پروڈکشن آرڈر پرآئے موصوف نے دبے الفاظ میں این آر او مانگا: معاون خصوصی اطلاعات

EjazNews

وزیراعظم معاون خصوصی برائے طلاعات سے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک جانب سندھ حکومت کے وزراءالیکشن کمیشن کے قواعد و ضوابط کی دھجیاں اڑا رہے ہیں تو دوسری طرف پیپلز پارٹی کے امیدوار سندھ پولیس کے پروٹوکول میں اپنی انتخابی مہم چلا رہا ہے۔الیکشن کمیشن ان بے ضابطگیوں پر کیوں خاموش ہے؟ نوٹس کیوں نہیں لیا جا رہا؟
دوسری جانب سندھ حکومت سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کرتے ہوئے انتخاب سے قبل دھاندلیوں میں ملوث ہے۔ سندھ حکومت کے وزراءکی انتخابی مہم کے لیے باقاعدہ ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں۔اس کے علاوہ سینکڑوں کی تعداد میں نوکریاں وزیراعلیٰ سندھ کی طرف سے پیکیج اور ترقیاتی منصوبوں کے اعلان کیے گئے۔
اپنی کابینہ کے سابق رکن اور ایم این اے علی محمد مہر کے انتقال پر ان کے اہل خانہ سے تعزیت کرنے پر وزیراعظم پاکستان کو جاری کردہ شوکاز نوٹس کسی تعجب سے کم نہیں؟ وزیراعظم نے وہاں میڈیا سے کوئی گفتگو کی نہ ہی روایتی سیاستدانوں کی طرح ترقیاتی منصوبوں کے اعلانات کئے۔
ان کامزید کہنا تھاکہ اداروں کو مضبوط کرنا چاہتے ہیں ایک رہنما پروڈکشن آرڈر پر اسمبلی میں آئے اور تقریر کی، موصوف نے تقریر کے دوران دبے الفاظ میںاین آر او مانگا ۔
ان کا کہنا تھا ایک دستور کی کتاب ہے ہم سب کو اس کے تابع ہونا ہے۔ ہمیں زندگی گزارنے کے لیے قانون کے تابع ہونا ہے، ہمیں قائداعظم کے خواب کو تعبیر دینی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  سی پیک سے صرف چین کو فائدہ ہوگا پاکستان کو نہیں، یہ امریکہ کی سوچ ہے پاکستان کی نہیں: وزیر خارجہ