abid ali death

کیا مرکر بھی میں چین نہیں پاﺅں گا

EjazNews

67 سالہ اداکار عابد علی کا گزشتہ رات کراچی کے نجی ہسپتال میں انتقال ہوگیا، وہ کافی عرصے سے جگر کے عارضے میں مبتلا تھے۔ عابد علی کافی عرصے سے جگر کے عارضے میں مبتلا تھے اور گزشتہ چند دنوں سے ان کا کراچی کے ایک نجی ہسپتال میں علاج جاری تھا۔
عابد علی نے پہلی شادی اداکارہ حمیرا علی سے کی تھی، ان کی تین بیٹیاں مریم علی، ایمان علی اور رحمہ علی ہیں۔ان کی دوسری شادی اداکارہ رابعہ نورین سے 2006 میں ہوئی، جس کے بعد عابد علی اور حمیرا علی میں علیحدگی ہوگئی۔
ان کی وفات کے بعد خاندانی جھگڑوں نے سر اٹھایا اور پھروہی ہوا کہ یہ خاندانی معاملہ سوشل میڈیا پراتنا چھا گیا کہ مجبوراً ہمیں بھی آگاہی کیلئے اس میں کودنا پڑا ۔ کیونکہ گھریلو مسائل اب سوشل میڈیا پر آنے شروع ہو چکے ہیں پتہ نہیں آگے آگے دیکھنے کو کیا ملے گا ۔
اداکار عابد علی کے بیٹی رحمہ علی نے اپنے سوشل میڈیا اکاونٹس پر ایک ویڈیو شیئر کی، جس میں وہ ہسپتال میں موجود ہیں۔ان کی ویڈیو کو ترجمان پنجاب حکومت نے ری ٹویٹ کر دیا ۔اورساتھ ہی اپنا انسانیت بھر پیغام بھی لکھ ڈالا ۔

یہ بھی پڑھیں:  معروف لوک فنکار الن فقیر کو ہم سے بچھڑے 19برس ہو گئے

اداکار عابد علی کے بیٹی رحمہ علی نے اپنے سوشل میڈیا اکاونٹس پر ایک ویڈیو شیئر کی، جس میں وہ ہسپتال میں موجود ہیں۔ان کی ویڈیو کو ترجمان پنجاب حکومت نے ری ٹویٹ کر دیا ۔اورساتھ ہی اپنا انسانیت بھر پیغام بھی لکھ ڈالا ۔
اس ویڈیو میں رحمہ نے روتے ہوئے بتایا کہ میں دنیا کو بتانا چاہتی ہوں کہ رابعہ نورین میرے والد کی دوسری اہلیہ ہسپتال سے میرے والد کی میت لے کر چلی گئیں۔میری ماں میری بہنیں ہم سب ہسپتال میں موجود ہیں، ہم نہیں جانتے ہم کہاں جائیں، ہمیں تو یہ تک نہیں معلوم کے وہ رہتے کہاں تھے، انہوں نے میری پھوپھو سے کہا ہے کہ یہ عورتیں، یعنی ہم عابد علی کی بیٹیاں ان کی اصل فیملی رابعہ میڈم کے گھر نہیں جاسکتے، انہوں نے ہمیں یہ بھی نہیں بتایا کہ جنازہ کب اور کہا ہوگا، وہ انہیں لے گئی ہیں، میں نہیں جانتی کیا کریں، ہم نہیں جانتے کیا کرنا چاہیے۔
اگر دیکھا جائے تو یہ ایک بیٹی کی اپنے باپ کیلئے جائز تڑپ ہے ۔ لیکن موقف ایک فریق کا سامنے آیا ہے۔ رحمہ نے اس پیغام کو اپنے اکاﺅنٹس سے ڈیلیٹ کر دیا ہے اور موقف اختیار کیا ہے کہ کچھ لو گھٹیا کمنٹس کر رہے تھے۔ اس حالت میں جب ایک بیٹی اپنے باپ کیلئے تڑپ رہی ہے کہ میں اس کا آخری دیدار کرنا چاہتی ہوں اُس وقت کم از کم اپنی انگلیوں اور زبان کو محتاط طریقے سے استعمال کرنا چاہئے۔

یہ بھی پڑھیں:  پی ٹی وی عید پر ارتغل غازی کے ہیرو کا انٹرویو اردو میں نشر کرے گا

دوسری جانب ان کی بیٹی ایمان علی نے سوشل میڈیا کے ذریعے ہی بتایا کہ ان کے والد کی نماز جنازہ بحریہ ٹاﺅن کراچی میں نماز جمعہ کے بعد ایک بجے ہوگی۔