duaa

دوران حج و طواف دعا کی قبولیت کے مقام

EjazNews

نماز باجماعت اور نفلی طوافوں وغیرہ کے بعد دعا بھی خیرو برکت کی موجب ہے، یہ عبادت کا مغز ہے ۔ دعا ہر جگہ کی جاسکتی ہے لیکن بیت اللہ شریف میںقبولیت کی بڑی توقع ہے، ذیل میں ان مقامات مقدسہ کو لکھا جارہا ہے جہاں جہاں دعائیں قبول ہوتی ہیں ، ان جگہوں میںنہایت خلوص اور خشوع سے دعا کرو۔ وہ مقامات یہ ہیں:
(۱) ًواف کرتے وقت دعا کرنا (۲) حجر اسود پر دعا کرنا (۳) رکن یمانی (۴) ملتزم کے نزدیک (۵) بیت اللہ شریف کے اندر (۶)حرم شریف میں آدھی رات کو (۷) بیت اللہ کے پرنالے کے نیچے جس کو میزاب رحمت کہتے ہیںة (۸) دوپہر کے وقت حرم شریف میں (۹) زمزم کے پاس (۰۱) حرم شریف میں غروب آفات کے وقت (۱۱) مقام ابراہیم کے پاس (۲۱) سعی کے وقت صفا و مروہ پر اور صفا و مروہ کے درمیان (۳۱) عرفات میں (۴۱) مزدلفہ میں (۵۱) منیٰ میں (۶۱) مشعر الحرام (۷۱) جمروں کے پاس بجز جمرئہ عقبہ۔
یہ سب قبولیت کے مقامات ہیں۔ عربی میں یا اپنی زبان میں نہایت عاجزی سے دعائیں کرو۔ یہ موقعہ ہمیشہ نہیں ہاتھ آتا۔
ملتزم :
مقامات قبولیت میں سے ہے ملتزم میں دعاﺅں کی خاص اہمیت ہے جو حجر اسود اور خانہ کعبہ کے دروازے کی درمیانی جگہ کا نام ہے۔ یہاں پر کھڑے ہو کر دونوں ہاتھ پھیلا کر بیت اللہ کی دیوار کو چمٹ جاﺅ، چہرہ دیوار پر رکھ کراور خوب رو ر و کر دعائیں مانگو، نہایت تضرع و گریہ زاری سے توبہ و استغفار کرو یہ قبولیت کی جگہ ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جو آفت اور مصیبت زدہ یہاں دعا مانگے گا وہ عافیت پائے گا۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ کرام ؓ ملتزم پر چمٹ کر رخساروں اور سینوں کو دیوار سے لگا کر اور ہاتھوں کوب چھا کر دعا مانگتے تھے۔ (ابوداﺅ، زاد المعاد)
اس ملتزم پر مندرجہ ذیل دعا پڑھو:
ترجمہ: اے اللہ سب تعریفیں تیرے لئے ہیں جوتیری نعمتوں کے مقابل ہیں اورتیری مزید نعمتوں کے برابر ہوں تیری ان نعمتوں کی تعریف کرتا ہوں جن کو میںجانتا ہوں اور جنگو میں نہیں جانتا ہوں ہر حال میں تیری تعریف کرتا ہوں اے اللہ تو درود و سلام بھیج محمد صلی اللہ علیہ وسلم اورآل محمد پر الٰہی تو مجھے شیطان مردود سے بچا اور ہرقسم کی برائی سے مجھ کو بچا اور جو کچھ تو نے مجھے دیا ہے اس پر قناعت دے اور برکت دے۔ اے اللہ تو مجھے اپنے بہترین مہمانوں میں سے کر۔ اور مرتے دم تک تو مجھے سیدھے راستہ پر ثابت قدم رکھ۔
اس کے علاوہ قرآن و حدیث کی جو دعا اپنے مقصد کے مطابق پاﺅ پڑھو۔ ان دعاﺅں میں راقم الحروف کو بھی شامل کرو تو بڑی مہربانی ہوگی۔ جزاکم اللہ احسن الجزائ، آپ کا کچھ نقصان نہیں ہوگا اور راقم بداں رابہ نیکاں بہ بخشد کریم کا مصداق ہو جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  بیت اللہ شریف کے اندر داخل ہونے کی فضیلت