zardari-asif

مجھے پکڑنے سے پارٹی مضبوط ہوگی: سابق صدرآصف زرداری

EjazNews

پروڈکیشن آرڈر پر نیب کی حراست سے آئے ہوئے سابق صدر آصف زرداری نے قومی اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر بجٹ کی بات کریں، سب رورہے ہیں تو کوئی وجہ تو ہے، بجٹ کو اخباروں میں دیکھا اس میں صداق نہیں بجٹ حکومت کے فنانس ڈیپارٹمنٹ نے بنایا۔ ان کا کہنا تھا کہ صنعتکار خوفزدہ ہیں کہ پانچ لاکھ چیک پر حساب دو،کون کون حساب دے گا۔ان کا کہنا تھا کہ کاٹن پر توجہ نہیں دی گئی کاٹن انڈسٹری توجہ طلب ہے۔ کاٹن برآمد کرنے سے معیشت کو فائدہ ہو سکتا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ تین چار چیزیں ایسی ہیں جس پر ساتھ بیٹھا جاسکتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ معاشی پالیسی پر حکومت اور اپوزیشن کو ساتھ بیٹھنے سے فائدہ ہوگا۔ ہمارے علاقوں میں ٹڈی آئی ہوئی ہے جو کپاس کی فصل کو تباہ کررہی ہے، کہیں اور ایسا ہوتا تواب تک توسعودی عرب سے امداد آجاتی ہے، ملک کے معاشی مسائل سب کے اور مشترکہ ہیں۔ اگر آئی ایم ایف سے پیسے مل رہے ہیں تو لوگ کیوں رو رہے ہیں، ہر انڈسٹری کے بڑے بڑے ایڈ آرہے ہیں کہ ہمیں بچاو¿، آئیں مل کر حکومت اپوزیشن مل کر معیشت پر کوئی معاہدہ کرلیں، حساب کتاب بند کیا جائے اور آگے کی بات کی جائے، جو ماحول بنایا جارہا ہے ایسے ماحول میں کوئی دھندا کرنے کیلئے تیار ہی نہیں ہے۔ میرے پکڑنے سے پارٹی مضبوط ہوگی، مجھے پکڑنے سے فرق نہیں پڑے گا، عام لوگ خوفزدہ ہیں کہ زرداری پکڑے جاسکتے ہیں توہمارا کیا بنے گا۔آصف زرداری کا کہنا تھا کہ ایسا نہ ہو مہنگائی سے تنگ عوام نکل آئیں اور سیاسی جماعتیں پیچھے رہ جائیں، ایسا نہ ہو کل عوام اور پورا ملک کھڑا ہوجائے پھر کوئی پارٹی سنبھال سکے گی نہ ہم، ایسا نہ ہوکہ سیاسی طاقتوں سے بھی یہ گیند نکل جائے، جو طاقتیں انہیں لے کر آئی ہیں انہیں بھی سوچنا چاہیے۔
سابق صدر آصف زرداری نے پروڈکشن آرڈر جار کرنے پر سپیکر قومی اسمبلی کا شکریہ ادا کیا۔ اور پروڈکشن آرڈر کی حمایت کرنے پر ایم کیو ایم اور اختر مینگل سمیت اپوزیشن کی دیگر جماعتوں کا شکریہ ادا کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  شریف خاندان نے نشان عبرت بن کر بھی کوئی سبق نہیں سیکھا:ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان