cosmetic surgery

کاسمیٹک سرجری

EjazNews

خوبصورت نظر آنا ہر عورت کا بنیادی حق ے، یہی وجہ ہے کہ جسمانی اعضاء کے نقائص اور خاص کر چہرے کی بد صورتی کسی بھی عور ت کا سب سے بڑا مسئلہ بن جاتی ہے۔ یہ کمزوری یا بدصورتی نہ صرف اس کی ترقی اورشادی بیاہ کی راہ میں آڑے آتی ہے بلکہ مختلف ذہنی اور جسمانی بیماریوں کا باعث بھی بنتی ہے۔ کسی بھی عورت کے لئے چہرے کی خوبصورتی سب سے بڑی نعمت ہے۔ کاسمیٹک سرجری ایسی مایوس خواتین کے لئے نعمت ثابت ہوئی ہے جو کسی بھی پیدائشی بد صورتی کا شکار ہوں۔ پلاسٹک سرجری کی دنیا میں نئے انقلابات رونما ہو رہے ہیں اس طریقہ علاج میں جلد کو کھینچ کر جھریاں بننے کے عمل کو روکا جاتا ہے۔ ا س طریقہ ے پیشانی کی جلد کو پانچ سے دس سال اور چہرے کی جلد کو دو سے دس سال تک کھینچ کر پیچھا رکھا جاسکتا ہے اس طریقہ کے نتائج خوشگوار تو ہوتے ہیں لیکن ساتھ ہی ان آپریشنوں سے کبھی کبھی خون بہنے ، انفیکشن ، بے ہوشی کے عمل کے دوران ری ایکشن یا کبھی کبھی اعصاب تباہ ہونے کی وجہ سے معذوری کے خطرات کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔
کاسمیٹک سرجری کیا ہے ؟:
انسانی جسم میں خلیوں کی ٹوٹ پھوٹ اور مرمت کا کام اوران کی ایڈجسٹمنٹ ایک لچکیلی صلاحیت ہے۔ اس صلاحیت کو استعمال میں لاتےہوئے کسی بھی سرجری کو کامیاب بنایا جاسکتا ہے اور اعضا ء کی خرابی دور کرنے میں اس صلاحیت کا خاص استعمال ہوتا ہے۔یہ ہی پلاسٹک سرجری ہے۔ جسمانی اعضاء اورچہرے کی وضع قطع کو خوبصورت بنانے کےلئے کی جانے والی سرجری ’’بیوٹی سرجری‘‘ یا کاسمیٹک سرجری کہلاتی ہے۔ پلاسٹک سرجری کی ابتداء عمل جراحی کے ساتھ ہی ہوئی مگر جدید سائنسی طریقے سے اس کا استعمال انیسویں صدی میں ہی ہو سکا۔ کاسمیٹک سرجری کی ابتداء امریکہ سےہوئی ہمارے ہاں بھی اب پلاسٹک سرجری نیا نام نہیں رہا۔

یہ بھی پڑھیں:  بالوں کی منفرد سی یہ آرائش باوقار شخصیت کا خاصہ ہے

چہرے کی جھریوں کے خاتمہ کیلئے لیزر سرجری

روایتی اور مذہبی تو ہمات کے سبب عام حلقوں میں ابھی تک اعضاء کی خرابی یا اعضاء کا نہ ہونا خدا کی رضا مان کر آسانی سے تسلیم کرلیا جاتا ہے، اس کے علاوہ پلاسٹک سرجری کا مہنگا علاج بھی اسے عام آدمی کی پہنچ سے دور رکھے ہوئے ہے، البتہ پڑھے لکھے، جدید اور اعلیٰ طبقے میں خوبصورتی کی بڑھتی ہوئی قدروں کے ساتھ ہی کاسمیٹک سرجری کا استعمال بھی بڑھ رہا ہے۔
عموماً لوگ حادثے سے متاثرہ شخص کو سب سے پہلے ہسپتال کے عام سرجری ڈپارٹمنٹ میں لے جاتے ہیں اور اس کے بعد چہرے کے کٹائو، داغ دھبے یا جلنے کے نشان کو ٹھیک کروانے کی خاطر کاسمیٹک سرجن کے پاس جایا جاتا ہے مگر مختلف پلاسٹک سرجن کی آراء کے مطابق یہ عمل درست نہیں ہے، اگر کیس پلاسٹک سرجری کا ہے تو مریض کو پہلے پلاسٹک سرجری کے شعبے میں یا کسی پرائیویٹ کاسمیٹک سرجن کے پاس لے جانا چاہئے کیونکہ تازہ زخموں کے ساتھ سرجن کاکام آسان ہو جاتا ہے۔
چہرے کی ساخت کو درست کرنا اور سنوارنا کاسمیٹک سرجری کا حصہ ہے ۔ مگر یاد رہے کہ چہرے کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا البتہ چہرے کے نقوش اور خرابی کو دور کر کے چہرے کے نقوش کو نمایاں اور ہموار بنانے کی خاطر کاسمیٹک سرجری کی مختلف تکنیک کا سہارا لیا جاسکتا ہے۔
جلد کا لٹکنا یا جھریاں پڑنے کا عمل عموماً بڑھاپے کی علامتوں میں سے ایک ہے لیکن سستے اور غیر معیاری کاسمیٹک کا استعمال یا اناڑی پن میں چہرے پر غلط انداز میں کئے جانے والے مساج کا نتیجہ بھی وقت سے پہلے چہرے پر جھریو ں اور جھائیوں کی صورت میں ظاہر ہونے لگتا ہے۔ یہ نازک اور حساس مسئلہ ہے مگر فیس لفٹنگ کے ذریعے اس کا حل ممکن ہے۔ اس میں پیشانی کے اوپربالوں کے اندر ایک کان سے دوسرےکان تک جلد کو اکھاڑ لیا جاتا ہے اور کھینچ کر اور کس کر جما دیا جاتا ہے۔ ٹانکے بالوں کے اندر چھپ جاتے ہیں اور چہر ہ درست ہونےپر اپنی عمر سے کئی برس پیچھے کی جانب لوٹ جاتا ہے ۔ پاکستان میں اب یہ سرجری عام ہوتی جارہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  موسم کی مناسبت سے جلد کی حفاظت کی زیادہ ضرورت ہے

چہرے کی جھریوں سے نجات ممکن ہے

کاسمیٹک سرجری نےیوں تو اب پاکستان میں بھی خوب ترقی کر لی ہے مگر اس کی سہولت فی الحال صرف بڑے بڑے ہسپتالوں اور پرائیویٹ کلینکس میں ہی ہے۔معمولی مسائل کے لئے کاسمیٹک سرجری بے حد آسان اور موزوں حل ہے۔ پھربھی چند فیصدمعاملوں میں آپریشن کے بعد جلد میں کچھ نقائص ظاہر ہو نے لگتے ہیں اس لئے فیصلے سے قبل ڈاکٹر کو دکھانا اور اس کی رائے یا مشورہ لینا ضروری ہے۔آپریشن کروانے کے لئے مریض میں حوصلہ ہونا ضروری ہے۔ خود خواہش نہ ہونے کی صورت میں کسی بھی خاتون کو سرجری کے لئے مجبور نہیں کیا جاناچاہئے کیونکہ زبردستی اور قوت ارادی کا فقدان ہونے سے سرجری کی کامیابی میں رکاوٹ پیدا ہو سکتی ہے۔
عام حالات میں کوشش کرنی چاہئے کہ میک اپ، وضع قطع اور شخصیت کی خوبیوں سے معمولی نقائص کو چھپا لیا جائے، خود اعتمادی اور کردار کی خوبیوں سے معمولی چہرے والی شخصیت بھی زندگی میں بہت کامیاب رہتی ہے۔
نسرین شاہین

یہ بھی پڑھیں:  زلفوں کی پرمنگ کے نئے سٹائل