hasan rohani

جوہری معاہدے میں کیے جانے والے معاہدے پورے کیے جائیں پھر مذاکرات ہوں گے:ایرانی صدر حسن روحانی

EjazNews

ایرانی صدر حسن روحانی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب کیا اس خطاب کے بعد ترکی کا بیان بھی ایران کے حق میں آیا کہ ایران پر الزام لگانے میں احتیاط سے کام لیا جائے۔ ایران کے صدر حسن روحانی کا کہنا تھا کہ ایران اپنے اور پڑوسی ملکوں کیلئے امن چاہتا ہے، پڑوسی ممالک میں امن و سلامتی ایران میں امن و سلامتی کے مترادف ہے۔انہوں نے خلیجی ممالک کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ ہمارا اور آپ کا پڑوسی نہیں ہے بلکہ ایران پڑوسی ہے، مشکل حالات میں پڑوسی ہی ساتھ ہوں گے امریکہ نہیں۔
ایرانی صدر کا معاشی پابندیوں کے حوالے سے کہنا تھا کہ تاریخ کی بد ترین پابندیاں ایران کے وقار کیلئے نقصان دہ ہیں، امریکہ نے ایران کو عالمی معیشت میں حصہ دار بننے سے محروم کر رکھا ہے لیکن ایران نے اپنے خلاف ہونے والی بدترین معاشی دہشت گردی پر مزاحمت کی ہے۔ ایران خطے میں آزادی کی تحریکوں کے بانیوں میں سے ہے اور ہم نے کبھی بھی غیر ملکی جارحیت اور دباؤ کے آگے سر نہیں جھکایا۔ وہ تمام ممالک جو ایران کو مذاکرات کیلئے آمادہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں وہ سن لیں کہ مذاکرات کا ایک ہی طریقہ ہے جوہری معاہدے کے بدلے کیے جانے والے وعدے پورے کیے جائیں۔ امریکہ ہمیں مذاکرات کیلئے بلاتا ہے لیکن پھر معاہدوں کی پاسداری نہیں کرتا، ایران اب بھی پابندیوں کے دباؤ کے بغیر بات چیت کیلئے تیار ہے کیوں کہ ہم دشمن کی پابندیوں میں رہتے ہوئے مذاکرات نہیں کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  کیا مقبوضہ کشمیر میں فلسطین جیسا کھیل کھیلا جارہا ہے؟