molana fazul rehman

مولانا فضل الرحمن کا لانگ مارچ _ حکومت کاامتحان شروع

EjazNews

مولانا فضل الرحمن کا تعلق ایک سیاسی گھرانے سے ہے انہوں نے ہوش ہی سیاسی گھرانے میں کھولی ہے اس لیے ان کی سیاسی تربیت کے بارے میں بات کرنا ایسا ہی ہے جیسے سورج کو روشنی دکھانا ہو۔ ان کا سیاسی تدبر بھی کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے۔ جنرل پرویز مشرف کے دور حکومت میں ایم ایم اے کے پلیٹ فارم سے انہوں نے کےپی کے میں حکومت بنائی جس کے بعد ان کے اور جماعت اسلامی کے راستے جدا ہو گئے۔ یہی وجہ ہے کہ جماعت اسلامی اس لانگ مارچ کا حصہ نہیں ہے۔

آپ غور کریں جیسی بھی خبریں مختلف ٹی وی چینلز پر چل رہی ہوں لیکن جب مولانا فضل الرحمن نے تقریر کی تو انہوں نے واضح کر دیا کہ ہر وعدے کی پاسداری کی جائےگی۔

جہاں تک حکومت کا تعلق ہے یقین کیجئے حکومت جتنی پکڑدھکڑ کرے گی یا پھر کسی قسم کے ہتھکنڈے استعمال کیے تو اس لانگ مارچ میں شدت بڑھتی ہی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  10اگست سے ایس او پیز کے تحت سمارٹ لاک ڈائون ختم

مولانا فضل الرحمن نے27مارچ کی تاریخ دی تھی انہوں نے اسی تاریخ کو لانگ مارچ شروع کیا انہوں نے پر امن لانگ مارچ کا کہا تھا یقیناً یہ پر امن لانگ مارچ ہو گا۔