indian prime minster

بھارتی خلائی مشن کی ناکامی، مشن سربراہ زارو قطار رونے لگ پڑے

EjazNews

جولائی میں انڈیا نے زمین سے چاند پر چندریان ٹو نامی خلائی مشن کو بھیجا ۔ اس نے 384کلو میٹر کا فاصلہ طے کر کے ستمبر میں پہنچنا تھا۔ اس کو بھیجنے کے مناظر انڈیا کے ٹی وی چینلز پر دکھائے گئے۔ اب جبکہ ستمبر میں اس نے پہنچنا تھا تو اس کو ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اس مشن کے سربراہ کو دیر تک گلے لگا کر تسلی دیتے نظر آئے

چندریان 2 نامی خلائی مشن بھارت کا اب تک سب سے پرجوش منصوبہ تھا ۔جولائی میں مشن روانہ کرتے ہوئے بھارت کو امید تھی کہ وہ امریکہ ، روس اور چین کے بعد کامیابی سے چاند پر اترنے والا چوتھا ملک اور اس کے قطب جنوب تک پہنچنے والا پہلا ملک بن جائے گا۔اس مشن سے قبل بھارت نے 2008 میں بھی چاند پر خلائی مشن بھیجا تھا، تاہم وہ مشن بھی کامیاب نہیں ہوسکا تھا۔ہفتے کو علی الصبح جب بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور کروڑوں افراد سانسیں روکے بھارتی خلائی پروگرام کے بانی کے نام سے منسوب خلائی جہاز کے چاند کی سطح پر اترنے کا منظر دیکھ رہے تھے، اس وقت صرف 2.1 کلومیٹر کے فاصلے پر اس کا رابطہ زمین سے ٹوٹ گیا۔جس پر ایک صدمے کی کیفیت طاری ہو گی ، اس صدمے کو برداشت نہ کرتے ہوئے اس مشن کے سربراہ زارو قطار رونے لگ پڑے۔ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اس مشن کے سربراہ کو دیر تک گلے لگا کر تسلی دیتے نظر آئے۔

یہ بھی پڑھیں:  حیرت انگیز طور پر امریکہ میں کرونا وائرس کی وبا بڑھتی ہی جارہی ہے

یہ بات یاد رکھنے کی ہے چین جنوری میں وہ پہلا ملک بنا تھا جو چاند کے اس حصے میں اترنے میں کامیاب ہوا تھا جہاں تک آج تک کوئی خلائی مشن نہیں جا سکا۔اور دنیا نے چاند کی نئی تصاویر انٹرنیٹ پر دیکھی تھیں۔