Imran khan spech karachi media

کاروباری برادری پارٹنر بن کر حکومت کے ساتھ کام کرے:وزیراعظم عمران خان

EjazNews

وزیراعظم عمران خان کراچی پہنچے جہاں انہوں نے تاجروں اور صنعت کاروںکے وفود سے ملاقات کی ۔ اس ملاقات کے بعد انہوں نے میڈیا سے گفتگو کی جس میں ان کا کہنا تھا ۔ تاجروں کی مدد کے بغیر قرضوں کے جال سے جان نہیں چھڑا سکتے۔ایک سال میں اکٹھا ہونے والا ٹیکس کا نصف قرضوں پر سود کی مد میں چلا گیا، ٹیکسوں کے متعلق رویہ تبدیل کرنا ہوگا، ٹیکس نہیں دیں گے تو مزید نوٹ چھاپنے پڑیں گے اور مہنگائی بڑھےگی
ان کا کہنا تھا ‘گھر میں کوئی چوری کرے تو اسے سزا دی جاتی ہے، کرپٹ لوگوں کو سزا نہ ملے تو کرپشن بڑھ جاتی ہے، مجھے کہا جارہا ہے کہ ملک لوٹنے والوں کو چھوڑ کر آگے بڑھوں لیکن کرپٹ عناصر کو سزائیں دیئے بغیر ملک کا تحفظ ممکن نہیں اور کرپشن کے ہوتے ہوئے ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ ‘معیشت کے استحکام کے لیے صنعتوں کو ترقی دینا ہوگی، ہم غیر ضروری درآمدات کم کر رہے ہیں، ملکی آمدن بڑھانے کے لیے تاجروں سے مل کر اقدامات اٹھا رہے ہیں اور بیرون ملک سے قانونی ذرائع سے ترسیلات زر منگوا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  اورنج لائن ٹرین کیلئے 20مئی کی ڈیڈ لائن مقرر
وزیریراعظم اور ان کی معاشی ٹیم سے ملاقات کیلئے آئے وفد کی جاری کر دہ تصویر

حکومت کو گرانے کی باتوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ ‘جو لوگ کہتے ہیں حکومت گرا دو وہ میرے منہ سے 3 الفاظ سننا چاہتے ہیں،این آر او، یہ 3 الفاظ کہہ دوں تو ملک ٹھیک ہو جائے گا، یہ لوگ بلیک میل کر رہے ہیں کہ ملک آگے نہیں بڑھ سکے گا جبکہ بارھویں کھلاڑی کو حکومت گرانے میں زیادہ دلچسپی ہے۔اپنی گفتگو میں انہوں نے زور انداز میں کہا کہ ‘ان کرپٹ لوگوں کو کبھی این آر او نہیں دوں گا، این آر او دینا قوم سے غداری ہے، اللہ کو جواب دہ ہوں، قوم سے کبھی غداری نہیں کروں گا۔
جبکہ میڈیا سے گفتگو کرنے سے پہلے گورنر ہائوس میں وزیراعظم عمران خان نے معاشی ٹیم کے ہمراہ تاجروں اور صنعت کاروں کے وفد سے ملاقات کی ۔تاجروں کے وفود نے ٹیکس نظام میں اصلاحات، مہنگائی پر کنٹرول، اسمگلنگ کی روک تھام، کاروبار میں آسانی، سرمایہ کاری میں فروغ، روزگار کے مواقع بڑھانے اور محصولات میں اضافہ کے حوالے سے بھی تجاویزوزیراعظم کو پیش کیں۔
تاجروں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا میرے آنے کا مقصد یہی ہے کہ آپ کے مسائل حل کروں، میری پوری معاشی ٹیم یہاں موجود ہے تاکہ مسائل کا فوری حل نکالا جائے، ہماری اولین ترجیح غربت کا خاتمہ اور معاشی عمل کو تیز کرنا ہے جس میں آپ کی مدد چاہیے، کاروباری برادری پارٹنر بن کر حکومت کے ساتھ کام کرے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ملکی معیشت اب پرانے طریقہ کار کے مطابق نہیں چلائی جاسکتی، معاشی عمل کو تیز کرنے کے لیئے تاجر اور صنعتکار حکومت کی مدد کریں۔ان کا مزید کہنا تھا ماضی کی حکومتوں نے مارکیٹ کو اپنے ذاتی فائدے کے لیے استعمال کیا۔ ہماری ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رہے گا تاکہ حکومت آپ کے مشوروں سے مستفید ہو۔

یہ بھی پڑھیں:  کیا مریم نواز بھوک ہڑتال پر بیٹھیں گی یا حکومت گھٹنے ٹیکے گی