سابق اپوزیشن لیڈر کو نیب نے گرفتار کرلیا

EjazNews

خورشید شاہ کی گرفتاری کے حوالے سے نیب نے اعلامیہ جاری کیا ہے اس کے مطابق نیب سکھر نے خورشید شاہ کو آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں گرفتار کیا اور ان کو ریمانڈ کے لیے جمعرات کو متعلقہ احتساب عدالت سکھر میں پیش کیا جائے گا۔ نیب کی مشترکہ ٹیم نے آمدن سے زائد اثاثے سے متعلق کیس میں خورشید شاہ کوان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا۔جبکہ پی پی پی کے رہنما کے خلاف نیب میں 3 تحقیقات چل رہی ہیں اور ان کے خلاف تمام الزامات ٹھوس تھے، جس کی بنیاد پر انہیں گرفتار کیا گیا۔نیب کا کہنا ہے کہ خورشید شاہ کو نیب تحقیقات کے سلسلے میں سوالنامہ بھی بھجوایا گیا تھا، جس کے وہ تسلی بخش جواب نہیں دے سکے تھے۔
یاد رہے اگست 2019ءمیں احتساب کے ادارے نے سابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ پر مبینہ کرپشن کے ذریعے500ارب روپے سے زائد اثاثے بنانے کا الزام عائد کیا تھا لیکن پی پی پی کے رہنما نے ان تمام الزامات کو مسترد کردیا تھا۔
خورشید شاہ کی گرفتاری کے بعد سامنے آنے والی معلومات میں ان کے مبینہ فرنٹ مین لڈو مل کے نام پر 11 اور آفتاب حسین سومرو کے نام پر 10 جائیدادیں بھی بتائی جارہی ہیں۔نیب کے متعلق یہ بات سامنے آرہی ہے کہ دارے نے خورشید شاہ کی رہائشی سکیموں، پیٹرول پمپز، زمینوں اور دکانوں سے متعلق تفصیلات بھی حاصل کرلیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  اتنا بڑا واقعہ ہوا لیکن حکومت کمیٹی کمیٹی کھیل رہی ہے:لاہور ہائیکورٹ