Dr fasil

طالبان وفد نے امن مذاکرات کیلئے پاکستان کی کوششوں کو سراہا :ترجمان دفتر خارجہ

EjazNews

دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے بتایا ہے کہ دوحہ میں طالبان پولیٹیکل کمیشن کے قیام کے بعد طالبان نے پہلی بار پاکستان کا دورہ کیا، یہ انتہائی حساس معاملہ ہے اور اس سلسلے میں مزید تبصرے سے گریز کرنا چاہیے۔تاہم ان کا کہنا تھا کہ طالبان وفد نے امن مذاکرات کے لیے پاکستان کی کوششوں کو سراہا ہے۔
کہ افغانستان میں تقریباً 2 دہائیوں سے جاری تنازع کو سیاسی طور پر حل کرنے کی ازسر نو کوشش کے تحت پاکستانی حکام اور طالبان رہنماؤں کے درمیان دفتر خارجہ میں ملاقات ہوئی تھی۔
دفتر خارجہ سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق ملاقات میں افغان طالبان کے اعلیٰ سطح کے وفد نے میزبانی اور افغان امن عمل میں پاکستان کے مصالحانہ کردار کی تعریف کی اور دونوں فریقین نے مذاکرات کی جلد بحالی کی ضرورت پر اتفاق کیا۔
مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کے حوالے سے ترجمان نے کہا کہ پاکستان نے کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ سمیت دنیا کے ہر اہم فورم پر اجاگر کیا، پاکستان کی عالمی سطح پر سفارتی کوششوں کے نتیجے میں تنازع کشمیر کی عالمگیریت نے بھارت کو عالمی سطح پر تنہا کر دیا ہے اور اس صورتحال سے نکلنے کے لیے نئی دہلی پر تمام دروازے بند کر دیئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مظلوم کشمیریوں کے مصائب مؤثر انداز میں اجاگر کرنے کے لیے مزید اقدامات بھی زیر غور ہیں۔ڈاکٹر فیصل کا کہنا تھا کہ پاکستان نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا نوٹس لے۔
ان کا کہنا تھا کہ بھارتی قابض فورسز نے گزشتہ ایک ہفتے کے دوران 13 کشمیریوں کو شہید کیا، مزید ہلاکتوں کی بھی اطلاعات ہیں لیکن کرفیو کے باعث وادی سے صحیح تفصیلات نہیں مل رہیں۔
اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب کے طورپر منیر اکرم کی تعیناتی سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ترجمان نے کہا کہ ملیحہ لودھی اپنی مدت پوری کر چکی تھیں، منیر اکرم فارن سروس کے معزز رکن رہے ہیں اور ان کی کامیابیاں کسی سے ڈھکی چھپی نہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  نواز شریف کی سیاسی زندگی پر ایک نظر