black day-PM-imran

کیا دنیا خاموشی سے مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی نسل کشی اور قتل عام کا نظارہ کرے گی؟

EjazNews

دنیا بھر میں پاکستانی اور کشمیری15 اگست ،بھارت کے یوم آزادی کو بطور یوم سیاہ منا رہے ہیں ۔وزیراعظم عمران خان مسئلہ کشمیر کو ہر سطح پر اجاگر کر رہے ہیں۔ اور انہوں نے پوری ریاستی مشینری کو جس طرح مسئلہ کشمیر کے متعلق دنیا بھر میں آگاہی پیدا کرنے کیلئے ایکٹو کیا ہوا ہے کاش پچھلی حکومتیں اس کا عشر عشیر بھی کرلیتیں تو آج نریندر مودی کو ایسی حرکت کرنے کی جرأت نہ ہوتی جو اس نے کی ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز پاکستان کے یوم آزادی کے موقع پر آزاد کشمیر کی اسمبلی میں تقریر بھی کی جس میں ان کا کہنا تھا کہ مودی کو اپنے کیے کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔ ہم مکمل طور پر تیار ہیں اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے۔
15اگست کو یوم سیاہ کے موقع پر وزیراعظم عمران خان نے بھی سوشل میڈیا پر اپنی پروفائل تصویر کو سیاہ کردیاہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان کرکٹ ٹیم عید اور جیت مبارک

انہوں نے اپنے ایک پیغام میں کہا ہے کہ بھارت کے زیر تسلط مقبوضہ کشمیر میں 12 روز سے جاری کرفیو،پہلے ہی سے فوجی کثرت والے مقبوضہ علاقے میں مزید فوجوں کی تعیناتی، آر ایس ایس کے غنڈوں کو مقبوضہ وادی میں بھجوانے، اطلاعات و وسائل ابلاغ کی مکمل بندش اور گجرات میں مودی کے ہاتھوں مسلمانوں کے قتل عام کی نظیر سامنے رکھتے ہوئے۔ کیا دنیا خاموشی سے مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی نسل کشی اور سربرینیکا جیسے ایک اور قتل عام کا نظارہ کرے گی؟میں اقوام عالم کو متنبہ کرتا ہوں کہ اگر اسکی اجازت دی گئی تو مسلم دنیا سے شدید ردعمل اور سنگین نتائج برآمد ہوں گے، انتہاء پسندی کو ہوا ملے گی اور تشدد کا نیا دور ابھرے گا۔
مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ 12 روز سے کرفیو نافذ ہے، وہاں فوج کی اضافی نفری تعینات ہے، رابطوں کے تمام ذرائع پر پابندی ہے۔کیا یہ دنیا کو نظر نہیں آرہا ہے ۔ 40لاکھ لوگوں کو پابندی سلاسل سے بدترپابندی میں رکھا گیا ہے اور اوپر سے جعلی اور پرانی ترین فوٹیج ٹی وی چینلوں پر چلوا کر بے شرمی کی انتہا کی جارہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کیا چاند کا مسئلہ حل ہو جائے گا؟