women_food

روپ سروپ اور آپ کی خوراک (۲)

EjazNews

کھانا زندگی کیلئے بہت ضروری ہے لیکن خواتین اپنی خوبصورتی اور صحت کو کیسے برقرار رکھ سکتی ہیں یہ ہم اپنی تحریر میں آپ کو بتا رہے ہیں۔
14۔ پانی کا استعمال سے زیادہ کریں۔
دن بھر میں کم از کم بارہ گلاس پانی پینا بہت ضروری ہے۔ یہ پانی آپ کے اندر جسم کی مکمل طور پر صفائی کرتا رہتا ہے۔ رنگت نکھارتا ہے۔ بھوک بڑھاتا ہے پیشاب کھل کر لاتا ہے وغیرہ وغیرہ۔ پانی کے فوائد سے آپ اچھی طرح واقف ہیں تو کیوں نہ اس کا فائدہ بھی ٹھالیں۔
15۔ اسنیکس کا استعمال:
کوئی ضروری نہیں ہے کہ آپ اسنیکس یا کھانے پینے کی چھوٹی چھوٹی چیزوں سے اجتناب برتیں۔ آپ کھانے کے علاوہ بھی اسنیکس لے سکتی ہیں۔ لیکن چند شرائط کے ساتھ اور ان میں سب سے اہم شرط یہ ہے کہ آپ یہ دیکھیں کہ آپ جس قسم کے اسنیکس لے رہی ہیں ان میں ہائی کیلوریز تو نہیں ہے۔ بس یہ احتیاط کر لیں باقی سب ٹھیک ہے۔

روپ سروپ اور آپ کی خوراک

16۔ اسنیکس میں پاپ کارن سب سے بہتر ہوتا ہے اور بہت آسانی سے ہر جگہ مل جاتا ہے۔ اگر آپ موٹی ہیں تو اسے لہسن سوس یا مرچ سوس کے ساتھ استعمال کر سکتی ہیں۔
اور اگر دبلی ہیں تو پاپ کارن کے ساتھ تھوڑا پنیر لے لیا کریں۔ ان دونوں کا کمبی نیشن بہت اچھا ہو سکتا ہے۔
17۔ دہی بھی بہت مفید چیز ہے۔
اگر سبزیوں کو دہی کے ساتھ کھایا جائے تو بہت اچھا ہوتا ہے۔ آپ اپنی مرضی سے مختلف سبزیوں کو دہی کے ساتھ ملا کر کھا سکتی ہیں۔
18۔ ریسٹورنٹ میں برتائو:
آپ نے اکثر ایسی فیملی دیکھی ہوگی جو کسی ریسٹورنٹ میں داخل ہونے اور مینو ہاتھ میں آنے کے بعدیہ فیصلہ نہیں کر پاتے کہ انہیں کیا منگوانا ہے اور کیا نہیں۔ وہ آپس میں بحث کرتے رہ جاتے ہیں۔
لہٰذا سب سے بہتر طریقہ یہ ہے کہ جب آپ ریسٹورنٹ میں کھانا کھانے جارہی ہیں تویہ فیصلہ کر کے جائیں کہ آپ کو کیا کھانا ہے۔
19۔ اپنے کھانے میں سبزی ضرورشامل کریں۔
کوئی ایک سبزی۔ چاہے آپ گھر میں ہوں یا ریسٹورنٹ میں۔پروٹین اور Fats کے صحیح توازن اور تعین کے لئے آپ کو کسی ایک سبزی کا انتخاب ضرور کرنا چاہئے۔ کچھ نہیں تو سلاد میں ایسا ہو جو سبزی کی کمی پوری کر دے۔ آپ کہیں بھی کھارہی ہوں۔ آپ کو اس بات کا خیال رکھنا ہے کہ آپ کیا کھا رہی ہیں۔
20۔ مکھن اور پنیر کا زیادہ استعمال کلوریز میں اضافے کا سبب بنتا ہے۔ آپ ان کی بجائے مایونیز والی سلاد کا انتخاب کر سکتی ہیں۔
21۔ اپنے آپ کو یہ احساس دلائیںکہ کھانا کھانا زندگی کی تفریحات میں سے ایک تفریح ہے۔ کھانے کو کام سمجھنے والے کبھی کھانے کو انجوائے نہیں کرتے ۔ اس سے یہ بات بھی ظاہر ہوتی ہے کہ ہر وقت اور ہرحال میں خوش رہنے کی کوشش کریں۔ چاہے آپ کھانا ہی کیوں نہ کھا رہے ہوں۔
22۔ آپ یہ تو جانتی ہی ہوں گی کہ کسی بھی چیز کی زیادتی بری ہوا کرتی ہے۔
اس لئے کھانے میں بھی کسی ایک چیز کا استعمال روزانہ نہ کیا کریں۔ اس طرح آپ اس ڈش سے بے زار ہو جائیں گی اور اس ڈش کا استعمال آپ کوفائدہ پہنچانے کی بجائے آپ کا خون جلاتا رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  میاں بیوی کی پریشانیوں کے حل کرنے کیلئے اہم معلومات

کولیسٹرول کو قابو رکھنے کیلئے درست غذاﺅں کا انتخاب

لہٰذا بہتر یہی ہے کہ ہفتے بھر کا ایک فوڈ چارٹ بنا لیں کہ آپ کو فلاں دن فلاں چیز بنانی ہے اور فلا دن فلاں چیز۔ اس سے یکسانیت بھی ختم ہو جائے گی اور آپ صحیح معنوں میں اپنے کھانے سے لطف اندوز بھی ہو سکیں گی۔
23۔ ایک وہ زمانہ تھا کہ خواتین مجموعی طور پر اپنی صحت کی طرف سے غافل ہی رہتی تھی ۔ اگر موٹی ہیں تو بس موٹی ہوتی چلی جارہی ہیں ۔ انہیں پرواہ ہی نہیں ہوتی تھی کہ ان کا یہ موٹاپا ان کے لئے کتنا نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔
لیکن اب جدید دور میں صحت کی طرف سے آگاہی بڑھ گئی ہے۔ اخبارات، رسائل، ٹی وی ، سوشل میڈیا ، ویب سائٹس وغیرہ شور کرتے رہتے ہیں کہ اپنی صحت پر دھیان دو۔ موٹاپا اچھی چیز نہیں ہے۔ وغیرہ وغیرہ۔
اور دوسری طرف دبلا ، اسمارٹ ہونے کا فیشن بھی ہو گیا ہے۔ ا س خاتون کو ستائش نگاہوں سے یوں دیکھا جاتا ہے جو دبلی پتلی اور اسمارٹ ہو اور اس کا نتیجہ یہ ہوا کہ خواتین نے دبلا ہونے کی کوشش شروع کر دی ہے۔
وزن کم کرنے کا ایک مقابلہ شروع ہو گیا ہے۔ سلمنگ سینٹرز وجود میں آگئے ہیں۔ جن کے اشتہارات شائع ہوتے رہتے ہیں۔ خواتین وہاں داخلہ لے لیتی ہیں اور اپنے آپ کو اسمارٹ سمجھنا شروع کر دیتی ہیں۔
صرف اتنا ہی نہیں بلکہ وزن کم کرنے کے شوق میں وہ ایک دم کھانا کھانا چھوڑ کر اپنا وزن کم کر لیتی ہیں۔ اور یہ ان کے لئے بہت زیادہ نقصان دہ ثابت ہوتا ہے ۔ میں نے ایسی بہت سی خواتین دیکھی ہیں جنہوں نے اس فارمولے پر عمل کیا اور کمزوری کا شکار ہوگئیں۔ کسی کابلڈ پریشر خطرناک حد تک کم ہو گیا۔ کسی کو کچھ اور ہوگیا۔ کسی کی آنکھوں کے آگے اندھیرے رقص کرنے لگے وغیرہ وغیرہ۔
ماہرین کی تحقیق کے مطابق ایک ساتھ بہت سا وزن کم کرنا نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔اگر کسی کا وزن دو سو پائونڈ ہے تو ہفتے میں صرف ایک پائونڈ وزن کم کرنا مناسب ہوگا۔ ناکہ ایک ساتھ پچیس پائونڈ کم کر لینا۔
24۔ خواتین کے سلسلے میں ایک بات اور بہت اہم ہے اور وہ یہ ہے کہ عام طور پر اپنی صحت اور اپنی جسمانی بناوٹ (فگر) کی طرف سے لاپرواہ رہتی ہیں ۔ وہ زیادہ دھیان نہیں دیتیں۔ اور دھیان کس وقت دیتی ہیں جب کوئی ایمر جنسی نافذ ہو جائے۔
مثال کے طورپر شادی ہونے والی ہو تو لڑکیاں فوراً اپنے آپ کو اسمارٹ کرنا شروع کر دیں گی۔ یہ رجحان غلط ہے۔ اس سے سوائے تھکن اور بے زاری کے اور کچھ بھی حاصل نہیں ہوتا۔ صحیح طریقہ یہ ہے کہ آپ اپنے اوپر شروع ہی سے توجہ دی جائے۔ یعنی شعور آنے سے۔
خاص طور پر شادی شدہ خواتین کو اس بات کاضرور خیال رکھنا چاہئے۔
شادی کے بعد عام طور پر خواتنی کا جسم پھیلنا شروع ہو جاتا ہے وہ موٹی ہونے لگتی ہیں۔ لہٰذا انہیں چاہئے کہ شادی کے فوراً بعد ہی سے اپنی صحت اور اپنی فگر پر مناسب توجہ دینی شروع کر دیں۔
25۔ اور یہ ہے آخر ٹپ۔
ہم میں سے ہر خاتون کے ذہن میں اپنے آ پ کو مکمل دیکھنے کی خواہش ہوتی ہے۔ وہ ایک آئیڈیل فگر اپنے ذہن میں تخلیق کر لیتی ہے۔ اور اس آئیڈیل فگر کو حاصل کرنے کی کوشش شروع ہو جاتی ہے۔
مثال کے طور پر وہ اگر بہت دبلی ہے تو موٹی یا گداز ہونے کی جدو جہد کرتی ہے اور اگر موٹی ہے تو دبلی ہونے کی فکر اسے پریشان کئے رکھتی ہے۔ آپ بھی اگر دن رات کی محنت کے بعد موٹی سے دبلی یا دبلی سے موٹی ہو گئی ہیں تو یہ ہرگز خیال نہ کریں کہ اب آپ کا جسم اسی طرح رہے گا۔ جی نہیں ذرا سی لاپرواہی آپ کو پہلی حالت پر واپس پہنچا سکتی ہے۔
اس کی مثال ایسی ہے جیسے آپ گھر کی صفائی کرتی ہیں ایک یا دو دن کی مسلسل محنت کے بعد آپ کا گھر پوری طرح چمک جاتا ہے لیکن آپ اگر یہ سب کر کے بھول جائیں۔ گھر کو اسی حالت پر چھوڑ دیں تو پھر کیا ہوگا۔ ظاہر ہے گھر کی وہی حالت ہو جائے گیجو پہلے تھی۔ اس لئے آئیڈیل فگر حاصل کرلینے کے بعد غفلت نہ برتیں۔ بلکہ اسی معیار کو برقار رکھیں جو معیار آپ نے حاصل کرلیا ہے۔
یہ تھے پچیس طریقے۔ جن پر عمل کر کے آپ نہ صرف اپنی صحت کو برقرار رکھ سکتی ہیں بلکہ خوراک پر بھی قابو پا کر اسے متوازن اور مفید بنا سکتی ہیں۔ دیکھنا صرف یہ ہے کہ آپ ان معمولی باتوں پر کس طرح اور کتنی سنجیدگی سے عمل کر رہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  طلاقوں کی بڑی وجہ ختم ہوتی عدم برداشت