dowlad j trump

امریکی صدر کی فراخدلی ، کم جونگ ان سے شمالی اور جنوبی کوریا کی سرحد پر ملاقات

EjazNews

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان سے شمالی اور جنوبی کوریا کی سرحد پر ملاقات کی ہے اور دونوں رہنماؤں نے مصافحہ بھی کیا ہے۔اس موقعے پر امریکی صدر نے کہا ہے کہ شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان سرحد کو پار کرناان کے لیے باعث فخر ہے۔اپنے ٹویٹر پر ان کا کہنا تھا کہ یہ پوری دنیا کے لیے ایک عظیم دن ہے، یہ میرے لیے اعزاز کی بات ہے کہ میں یہاں ہوں۔دوسری طرف شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ نے کہا ہے ۔صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ بہترین تعلقات کی وجہ سے دونوں ملکوں کے درمیان رکاوٹوں پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔جاپان میں جی 20 اجلاس کے موقعے پر امریکی صدر نے شمالی کوریا کے رہنما کو جنوبی اور شمالی کوریا کے درمیان سرحد پر ملنے کی دعوت دی تھی۔کم جونگ ان نے جنوبی کوریا کے صدر سے ملاقات کے لیے اپریل 2018 میں سرحد کو پار کیا تھا، کم جونگ ان وہ پہلے رہنما ہیں جنہوں نے شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان 1953 میں جنگ کے خاتمے کے بعد سرحد کوعبور کیا۔جون 2018 میں پہلی دفعہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور شمالی کوریا کے رہنما کے درمیان سنگاپور میں ملاقات ہوئی تھی جس میں پیانگ یانگ کے جوہری پروگرام کو ختم کرنے کے حوالے سے مبہم وعدے سامنے آئے۔ دوسری ملاقات ویت نام کے دارالحکومت ہنوئی میں ہوئی تھی جو کہ ناکام رہی۔ان دو ملاقاتوں کے بعد کم جونگ نے روسی صدر سے ملاقات کی اور گمان یہ کیا جارہا تھا کہ وہ روسی بلاک میں شامل ہو رہے ہیں اور یہ ملاقات امریکی سفارتی ناکامی ہے کیونکہ کم جونگ ان امریکی صدر سے دو ملاقاتوں کے بعدروسی صدر سے ملنے گئے تھے۔
یہاں پر یہ بات واضح رہے کہ کم سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی دونوں ملاقاتیں امریکہ اور کوریا سے باہر ہوئیں جبکہ ولادی میر پیوٹن سے ملنے کم خود روس گئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:  او آئی سی کی مقبوضہ کشمیر میں ڈومیسائل کے قانون کی مخالفت

ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے شیئر کیا گیا ٹویٹر اکائونٹ

I am in South Korea now. President Moon and I have “toasted” our new Trade Deal, a far better one for us than that which it replaced. Today I will visit with, and speak to, our Troops – and also go to the the DMZ (long planned). My meeting with President Moon went very well!