظامی کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں چیف جسٹس کے علاوہ جسٹس امیر بھٹی، جسٹس ملک شہزاد احمد خان، جسٹس شجاعت علی خان، جسٹس عائشہ اے ملک، جسٹس شاہد وحید اور جسٹس علی باقر نجفی شامل تھے۔مذکورہ اجلاس میں احتساب عدالت کے سابق جج العزیزیہ ریفرنس میں سزا سنانے والے ارشد ملک کو عہدے سے برطرف کرنے کی منظوری دی گئی۔
جج ارشد ملک کوویڈیو سکینڈل کی تحقیقات مکمل ہونے پر ہٹایا گیا ۔

اب اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا

اس موقع پر مریم نواز نے ٹویٹ کیا ہے کہ یہ ملک کے منتخب وزیر اعظم ہیں۔جو اپنا آپ اور اپنا خاندان بکھرتا دیکھتے ہیں ، بڑے سے بڑا نقصان اٹھا لیتے ہیں مگر آئین اور قانون کو سربلند رکھتے ہیں۔ نواز شریف کا صبرجیت گیا۔نواز شریف کی استقام جبر پر بھاری رہی۔ نواز شریف کے چاہنے والے اللّہ رب العزت کے حضورسجدہ شکر ادا کریں۔آئین و قانون کے احترام کا درس دینا بہت آسان ہے۔یہ جانتے ہوئے کہ آپ بے قصور ہوں، جانتے ہوئے کہ ظلم اور ناانصافی ہو رہی ہے، اپنی شریک حیات کو بستر مرگ پر چھوڑ کر قانون کے سامنے سر جھکا دینے کے لئے لیے نواز شریف کا جگر اورحوصلہ چاہیے۔اللّہ بے گناہ اور بہادر لوگوں کو تنہا نہیں چھوڑتا۔
انصاف کبھی ادھورا نہیں ہوتا۔ مکمل انصاف کا تقاضہ ہے کہ جس طرح جج کو برطرف کیا گیا ہے اسی طرح اس کے بدعنوان فیصلوں کو بھی کالعدم قرار دیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:  سنسنی خیز مقابلے کے بعد کراچی کنگز کر گئے کوالیفائی پلے آف میں