jawad zareef

امریکی پابندیاں ایرانی وزیر خارجہ پر کس قدر اثر انداز ہوں گی؟

EjazNews

وائٹ ہاؤس نے ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف کے امریکہ میں داخلے پر پابندی اور اثاثے منجمد کرنے کا اعلان کیا تھا۔امریکی وزیر خزانہ اسٹیون ایمنیوچن نے ایک بیان میں کہا کہ جواد ظریف کے بین الاقوامی سفر پر بھی پابندیوں کی کوشش کی جائے گی، امریکہ میں ان کے کوئی اثاثے ہیں تو منجمد کیے جائیں گے۔
جبکہ ایران کے وزیرخارجہ محمدجواد ظریف نے امریکی حکام کی جانب سے پابندی لگانے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا بھرمیں ایرانی عوام کی ترجمانی کرنے کے جرم میں مجھ پر پابندی لگادی گئی ہے۔ان کا کہنا تھا میں دنیا بھرمیں ایرانی عوام کا اصل ترجمان ہوں۔انہوں نے مزید لکھا کہ حقیقت اس قدر تلخ ہے؟ یہ پابندیاں، ان پر اور ان کے گھر والوں پر کوئی اثر نہیں ڈالیں گی کیونکہ ان کے ملک کے باہر کسی قسم کی کوئی جائیداد یا مفادات نہیں ہیں۔
امریکہ کی اس قسم کی پابندیوں کا نقصان ایسے لوگوں کو تو بہت زیادہ ہوتا ہے جن کے امریکہ میں اثاثے ہوتے ہیں یا پھر ان کے مفادات ہوتے ہیں لیکن جواد ظریف تو صاف انکار کر چکے ہیں کہ ان کے ایران کے باہر کوئی اثاثے نہیں ہیں اور نہ ہی ان کے کوئی مفادات ہیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کچھ دنوں قبل امریکی ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکہ نے ایران کے خلاف اقتصادی جنگ شروع کی ہوئی ہے۔ ایران کے خلاف امریکی پابندیاں اقصادی دہشت گردی ہے۔ امریکی صدر اقتصادی جنگ پر فخر کر رہا ہے امریکیوں نے ایرانی عوام کو نشانہ بنایا ہے۔
محمد جواد ظریف نے ایران ، امریکہ مذاکرات کو خارج از امکان قرار دیتے ہوئے کہاتھاکہ ایران دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گا۔امریکی اقتصادی جنگ نے ایرانی حکام یا فوج کو نشانہ نہیں بنایا بلکہ عام شہریوں کو نشانہ بنایا ہے۔ایران پر امریکی پابندیاں کھلی اقتصادی دہشت گردی ہے۔
واضح رہے کہ ایرانی فورسز نے ایک امریکی جاسوس ڈرون کو جنوبی صوبے ہرمزگان کے علاقے کوہ مبارک کے نزدیک ایران کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے پر مار گرایا تھا۔بعد میں امریکی فوج کی سینٹرل کمانڈ نے تصدیق کی تھی کہ ایران نے زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کے ذریعے امریکی بحریہ کا ڈرون گرا دیا ہے۔امریکی ڈرون مارگرائے جانے کے بعد صدر ٹرمپ نے ایران پر مزید اقتصادی پابندیوں کا اعلان کیا تھا۔
اور اب ایرانی وزیر خارجہ پر لگنے والی پابندیوں کی کڑیاں بھی ایران کو تنہا کرنے کی جانب لے جانا ہے ۔ لیکن ایرانیو ں نے گزشتہ ایک طویل عرصے تک جنگ لڑی ہے اور اس کے بعد بھی سنبھل گئے ہیں۔ روس ایران کی مکمل طور پر مدد کر رہا ہے جبکہ چین کے مفادات بھی ایران کے سات وابستہ ہیں۔ اب امریکی پابندیوں کے اثرات کیا مرتب ہوتے ہیں یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت کا چندریان ٹو 384ہزار کلو میٹرکا سفر طے کر کے چاند پر ستمبر میں پہنچے گا