imran khan

22کروڑ میں سے صرف15لاکھ لوگ ٹیکس دیتے ہیں، 7سو ارب کی ٹیکس چوری ہوتی ہے:وزیراعظم عمران خان

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے گوجرانوالہ چیمبر آف کامرس میں تقریب تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کرتے ہ وئے کہا ہے کہ 70فیصد ٹیکس صرف3سو کمپنیاں دے رہی ہیں۔ ہم نے کوشش کی ہے کہ سب ٹیکس نیٹ میں آجائیں جبکہ ڈیمانڈ یہ آرہی ہے کہ ہم سے پیسے لے لیں لیکن ٹیکس نیٹ میں نہ لائیں۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ٹیکس نیٹ میں لانے کیلئے خصوصی ایپلی کیشن تیار کریںگے تاکہ آسانیاں پیدا ہو سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ 7سو ارب کی ٹیکس چوری ہوتی ہے اور 22کروڑ کی آبادی میں سے صرف 15لاکھ لوگ ٹیکس دیتے ہیں۔ اگر 22کروڑ تھوڑا تھوڑا ٹیکس بھی دیں تو قرضوں کی دلدل سے نکل جائیں گے۔
ان کا کہنا تھا میں نے ووٹ لینے کیلئے اسلام کی بات نہیں کی بلکہ میں نے الیکشن جیتنے کے بعد ریاست مدینہ کی سب سے زیادہ بات کی۔ مدینہ کی ریاست کے اہم اصولوں میں رحم ، عدل و انصاف اور کمزوروں کی داد رسی شامل تھی ، لیکن آج اربوں روپے کی چوری کرنے والوں کو جیل میں ائیر کنڈیشن مل رہا ہے اور جو چھوٹی چوری کرتا ہے، سب کو پتا ہے اس کے ساتھ جیل میں کیا سلوک ہوتا ہے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا میری باہر کوئی جائیداد اور کاروبار نہیں، میرا جینا مرنا پاکستان میں ہے، میں ان کی طرح نہیں جو اربوں روپیہ باہر لے گئے، ان کے مفادات کچھ اور ہیں، جب روپیہ گرتا ہے تو ان لوگوں کی دولت بڑھ جاتی ہے، ان کے رشتہ دار جن پر کیسز ہیں سب باہر ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ اسمگلنگ کیخلاف پوری طاقت کے ساتھ کریک ڈائون کر رہے ہیں۔ افغانستان سے سمگلنگ ہو رہی ہے ۔ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی آڑ میں اسمگلنگ پر بھی افغانستان سے بات کر رہے ہیں۔ اسمگلنگ کو نہ روکا گیا تو انڈسٹری آگے نہیں بڑھی سکتی۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں میں نے جنرل باجوہ سے بھی بات چیت کی ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ چھوٹی انڈسٹریز کو فروغ دینے کیلئے گوجرانوالہ، گجرات اور سیالکوٹ کا گولڈن ٹرائی اینگل بنارہے ہیں ،قوم کی ریڑھ کی ہڈی درمیانی اور چھوٹی انڈسٹریاں ہوتی ہیں، لیکن یہاں پیسے والا صنعت کار تو پیسے دے کر اپنا کام نکلوا لیتا ہے چھوٹے کاروبار کرنے والے جگہ جگہ رشوت دینے پر مجبور ہوتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ صنعتکاروں کے تمام مسائل حل کریں گے۔1960 کی دہائی میں حکومت نے صنعتکاروں کی مدد کی تو پاکستان خطے میں آگے آیا تھا۔
تاجروں کی شٹر ڈاؤن ہڑتال سے متعلق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کوئی سمجھتا ہے کہ ہڑتالوں سے میں پیچھے ہٹ جاؤں گا تو وہ سمجھ لے میں پیچھے نہیں ہٹوں گا، برائے مہربانی سمجھ لیں میرا پیچھے ہٹنے کا مطلب ملک سے غداری ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  طالبعلم کے ہاتھوں استاد کا قتل لمحہ فکریہ ہے:میاں شہباز شریف