Pakistan IT

پاکستان آئی ٹی ایکسپورٹ سے4ارب ڈالر کما رہا ہے،عالمی سودے معیشت کو استحکام دے سکتے ہیں

EjazNews

پاکستان نے آئی ٹی کے شعبہ کو امریکی کمپنیوں، سرمایہ کاروں میں متعارف کرانا شروع کر دیا، اس شعبہ میں عالمی سودے پاکستان کی کمزور معیشت کو سہارا دے سکتے ہیں۔امریکی جریدہ فوربز کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی آئی ٹی سیکٹر سے امیدیں بڑھنے لگیں، ڈیوڈ بلوم نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ پر امن پاکستان کا آئی ٹی کا شعبہ کشش کا سامان پیدا کر سکتا ہے۔ سان جوز، کیلی فورنیا میں پاکستانی آئی ٹی مصنوعات کی ایک روزہ نمائش بھی منعقد ہوئی جس میں حکومت پاکستان کی معاونت شامل تھی، دو سو شرکاء کو مائیکرو الیکٹرونیکس، سافٹ وئیرڈویلپمنٹ، مصنوعی ذہانت کے متعلق آگاہ کیا گیا، میڈیکل کے شعبہ میں جدت اور کیپیٹل وینچر کے بارے میں بھی معلومات دی گئیں۔
جبکہ پاکستانی سفیر اسد مجید خان کا ایک بیان بھی سامنے آیا جس میں وہ کہتے ہیں کہ معیشت وزیراعظم عمران خان کی پہلی ترجیح ہے، پاکستان اس وقت آئی ٹی ایکسپورٹس کےذریعے 4 ارب ڈالر کما رہا ہے، ہم سلیکون ویلی کو بتانا چاہتے ہیں کہ پاکستان آئی ٹی کے شعبہ میں کیا کچھ کرسکتا ہے۔مجموعی طور پر پاکستان میں آئی ٹی کا شعبہ بہترین کارکردگی دکھا رہا ہے۔
گزشتہ روز ورلڈ بینک کی جانب سے بھی ایسی ہی ایک رپورٹ منظر عام پر آئی تھی کہ پاکستان جنوبی ایشیا میں ٹاپ ریفارمر بن گیاہے۔ اصلاحات کی بدولت پاکستن ایز آف ڈوئنگ بزنس انڈیکس میں 11درجہ بہتری ہوئی ہے۔ ورلڈ بینک کے مطابق پاکستان نے 6مختلف شعبوں میں اعلیٰ کارکردگی دکھائی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کشمیر کے لوگوں کی دلیری کو سلام پیش کرتا ہوں :وزیراعظم عمران خان

اسی سلسلے میں وزیراعظم عمران خان کا بھی ایک بیان سامنے آیا ’’کاروبار میں آسانی‘‘ کی صورت میں ہمارے منشور کا ایک اور وعدہ ایفاء ہوگیا۔ عالمی بنک کی ’’ای او ڈی بی رینکنگ‘‘ میں پاکستان کو تاریخ کی سب سے بڑی بہتری میسرآئی۔ گزشتہ ایک دہائی کے دوران پاکستان پھسلتا ہوا 50 درجے نیچے آیا۔ اب 28 درجوں کی بہتری کیساتھ ہم 136 سے 108 پر آچکے ہیں۔

ان کا ایک اور ٹویٹ منظر عام پر آیا ہے جس میں انہوں نے لکھا ہے کہ میں حکومت کے ان تمام لوگوں کو جنہوں نے اسے ممکن بنانے کیلئے نہایت محنت کی، مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ مگر طویل مسافت ابھی باقی ہے۔ انشاءاللہ 2020 سے قبل پاکستان سرمایہ کاری کیلئے موزوں ترین ممالک میں سے ایک ہو گا۔