manto

’’منٹو‘‘ کے بعد ’’زندگی تماشا ‘‘ریلیز سے پہلے ہی چار سو چرچے ہونے لگے

EjazNews

سرمد کھوسٹ نے اپنی صلاحیتوں کو بطور ڈائریکٹر ٹی وی انڈسٹری میں تو بہت پہلے ہی منوا لیا تھا لیکن ان کی پہلی فیچر فلم منٹو کے ریلیز ہونے کے بعد ان کی اداکاری میں بھی کسی کو کوئی شک باقی نہیں رہا۔ منٹو کے کردار کو جس خوبصورتی سے انہوں نے نبھایا تھا اگر میں سرمد کھوسٹ اور نواز الدین صدیقی کا موازنہ صرف منٹو کے کر دار کے حوالے سے کروں تو سرمد کھوسٹ نے یہ کر دار بہت عمد ہ طریقے سے نبھایا تھا بانسبت نوازا لدین صدیقی کے۔ نواز الدین کی اداکاری میں کوئی شک و شبہ والی بات نہیں لیکن ہر کردار میں ڈھل جانا بھی ہر اداکار کے بس کی بات نہیں ہوتا۔ انہوں نے بال ٹھاکر ے کے کردار کو جس خوبصورتی سے نبھایا ہے شاید اس عمدہ اداکاری کی مثال نہ دی جاسکے۔بحرکیف ہم اپنے موضوع کی جانب آتے ہیں۔
منٹو میں سرمد کھوسٹ بطور ڈائریکٹر اور اداکار بھی تھے ۔ یہ پہلی آرٹ مووی تھی جس نے پاکستان میں اچھا بزنس بھی کیا تھا جس کے بعد بہت سے لوگوں کو حوصلہ ملا اور انہوں نے عالمی میلوں کیلئے بنائی جانے والی اپنی فلمیں پاکستان میں بھی ریلیز کیں۔
ان کی نئی فلم زندگی تماشا کا ٹریلر ریلیز ہو چکا ہے اور میڈیا میں کافی گرما گرم بحث بھی اس کو لے کر جاری ہے۔ اس میں کوئی دوسری رائے نہیں ٹریلر دیکھ کر اندازہ ہوتا ہے کہ اس فلم میں اداکاروں کی سلیکشن سے لے کر لوکیشن اوراداکاروں سے کام اس طرح سے لیا گیا ہے کہ جیسے یہ لوگ اسی کردار کے لیے اداکار بنے تھے۔
یہ فلم پاکستان میں ریلیز ہونے سے پہلے ایک فلمی میلے میں ایوارڈ جیت چکی ہے ۔ جلد یہ پاکستان میں بھی ریلیز ہونے والی ہے ، فلم کے ٹریلر سے اندازا ہوتا ہے کہ یہ فلم مشکل موضوع کو لے کر بنائی گئی ہے۔ سوشل میڈیا پر ریلیز ہونے والی ایک ویڈیو کے بعد حالات پر فلمائی گئی یہ فلم اپنے دیکھنے والوں کو کس قدر محظوظ کرتی ہے یہ تو اب فلم دیکھنے کے بعد ہی اندازہ ہوگا کہ موضو ع کے ساتھ کتنا انصاف ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  اداکارہ مومل شیخ کے ہاں ننھی مہمان کی آمد