bilwal

شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنی جان کی قربانی دی تاکہ ہم کسی انتہاء پسند اور آمر کے غلام نہ بنیں:بلاول بھٹو

EjazNews

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے بجٹ سیکشن میں اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب ہمارا طرز عمل باڑے کے جانورو ں سے بہتر نہیں ہوگا تو اس کا برا تاثر ہم پر۔ اس پارلیمان اورخاص طور پر اس عوام پر ہوگا جن کی ہم نمائندگی ٹھیک سے نہیں کر رہے ۔غریب کی جھونپڑی حرام اور بنی گالہ حلال؟ نواز شریف کی آف شور حرام اور خان کی حلال؟، دوسروں کے بے نامی اکائونٹ حرام اور امیر ترین کے حلال؟یہ کیسے دوہرے معیار ہیں؟ آخر تحریک انصاف کی حکومت میں تھوڑا تو انصاف ہونا چاہیے۔کب تک نا اہل حکومت افواج کے پیچھے چُھپتی رہے گی؟
ان کا کہنا تھا کہ پاک افواج کیوں حکومت کی نا اہلیت کی ذمہ داری لیں؟دنیا بھر میں مسلح افواج ہر قسم کے تنازعات سے دور رہتی ہیں تا کہ کل کو پوری قوم یکجا ہو کر ان کے پیچھے کھڑی ہو سکے۔ کب تک نا اہل حکومت افواج کے پیچھے چھپتی رہے گی؟ افواج کیوں حکومت کی نااہلیت کی ذمہ داری لیں؟
اپنے اظہار خیال میں انہوں نے کہا کہ ہمارے جمہوری، انسانی اور معاشی حقوق مجروع کرنے کے بعد اب پارلیمان کی خودمختاری مجروع کی جارہی ہے۔ پارلیمان اور عوام کا فیصلہ سب سے بالاتر ہوتا ہے اور تمام ادارے پارلیمان کو جوابدہ ہیں ناکہ پارلیمان ان اداروں کو۔ چنانچہ، خصوصی قرض کمیشن بنانا غیر جمہوری عمل ہے۔
موجودہ حکومت قرض لینے میں سب سے آگے۔پاکستان پیپلز پارٹی کے دور میں عالمی بے روزگاری، دہشت گردی، سیلابوں اور عالمی منڈی میں مہنگے ترین تیل کی فراہمی کے باوجود 5 ارب روپے روزانہ کے حساب سے قرضہ لیا۔۔ جبکہ موجودہ حکومت نے آج تک روزانہ 15 ارب روپے کا قرضہ لیا ہے۔ایک کروڑ نوکریوں اور پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ مگر بجٹ میں ایک بھی نوکری اور گھر کا اعلان نہیں۔۔ تجاوزات کے نام پر غریب کا کاروبار اور چھت بھی چھین لیے۔نیا پاکستان، حقیقت میں ایک نہیں دو پاکستان ہیں، جہاں غریب کی جھونپڑی حرام اور بنی گالہ کی تجاوزات حلال ہیں۔نئے پاکستان میں غریبوں کے لیے مہنگائی اور بے روزگاری کے پہاڑ۔۔ امیر کے لیے ایمنسٹی اور بیل آوٹ اسکیمیں۔
چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد سندھ میں بننے والے تین بہترین اسپتال ،جنہیں سندھ حکومت نے مُلک کے بہترین سرکاری اسپتال بنا دیا، اس وفاقی حکومت نے نہ صرف ہم سے وہ اسپتال چھین لیے بلکہ بجٹ میں ان ہسپتالوں کے لیے کوئی رقم بھی مختص نہیں کی۔قائد اعظم نے ہمیں ایک آزاد ملک دیا تاکہ ہم کسی کے غلام نہ رہیں۔ قائد عوام نے ہمیں جمہوریت دی تاکہ طاقت کا سر چشمہ عوام ہو۔ شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنی جان کی قربانی دی تاکہ ہم کسی انتہاء پسند اور آمر کے غلام نہ بنیں۔ تو آج ہم کس طرح کسی کٹھ پتلی کی غلامی قبول کر لیں؟۔اگر حکومت بھی اپوزیشن کرے گی اور اپوزیشن بھی اپوزیشن کرے گی تو حکومت کون کرے گا؟۔شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنی جان کی قربانی دے دی، مگر آئین پاکستان اور اس جمہوری نظام پر سمجھوتہ نہیں کیا۔ ہم ان کی ان قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  سپاٹ فکسنگ اور میچ فکسنگ کھلاڑی سخت قوانین کے حق میں ہیں

ان کا مزید کہنا تھا کہ ایک سال میں 5ہزار ارب قرضہ لیا گیا یہ ن لیگ سے بھی تیز ہیں۔ نیب نے 60 ملین ڈالر برطانوی حکومت کو دینے ہیں اس کی تحقیقائی ہونی چاہیے ہم نے بین الاقوامی عدالت میں ریکوڈک کیس ہارا، ریکوڈک کیس میں 11.45بلین ڈالرز ادا کرنے ہیں، ماہر نہ ہونے کے باوجود معاشی فیصلے کرنے والوں سے بھی حساب لیا جائے، نیا پاکستان لو ہمیں قائداعظم کا پاکستان واپس دو۔