sUPER cyclone

سپرسائیکلون کیار طوفان: احتیاط ضروری ہے

EjazNews

سمندری طوفان کیار(سپر سائیکلون) کے باعث کراچی کی ساحلی پٹی متاثر ہونا شروع ہو گئی ہے۔ بہت سے گوٹھوں میں سمندری پانی گھس چکا ہے۔ سمندر کی تیز اٹھنے والی ہواﺅں کے باعث مزید نقصان کا خدشہ ہے۔
محکمہ موسمیات کے مطابق بحیرہ عرب میں اٹھنے والا یہ سب سے بڑا طوفان ہے۔ طوفان 15کلو میٹرکی رفتار سے شمال مغرب کی جانب بڑھ رہا ہے اور سائیکلون کی گرد ہوائیں 245کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہیں۔ یہ طوفان پاکستان کی ساحلی پٹی پر براہ راست اثر انداز نہیں ہوگا۔مچھواروں کو سمندر میں جانے سے احتیاط سے کام لینا چاہئے ۔کم از کم 31اکتوبر تک تو ضرور احتیاط کی جائے۔

یہ طوفان پاکستان کی ساحلی پٹی پر براہ راست اثر انداز نہیں ہوگا

بحیرہ عرب میں بننے والا طوفان سپر سائیکلوں کی شکل اختیار کر چکا ہے۔ جس کے باعث 30اور 31اکتوبر کو کراچی سمیت سندھ کے مختلف شہروں میںبارش اورگرد آلود ہوائیں چلنے کا امکان ہے۔ سمندری طوفان کیار کراچی سے 5سو کلو میٹر دور ہے۔ کیار طوفان کا رخ عمان کی جانب ہے، کراچی میں ہوا10کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتارسے چل رہی ہے۔ نمی کا تناسب 54فیصد رہنے کا امکان ہے جبکہ زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 36سے 37ڈگری ریکارڈ کیا جا سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  جنرل مشرف کی طرح مک مکا کرلوں، انہیں این آر او دے دوں تو کوئی افرا تفری نہیں ہوگی:وزیراعظم