Maraym nawaz

 چیف الیکشن کمشنرکی سربراہی میں فیصلہ مریم نواز نائب صدر کے عہدے کی اہل ہیں

EjazNews

چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے مریم نواز کے پارٹی عہدے کے خلاف دائر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے اراکین کی درخواست پر محفوظ فیصلہ سنادیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے اپنے فیصلے میں کہا کہ مریم نواز پارٹی کی نائب صدارت کے لیے اہل ہیں، تاہم مریم نواز کو پارٹی کا قائم مقام صدر نہیں لگایا جاسکتا اور وہ خود بھی پارٹی کا کوئی بھی فکشنل (فعال) عہدہ قبول نہ کریں۔واضح رہے کہ درخواست میں مریم نواز کو مسلم لیگ (ن) میں نائب صدر کے عہدے سے ہٹانے کی استدعا کی گئی تھی۔
واضح رہے کہ 3 مئی کو مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے اپنے بیٹے حمزہ شہباز کے علاوہ مریم نواز کی بھی پارٹی کے نائب صدر کی حیثیت سے منظوری دی تھی۔بعد ازاں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ پی ٹی آئی، مسلم لیگ (ن) کی جانب سے ایک مجرم کو پارٹی کا عہدہ دینے کے فیصلے کو چیلنج کرنے کا سوچ رہی ہے۔ 9 مئی کو پی ٹی آئی کے قانون سازوں بیرسٹر ملیکہ بخاری، فرخ حبیب، کنول شوزب اور جویریہ ظفر نے ایک درخواست دائر کی ، جس میں کہا گیا کہ مریم نواز کی تقرری خلاف قانون تھی کیونکہ مسلم لیگ (ن) کی رہنما کو کسی بھی سیاسی یا عوامی عہدہ رکھنے کے لیے نااہل قرار دیا گیا تھا۔
ایون فیلڈ اپارٹمنٹ ریفرنس کے فیصلے میں احتساب عدالت نے نواز شریف کو، مریم نواز کو اور کیپٹن (ر) محمد صفدر قید کی سزا سنائی تھی۔
اس کے علاوہ 10 سال کے لیے انتخابات لڑنے یا کوئی عوامی عہدہ رکھنے کے لیے بھی نااہل قرار ئیے گئے تھے ۔
تاہم گزشتہ برس 19 ستمبر کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نیب کورٹ کا فیصلہ معطل کردیا تھا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے ڈویژن بینچ کا یہ حکم جسٹس اطہرمن اللہ اور جسٹس گل حسن اورنگزیب کی جانب سے حتمی فیصلے تک تھا۔علاوہ ازیں قومی احتساب بیورو نے اس معطلی کو چیلنج کیا تھا لیکن سپریم کورٹ نے اس درخواست کو مسترد کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  بلاول بھٹو زرداری اور مریم نواز کا ہزارہ برادری سے تعزیت اور خطاب