women-amomi

خواتین کے عمومی طبی مسائل

EjazNews

مردوں کے مقابلے میں عورتیں صحت کے بعض مسائل سے زیادہ متاثر ہوسکتی ہیں۔ اس کی وجہ وہ کام ہیں جنہیں عورتیں انجام دیتی ہیں، عورتوں کو ملنے والی ناکافی اور ناقص غذا ہے اور اس لیے بھی کہ عورتیں کام کے نتیجے میں بہت زیادہ تھک جاتی ہیں۔ ایک بیماری، عورت کو مرد کے مقابلے میں مختلف انداز سے نقصان پہنچا سکتی ہے۔ مثال کے طور پر کوئی عورت اگر کسی ایسی بیماری میں مبتلا ہو جائے جو اسے کمزور کر دے اور اس کے جسم کو بے ڈول اور بھدا بنا دے تو ممکن ہے کہ وہ شوہر کی نظروں میں گر جائے اور اس کی توجہ سے محروم ہوجائے۔
عورتیں ایک بار بیمار ہوجائیں تو اس بات کا امکان کم ہی ہوتا ہے کہ شدید بیمار ہونے gسے پہلے ہی وہ اپنا علاج کروانے کی کوشش کریں اور ان کا علاج ہو جائے۔ مثلاً تپ دق (ٹی بی) کا مرض مردوں اور عورتوں دونوں میں پھیل رہا ہے لیکن مردوں کے مقابلے میں کم عورتوں کا علاج ہوتا ہے۔ روزانہ تقریباً3000 عورتیں تپ دق (ٹی بی) کی وجہ سے مر جاتی ہیں۔ ان میں سے کم از کم ایک تہائی کو مناسب علاج کی سہولت نہیں ملتی یا پھر انہیں علم تک نہیں ہوتا کہ انہیں یہ بیماری ہے۔ ماضی میں صحت کے جو دیگر مسائل، زیادہ تر مردوں کو متاثر کرتے تھے، آج وہ عورتوں کے لیے بھی خطرناک بنے ہوئے ہیں، مثلاً اب زیادہ عورتیں ، تمباکو نوشی یا زیادہ شراب پینے کی وجہ سے پیدا ہونے والے مسائل میں مبتلا ہورہی ہیں۔
کام کے خطرات:
عورتیں جو کام انجام دیتی ہیں ان کی وجہ سے وہ روزانہ اپنی صحت کے لیے خطرات کا سامنا کرتی ہیں۔ گھر میں رہتے ہوئے، دھوئیں کی وجہ سے پھیپھڑوں کی بیماریاں یا چو لہے کی آگ سے جل جانے کے واقعات اس قدر عام ہیں کہ انہیں عورتوں کے کاموں سے تعلق رکھنے والے صحت کے نمایاں مسائل سمجھا جاتا ہے۔ پانی کے ذریعے پھیلنے والی بیماریاں بھی عام ہیں۔ کیونکہ عورتوں کا بہت زیادہ وقت کپڑے دھونے، پانی نکالنے یاکھیتی باڑی کرتے ہوئے۔ پانی میں گھرے رہنے میں گزر جاتا ہے۔
گھر سے باہر کام کرنے والی لاکھوں عورتیں، اس وجہ سے صحت کے مسائل کا شکار ہوجاتی ہیں کہ ان کے کام کرنے کی جگہ صحت کے لحاظ سے غیر محفوظ ہوتی ہے اور جب یہ عورتیں اپنی ملازمت سے گھر واپس آتی ہیں تو انہیں گھر پر بھی کام میں لگے رہنا پڑتا ہے۔ اس کے نتیجے میں وہ بہت زیادہ تھک جاتی ہیں اور ان کے بیمار ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔
ذہنی صحت کے مسائل:
مردوں اور عورتوں، دونوں کے لیے ذہنی صحت کے کسی مسئلے سے دو چار ہونے کا اندیشہ برابر ہے تاہم شدید مایویسی (ڈپریشن )مردوں کے مقابلے میں عورتوں کو زیادہ متاثر کرتی ہے۔ اس سے اکثر وہ عورتیں متاثر ہوتی ہیں جو غریب ہوں، جن کی برادریاںبستیاں تباہ ہوگئی ہوں یا ان میں بڑی تبدیلی واقع ہوئی ہو۔ لیکن اس بات کا امکان کم ہی ہے کہ اپنی صحت کے کسی بھی مسئلے سے دو چار ہونے والی عورتوں کو مردوں کے مقابلے میں زیادہ مدد فراہم ہوسکے۔

یہ بھی پڑھیں:  خواتین میں خون کی کمی کے باعث پیدا ہونے والے امراض