shahzad

شریف خاندان سے کوئی پلی بارگین چاہتا ہے تو نیب عدالت میں رکھے گا:معاون خصوصی شہزاد اکبر

EjazNews

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے لاہور میں پریس کانفرنس جس میںان کا کہنا تھاشہباز شریف صاحب ہم آپ سے ایرا فنڈز سے کی گئی صرف تین ادائیگیوں کا پوچھ رہے ہیں۔ اس کا جواب دے دیں، قوم کو گمراہ نہ کریں، یہ بتائیں کہ آپ کے داماد علی عمران کو 6کروڑ کیوں دئیے گئے؟۔ ان کا کہنا تھا میں نے شہباز شریف کی پریس کانفرنس بڑی غور سے سنی ہے انہوں نے ڈیلی میل کی خبر پر کوئی وضاحت نہیں دی، لندن میں مقدمہ کریں اگر شہباز شریف کہیں گے تو لندن سے مفت وکیل بھی کرادوں گا۔
انہوں نے کہا کہ یہ حقیقت ہے کہ زلزلہ 2005 میں آیا تھا مگر پہلی 20 ملین کی رقم 6 ستمبر 2012 کی ہے،تین ادائیگیوں کی رقم 6کروڑروپے بنتی ہے۔ ہم ایرا کے فنڈز سے جو تین رقم ادا کی گئی اس کا پوچھ رہے ہیں، 6 کروڑ روپے ایرا سے غیرقانونی نوید اکرام نے علی عمران کو دئیے۔ شہباز شریف نے اپنی پریس کانفرنس میں ان چھ کروڑ روپے کا جواب نہیں دیا۔
معاون خصوصی برائے احتساب نے کہا کہ علی اینڈ کو کمپنی شہباز شریف کے داماد علی عمران کی ہے، نوید اکرام چیک سے ادائیگی کرتا ہے اور پاور آف اٹارنی علی عمران کے نام ہے، نوید اکرام ایرا کے پیسوں سے پلازہ کے 3 فلور کیسے خرید رہا تھا؟۔ نوید اکرام، فرخ شاہ، علی عمران کا گٹھ جوڑ تھا۔
ان کا مزید کہنا تھا شہباز شریف نے فرخ شاہ کو کمپنی میں سی ایف او لگایا، اس انڈر کنسٹرکشن پلازہ کے صرف 5 فلور تھے، 11،12 اور13 فلور کیسے خریدے، لاہور کے نواح میں ایرا کے فنڈز سے 80 کنال اراضی خریدی گئی، چوری دو لوگوں نے کی، ایک کو گرفتار کرادیا کیونکہ وہ غریب تھا۔
انہوں نے کہا کہ 200 سے زائد ٹیلی گرافک ٹرانسفر شہباز فیملی کے نام آئی ہیں، 131 ملین کی ٹی ٹی علی عمران کے نام بھی آئی ہیں، نوید اکرام 2016 میں عدالت میں پیش ہوا تو اس نے علی عمران کا نام لیا تھا، شہباز شریف نے دوسرے ملزم اپنے داماد کو مفرور کرادیا۔
معاون خصوصی برائے احتساب نے کہا کہ نوید اکرام پلی بارگین کرچکا، علی عمران کی جائیدادیں ضبط کی جارہی ہیں، علی عمران یا اسحاق ڈار جواب کے لیے 6 ماہ میں نہ آئے تو قانون کے مطابق ایکشن ہوگا، علی عمران، اسحاق ڈار کی جائیدادوں کی عوامی نیلامی ہوگی۔ شریف خاندان سے کوئی پلی بارگین چاہتا ہے تو نیب عدالت میں رکھے گا، ملک کا پیسہ جتنا لوٹا ہے وہ دیں اور ہماری جان چھوڑیں، لوٹا پیسہ پلی بارگین سے واپس دیں تو نیب عدالت سے رجوع کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  حکومت کچھ بھی کرسکتی ہے